Stories


پیاسی ماں کے ساتھ سہاگ رات از رابعہ رابعہ 338

میرا نام سنندا ہے عمر 46 اور میرا بےٹا اروند عمر 19. یہ کہانی ہم ماں اور بےٹے کہ ہے. اب میں کچھ اپنے بارے میں بتا. میرے عمر 46 سال، رنگ سانولا، 5.7 ' ہائیٹ. تھوڑے اوور ویٹ جیسے 89 kg، پر میں یہ بتا دوں کہ 89 kg لیکن میں موٹی اور تھلتھل نہیں ہوں، كيوكي میرے بدن کا بناوٹ کچھ ایسا ه ہے کہ باوجود 89kg کے پر پوری جسم شیپ میں ہے. تھوڑی سی بھوری آنکھیں، لمبے سیاہ بال. 40G بوبس، 34 کمر، 46XXL چوتڈ، مکمل سہیلیاں مجھے کبھی کبھی بپاشا باسو یا فر ساںولا لاطینی پپايا كهتے ہیں، كيوكي میرے بدن کا شٹكچر کچھ لاطینی یا برازیل عورتوں جیسے ه ہے. پوری سہیلیاں اس لئے كهتي ہیں کہ بہت موٹی بڑی گانڈ کہ بجائے. وہ كهتي ہیں کہ میرے جسم کہ حساب سے پوری گانڈ اور بوبس کافی بڑی ہے جو مجھے هوٹ اور سیکسی بنا دیتی ہے. کئی بار مجھے بھ میری بڑی گانڈ اور بوب میرے لیے تکلیف لگتی ہے كيوكي جب میں کہیں باہر جاتی ہوں تو میری ابھرتی ہوئی چھاتیاں اور مٹكتي گانڈ کے لیے مجھے بہت لوگ نوٹس کرتیں ہیں اور اس لیے میں بہت غیر آرام دہ ہو جاتی ہوں. اب میں پري کہانی پر آ جاتی ہوں، میرے هسبےنڈ کہ جوب کہ ٹرانسفر ہو جانے سے ہمیں آ کر پنے میں ایک 2bhk فلیٹ میں کرائے پر رہتے تھے. میں، میرے شوہر اور اروند ہم تینو رہا کرتیں تھے. اور یہیں سے شروع ہوئی میری سچی کہانی. میری شوہر مجھ 8 سال بڑے ہیں اور govt جوب کرتیں ہیں. میں پوری تره ایک هاسواف ہوں، اور گھر کے سارے کام، اور اروند کہ دیکھ بھال میں میری دن گزر جایا کرتیں تھیں. اروند میرے بےٹا 19 سال کا ہے اور وہ انجينرييگ کرتا ہے. میرے شوہر صبح 9.30am اوفسس چلے جایا کرتیں تھے اور شام کو 8 pm تک واپس آ جایا کرتیں. زیادہ تر گھر میں اکیلی رہتی. اس کے بعد اروند کولیج سے آ جاتا اور تب جاکر مجھے تھوڑی ٹائم پاس کا موقع مل جاتا تھا. کبھی میری سہیلی پدما میرے گھر میں آ جایا کرتیں تھ اور ہم لوگ بیٹھتے اور مزے کرتیں. اب میں اروند کے بارے میں بتا دوں، وہ 19 سال کا اور 5.6 '، گورا، سمارٹ، بڑی حکمت والا، تگڈا گٹھا بدن، مضبوط اور چوڈي چھاتی، مضبوط باهے، كيوكي وہ جم جایا کرتا ہے، ہاں مختصر سا نٹكھٹ ہے كيوكي اس سارے دوست میں کچھ اچھے نہیں ہے، وہ ہمیشہ میرے ساتھ دوستانہ رہتا ہے، اب میں کچھ بہت بڑی سچ بات بولتی ہوں، كيوكي میرے شوہر میرے سے 8 سال بڑے ہیں اور ان کی عمر کچھ 54 سال ہے اور ان کی بڑی عمر کی وجہ سے مجھے ہمیشہ جنسی تعلقات میں کمی کھلتی تھی. كيوكي میں بہت ه هوٹ اور سیکسی ہوں، مجھے جنسی بہت اچھی لگتی ہے اور کافی سالوں سے میں جنسی نہیں کر سکتی تھی، یہ بات میں نے کافی بار میری سہیلی پدما کو بھ بتا تھی اور وہ بھ کافی دکھی تھی اور کبھی کبھی پدما کہتی تھی کہ میں کسی کو پٹا کے جنسی کرو اور اپنی جنسی لائف کو بھرپور کرو. هالاكي میں نے پدما کو نہیں بولا تھا پر اس دن سے میرے من میں ایک بات کھٹکتی رہتی تھی کہ پدما نے یہ بات مجھے کیوں کہی؟ فر ایک دن پدما میرے گھر پر آئی تھی اور میں نے پچھا کہ کیوں اس نے مجھے ایسی بات کہہ جو میں کر ه نہیں پاگي تو وو بولی ' دیکھ سنندا، آپ کافی سالوں سے جنسی نہیں کر پا رہی ہو كيوكي تیرے هسبےنڈ کہ عمر کافی بڑی اور تیری عمر کچھ ایسی ہے جہاں سے ه اصلی جنسی کہ آغاز ہوتی ہے، اور تم تو بہت ه هوٹ ہے اور جس حساب سے تیری جوانی ہے، تیری اس جوانی کہ جلن کو کوئی ایک زبردست مرد چاہئے جو تجھ ج بھر کے جنسی کرے . اور ویسے بھی کیا فرق پڑے گا اگر تم کسی سے جنسی کر بھی لے تو. ہر دن ہوس کہ آگ میں جل جل کے مرنے کے بجائے اگر تم کسی سے چدواتی تو کیا برا ہے، کم سے کم تیرے هوٹ بدن کو ٹھنڈک تو مل جائے گی. یہ سب بات پدما سے سننے کے بعد میں تو ہل س گئی اور میری سمجھ میں یہ نہیں آ رہا تھا کہ کس طرح اور کس کے ساتھ میں جنسی کرو؟ اور ڈر تو لگےگ ه. اگر میرے شوہر اور کسی حال میں اروند کو پتہ چلا تو میں ان کے سامنے منه کو دکھانے کہ قابل نہیں رهگي. مجھے کیا پتہ تھا کہ جس چیز کے لیے میں ہمیشہ تڈپتي رہتی ہوں وہ بہت جلد میری راہ پر ہے. فر آیا وہ دن جو کبھی میں سوچ بھ نہیں سکتی، پدما کہ مشورہ اور میری جسم فروشی کے لیے میں تڑپ رہی تھی. ایک دن اروند کے پاپا 3 دن کیلئے بہار چلے گئے، اس دن شنیوار تھا اور میں اور میرا اروند دونوں ساتھ تھے. اس دن صبح اروند کے دوست کا کوئی پارٹی ہے بتا کے اروند بولا ' ماں؟ پلیج میرے کپڑے تھوڑے پریس کر دو كيوكي مجھے میرے دوست کے یہاں جانا ہے، وقت کچھ 9.30am کا تھا. فر میں اسکے کپڑے پریس کرنے لگی، اس وقت میں نے ایک سفید ٹائیٹ سلوار پہن رکھی تھی، ہو سکتا ہے ٹائیٹ كپڈو میں میری مست جوانی ابھر کر دکھ رہی ہوگی. هالاكي مجھے ہمیشہ ٹائیٹ پہننے کہ عادت ہے پر میری بڑی بوبس اؤر گانڈ کہ وجہ سے مجھے بہت عجیب اور جوش محسوس ہوتا ہے، میں کپڑے پریس کر رہی تھی اور اروند میری پاس ه تھا پر کسی کام کے بجائے وہ وہاں سے اٹھ کر چلا گیا ، میں نے سوچا کہ وہ اپنی بالکونی پر گیا ہوگا، كيوكي وہ کافی وقت بالکونی پر بیٹھنا پسند کرتا ہے، اس کے کچھ دو منٹ کے بعد كپڈو کو پریس کرنا درمیان میں چھوڑ کر میں باتھ روم جانے لگی، پر جیسے ه میں گئی اور باتھ- روم کا دروازہ لوكك نہیں تھا پر بند تھا، میں نے دروازے کہ سخت باہر کہ طرف پکڑی اور کھولنے سے پہلے کچھ آواز سنائی دی اور میں چونك گئی، فر میں دروازہ بغیر کھولے آواز کیا ہے اور کس کی ہے فر سے دوبارہ سننے کہ کوشش کرنے لگی ، اس بار مجھے مالم پڑا کہ کسی کے بولنے کہ آواز ہے، آواز کچھ ' اسسسسسسسسهههه ' اور ' واو ' ایسا تھا، میں نے سوچا کون ہو سکتا ہے اور گھر میں ہم دونو کہ سوائے دسرا کوئی ہے ه نہیں، فر میںنے ہلکا سا دروازہ کھولا اور جو دیکھا میں ہل گئی، ' بھگوان "یہ کیا اندر اروند اور وہ ٹولےٹ فےلےش کے پاس کھڑا ہو کر اپنے لنڈ کو زور زور مٹھ مار رہا تھا، میں نے فورا دروازہ ہلکے سے بند کیا اور آ گئی اور جو دیکھا مجھے یقین نہیں ہو رہا تھا، فر میں آئی اور اس کے کپڑے پریس کئے اور ٹیبل پر رکھ دئے اور کچن میں چلی گئی، اس کے لیے ناشتہ بنانے. فر اروند آیا اور اپنے دوست کہ پارٹی پر چلا گیا. اب کیا میں نے جو دیکھا اس پر یقین ہو نہیں رہا تھا فر میں گھر کے سارے کام کرنے لگی، میری سہیلی پدما آئی ہم لوگ نے کچھ باتیں کری اور وہ بھ چلی گئی، فر اروند اور اس کے 2 کو 12.30pm بجے پر اپنے موٹر سائیکل سے آئے، اس وقت میں کچن میں سبجييا کاٹ رہی تھی، اروند اپنے دوست کو اپنے کمرے میں لے گیا اور میرے پاس آیا کچن میں اور باتیں کرنے لگ. میں اب بھ وہی ٹائیٹ سلوار میں ه تھی. اب میں کام کر رہی تھی اور اروند میرے ساتھ بات اور وہ بولا ماں؟ میرے دوست کے لیے کچھ سنےكس بنائیں، میں نے کہا ٹھیک ہے، تم لوگ اپنے کمرے میں بیٹھو اور میں اب آئی، فر اروند کچن پر ه بیٹھا رہا اور میں کام کرنے لگی اس وقت اس کی باتیں اور اس کی آنکھیں کچھ مختلف سی لگ رہی تھی ، مجھے لگ رہا تھا کہ اروند کہ آنکھیں میرے بدن کو دیکھ رہیں تھی، فر میں یہ سوچ کے سر جھٹک دیا کہ اروند میرا بےٹا ہے، لیکن ایک بات مجھے تھوڑی سی تکلیف لگنے لگی كيوكي میں اروند کو جو ٹولےٹ میں دیکھ چکی تھی. فر اروند اپنے کمرے میں چلا گیا، میں پورے سنےكس تیار کرکے اروند کے کمرے میں لے کر آئی، اور اس کے دوستو نے "ہاے انٹي" بولا اور میں نے ان کو ہیلو بولا، پر پھر ایک بات میرے دماغ میں لگی رہی كيوكي اروند میرا بےٹا ہونے کے باوجود وہ میرے بدن کو کیوں دیکھتا ہے. مجھے بہت ه خراب لگنے لگا، اب وقت کچھ رات کو 10pm. اروند اور میں نے اپنا ڈنر کیا اور میں اروند کا بستر لگنے اس کے کمرے گئی .. کچھ منٹو میں اروند آیا اور بول ماں؟ پاپا کب واپس ايےنگے؟ میں نے .. کہا وہ پیر سبه تک آ جائیں گے. وہ بول ٹھیک ہے، فر میں بستر لگا رہی تھی اور اروند میرے پیچھے سے مجھے زور سے اور ٹائیٹ سے پکڑ کے کہنے لگا ' ماں، تم دنييا میں سب سے بہترین ہو "اس کی پکڑ کچھ اس طرح تھی کہ مجھے تھوڑی سی تکلیف لگ رہی تھی، فر میں نے کہا وہ کیوں ..؟ اروند دھن كيوكي تم میرا اتنا خیال رکھتی ہو .. میں نے کہا .. بےٹے جو ہو تم میرے. فر اسنے ' Good night ' ماں بولا اور میں نے اس کے کمرے سے آ گئی اور اپنے کمرے میں سو گئی، اتوار کہ صبح، میں 8.30 بجے جگ اور اروند سو رہا تھا. میں اپنے صبح کہ سارے کام کرنے لگی اور 9.30 بجے تک اروند سویا ہوا تھا، فر میں كوفي لے کر اس کے کمرے میں گئی اور اسے اٹھانے لگی پر مجھے کیوں ایسا لگا کہ جیسے اروند پوری رات سویا ه نہ ہو، فر كوفي اس کے کمرے رکھ دی اور آ گئی. صبح کو 11 بجے جا کر اروند اٹھا اور اس وقت تک میں اپنے کام ختم کر چکی تھی، اور میں پدما کے ساتھ پھونے پر باتیں کر رہی تھی، فر اروند "Good Morning" ماں، ... میں ہمم! گدھے جیسے سویا مت کرو صبح کے 11 بجے ہیں پتہ ہے یا نہیں، اروند ماں سوری .. اب اروند باتھ روم میں تھا اور میں کچن میں ناشتے کہ تیاری میں، فر میں اروند کہ کمرے آئی اور كوفي کپ اٹھایا اور سارے چدر اور تکیوں بکھرے پڑے تھے میں انہیں اٹھانے لگی فر جو دیکھا اور پایا اس نے مجھے ہلا کر رکھ دیا، میں تو جیسے رونے لگی .... میری دھڑکنیں جیسے تیز ہو گئی، وہ یہ تھا کہ 3 دن پہلے صبح میں نے باتھ روم جانے سے پہلے میں اپنے رات سے پہنی ہوئی پینٹی اتار کر اپنے کمرے میں رکھی اور نہانے سے پہلے اسے صاف کر لنگي سوچ کے میں بالکونی پر جو میری سلوار دھوپ میں ڈالی ہوئی تھی اسے لینے گئی اور نهنے چلی گئی تھی اور جیسے نہا کر آئی تو مجھے خیال آیا کہ مجھے اپنی پینٹی دھونے کے لیے لے لینی چاہیے تھی، فر میں فر پےنتي ڈھوندنے لگی پر وو نہیں ملی تھی ... اور یہ وہی پینٹی جو اب مجھے اروند کہ بیڈ شیٹ کے ساتھ ملی ... سمجھ نہیں آ رہا تھا کہ کیا کرو، اپنے بےٹے کو کیسے پوچھو کہ میری پینٹی اس کمرے میں کس طرح آئی؟ .... اب دوپہر 2.30 بجے کھانے کے بعد اروند اپنے موٹر سائیکل لے کر نكلا اور کہیں جانے کو نکل پڑا، پھر اپنے حال میں جو کمپیوٹر تھا، جو میں استعمال کرتیں ہوں وہ خراب تھا، اسليے میں نے اروند کو اپنا لےپٹوپ دینے کو کہا اور اپنے يمےل چےكك کرنے کے لئے، اس نے کہا ماں میرے کمرے ہے، لے لو اور وہ چلا گیا. فر میں لےپٹوپ لے کے اپنے کمرے میں آ گئی فر سوئچ اون کر کے اپنی يمےل کھولی اور چےكك کرنے لگی. فر میں نے دیکھا کہ ڈےكسٹوپ پر ایک فائل پڑا ہے جو xxx نكوم کرکے تھی. فر میںنے اتسكتا سے اسے کلک کیا ' بس جیسے ه فائل اوپن ہوئی پتہ چلا وہ ایک پورن فلم ہے، جو in**st ہے، .. هےڈگ اس کی کچھ اس طرح تھی ' "هوٹ ماں کہ چدا بےٹے کی طرف ' اوہ بھگوان !! یہ کیا .. میں پورے پسینہ پسینہ ہونے لگی. وہ کلپ کچھ 1.30 گھنٹے کا تھا. اب میں نے وہ کلپ نصف دیکھا اور بند کر دیا، فر internet explore میں هسٹري چےكك کہ تو یہ سب شنیوار رات کو دیکھی ہوئی ہے اور اس میں زیادہ تر کلپ in**st ه تھی ... میں تو شرم کہ مارے جیسے پانی پانی ہو گئی، میں سوچ رہی تھی کہ کس طرح میرا ه بےٹا in**st میں بھ يكن کرتا ہے اور اگر وہ ایسا ہے تو وہ ضرور میرے بارے میں سوچتا ہوگا، كيوكي میری پینٹی اس کے کمرے میں ملنا اور اس کا میری طرف دیکھنا ... اوههه !!، اے بھگوان یہ کیا ... یعنی کہ میری ه بےٹا اور مجھے ......... ؟؟؟؟؟. کیا کرو؟ کیا اروند اتنا بگڈ گیا ہوگا، میں سوچ بھ نہیں سکتی .. فر میںنے لےپٹوپ بند کیا اور واپس اروند کہ کمرے میں رکھ دیا، میں سوچ رہی تھی کہ اپنی سہیلی پدما کو اس کے بارے میں بتاوں، پر کس طرح كه کہ میرا ه بےٹا اس تره بن چکا ہے کہ اب میرے پر بھ وہ جنسی فلم دیکھنے لگا ہے. شام کو 5.30 بجے اور اروند واپس آیا اور بول ماں مجھے آج گھر پر ڈنر نہیں کرنا، كيوكي میرے کچھ دوستوں مل کر باہر ڈنر کرنے کہ پلان بنایا ہے .. اور ایسا کہہ کر وہ فریش ہونے کے لیے باتھ روم میں گیا ... تب میرے شوہر کے فون آیا اور تب پتہ چلا کہ وہ پیر کو واپس نہیں آ پاےنگے كيوكي ان کا جو کام تھا اسے کچھ 4 سے 5 دن زیادہ چاہئے ... میں نے کہا ٹھیک ہے آپ کے کام ختم کرکے آئیں فر شام 7.30 بجے اروند باہر چلا گیا، اور میں اپنے کمرے پر TV دیکھ رہی تھی اور اتنے میں اروند کے کمرے سے موبائل بجنے لگا اور میں نے جا کر دیکھا تو وہ اروند کا ه تھا اور وہ اپنا فون گھر پر بھول کے گیا تھا ... روہن نے اپنے کو پھونے سے ڈائل کیا تاكي اسے پتہ چلے کہ اس کا فون مسس ہو گیا ہے یا پھر وہ چھوڑ کر گیا ہے .. میں تو جیسے یہ سب سوچ سوچ کے پریشان ہو چکی تھی کہ میرے بےٹا اوهههه نو ... میں اپنے کمرے بیٹھے بیٹھے اروند کہ فون چےكك کر رہی تھی، اس میں میں نے ایک فولڈر پایا، جس میں صرف فوٹو ه تھی تو میں دیکھنے لگی اور پھر جو دیکھا وہاں سے پوری پوری سمجھ میں آ گئی کہ اروند کا ارادہ میرے اوپر کیسا ہے. دھکے سے جیسے میری دھڑکنیں اب بند نہ ہو جائیں .. سچ كه تو میں کانپنے لگی اور سمجھ نہیں آ رہا تھا کہ جو میں دیکھ رہی ہوں وہ سچ نہ ہو ... میرا بےٹا مجھے ه .. بھگوان !!!، اس فولڈر میں کم سے کم 20 سے 25 میرے ه تصویر تھے، پر وو ایسے ویسے تصویر نہیں. یہ سارے فوٹوس کب لئے گئے مجھے مالم ه نہیں. زیادہ تر فوٹوس میرے بوبس، چوتڈو، پچھلے حصے سے کمر، نہاتے ہوئے، کے تھے. فوٹوس سارے ننگے نہیں بلكي جب جب جو میں نے پہن رکھی تھی اس حساب سے لمیٹڈ گئی تھی،. میرے خیال سے یہ ساری تصاویر جب میں کچھ کام یا فر بزی ہوں ہو سکتا ہے کہ اس وقت لی گئی ہو ... فر میں نے کچھ سوچے بغیر فورا پدما کو فون لگایا اور اپنے گھر پر اسی وقت آنے کیلئے کہا، میری آواز سن کر وہ بھ چونك گئی اور بولی ارے بابا پر کیوں؟ اور کیا ہوا؟ .. میں نے کہا پدما پلیج تم کچھ بولو مت اور ابھی میری گھر پر آ جاؤ .. جیسے کہ پدما میری گھر سے بس کچھ 500 میٹر کہ فاصلے پر ہے اس لئے 10 منٹ کے اندر وہ آئی اور مجھے دیکھ کے وہ بھ چونك گئی، پورے پسینے میں غرق اور کاںپتے ہوئی. میں اسے پوری کہانی بتانے لگی .. اور یہاں تک کہ میں نے اسے میری تصاویر جو اروند کہ موبائل میں ہے اور پورن کلپ کے بارے میں بھ. سب کچھ سننے کے بعد پدما چونك گئی اور ایک جگہ پر چپ کر کے بیٹھ گئی .. كيوكي ایسا ہے کہ وہ بھ سمجھ نہیں پائی کہ کیا وہ بولے .. فر کچھ گلاس پانی پی کر کے وو بولی، تو بھی کتنی بڑی گدھي ہے کہ تجھے یہ بھ پتہ نہیں کہ تیری اےس تصویر تیری بےٹے نے کب کھینچ لی اور تجھے معلوم ه نہیں. اس کے بعد پدما تھوڑی دیر کے لیے خاموش رہی اور بولی ہو سکتا ہے کہ اروند اتنا بھ برا نہیں اور وہ اس کے بجائے تمہیں پسند کرتا ہو اور یہ سب آج کل ہوتا بھ ہے، میں اے سی کیی کہانیاں جانتی ہوں جہاں ماں اور بےٹے بھ جنسی کرتیں ہیں. پدما سے یہ بات سن کر میں اور گھبرانے لگی اور بولی چپ کر! پدما یہ آپ کیا بول رہی ہو، میں اور اروند !!! فر پدما بولی .. سن سنندا، میں تیری سب سے اچھی سہیلی ہوں، اگر تم برا نہ مانو تو میں کچھ کہنا چاہتی ہوں. پہلے سب سن لو فر تیرے اوپر نربھر کرتا ہے کہ تم جو کرنا سوچ سمجھ کے کر. میں نے کہا ٹھیک ہے بول فر .. پدما بولی .. دیکھ سنندا، آج سے 6 یا 7 سالوں سے تم اچھا جنسی کر نہیں پا رہی ہو اور تڈپتي رہتی ہو. جس طرح کا جنسی تجھے پسند ہے کبھی تجھے وہ تک بھ تیرے شوہر سے نہیں ملی ہے، اگر تم برا نہ مانے تو اروند اچھا انتخاب ہے تیرے لئے، پدما بس اتنا ه بولی تھی کے میں تھوڈی غصہ ہو کر بولی پدما یہ تم کیا بول رہی ہے. اپنے بےٹے سے میں کس طرح. چپ کر پلیج ... فر پدما بولی دیکھ یہ سچائی ہے اور جو تے جانتی بھ ہے. اروند تجھے کبھی ماں جیسے نہیں دیکھ رہا ہے اگر ہوتا تو تیرے بارے میں یہ خیال نہیں ہوتے اس کے. اور پدما بولی ویسے دني میں بہت ماں اور بےٹے ہے جو جنسی کرتیں ہے پر وہ سب باہر کسی کو کم مالم ہوتا ہے. اروند ابھی جوان ہے اور تگڈا بھ، تم جتنا چاہے جی بھر کے اپنی جلن کو ٹھنڈي کر سکتی ہے اور یہ بھ بغیر رسک کے. اگر تم راضی ہے تو بول .. میں تیری پوری پوری ہیلپ كرنگي، سوچ لے اور مجھے بتا بےسے بھ تیرے شوہر بہار دوبارہ جانے والے ہیں گاؤں میں اپنا گھر بنوانے کے لئے، وہ بھ پورے 3 مهنو کے لئے، اس دوران تم کافی کچھ کر سکتی ہے، یہ کہہ کر پدما چلی گئی، اوپسس! ، disdainful بھگوان یہ کیا .. میں کیا کرو؟ کیا کسی ماں کا اپنے بدن کہ جلن کو ٹھنڈي کرنے کے لیے اپنے ه بےٹے کا بھ استعمال کرنا صحیح ہے، کیا اروند بھ یہی چاہتا ہے ..؟ سےكڈو سوال اور شاید میرے پاس کوئی جواب ه نہیں تھا ،،،، فر اس دن رات کو میں سو نہیں پائی اور پورے رات بھر ایک ه سوال کہ جواب ڈھونڈتي رہی، جو مجھے میری سہیلی سے پوچھ رہی تھی .. صبح ہوئی، پچھلی رات کو میں نے اروند کے ساتھ زیادہ بات بھ نہیں کہ تھی تو اروند نے صبح پوچھا،،، ماں کیا تم ٹھیک ہو؟ رات کو کیا ہوا کے آپ نے میرے ساتھ بات ه نہیں کہ. میں تو جیسے جاگی اور بولی، نہیں بےٹا بس طبیعت کچھ ٹھیک نہیں تھی .... اور اس کے بعد اروند کولیج چلا گیا ... میں تو بس، ایک ه سوال کہ گھیروں میں .. کیا مجھے اروند سے بھ چدوا لینا چاہئے؟ کیا اروند کو میں اپنے وہ سب دیکھنے دوں یا دے دوں جو اسهك پاپا کو بھ ... اوففف میں بھی کیا سوچ رہی ہوں .... ؟؟؟؟ ناشتہ تک بھ کر نہیں پائی میں .. پھر اپنے کمرے میں بیٹھے سوچتی رہی .. هالاكي کبھی کبھی دل اور دماغ بہک جاتی اور سوچتی کہ کاش اروند هممم .. فر شرم آنے لگتی اور نہیں یہ کیا میں سوچتی ہوں، اروند میرا بےٹا ہے ... فر میرے دماغ میں ایک آئیڈیا آیا کہ کیوں نہ میں پہلے مکمل طور پر جان تو لوں کہ اروند کیوں اور کیا میرے بارے میں سوچتا ہے، کہاں تک اس کا خیال ہے ... اب میں نے ٹھان لمیٹڈ کہ اروند کو پرکھ کے رهگي .... فر میں اروند کا جیسے انتےجار کرنے لگی، کہ کب وہ کولیج سے آئے. اب وقت کچھ 3.30 بج چکے تھے، اور اروند آ گیا، میں نے پہلے سے میری سب سے پتلی کپڑے والی اور ٹائیٹ سلوار پہن رکھی تھی وہ كپڈا کچھ كوٹن اور ربيا ٹائپ کہ تھی جو جسم کو اتنا کس کے رکھے کہ میری چھاتی جیسے کھل کے دکھ رہی ہو اور میں جان بھوج کے برا نہیں پہنی تاكي میری نپل اور بوبس پورے مست نظر آئے. كيوكي مجھے اروند کو پرکھنا ہے .. جیسے ه ڈور بےلل بج میں نے دروازہ کھولا اور اروند بس "شہید" میری بڑے بڑے مست بوبس کے اپر نظر ڈالی اور پھر مجرم جیسے نیچے سر کرکے اندر اپنے کمرے میں چلا گیا. اب میرا ایک پلان مختصر سا کامیاب، فر میں دوسرا سوچنے لگی، بات بہت خراب ضرور لگتی تھی پر کیا کرو، اروند پھر اپنے کمرے میں تھا اور اس کی كھڈكي میری کمرے کے بالکل سامنے تھی، اب میں اپنے کمرے سے اروند کو دیکھنے لگی اور کمرے سے بات کرنے لگی تاكي جواب دینے کے چکر میں اسے اپنے كھڈكي کھولنی پڑے، اب وہی ہوا جو میں چاہتی تھی، جیسے ه اروند اپنے كھڈكي کھولی تو میں کچھ ایسے طریقے سے ڈرامہ کیا جیسے میں اب اپنے کپڑے کھول رہی ہوں اور میری كھڈكي کے پردے تھوڑے بند کرکے جیسے اسے نظر آئے کہ کیا میں کر رہی ہوں، فر میں كھڈكي کے پاس سے تھوڑی نظر آنے جیسے اپنے ہاتھ میں لے کر پہنی ہوئی پینٹی نکالی اور دوسری پہن لی، فر كھڈكي پاس کے آئی اور پینٹی نظر آئے جیسے ڈرامہ کرکے اسے بیڈ پر رکھی اور باہر آ گئی اور جانبھوج کے میں دوبارہ کمرے پر آئی اور میری کمرے میں اٹےچ باتھ روم ہے جہاں میں چھپ گئی، اب اروند میرے کمرے میں آیا اور ماں ... کہاں ہو تم کرکے بولا فر بیڈ پر بیٹھا رہا، اور اس کے بعد اس نے بیڈ پڑی میری پینٹی کو ہلکے سے ہاتھ لگایا اور دیکھا، فر اسنے پینٹی کو ہاتھ سے اٹھایا اور سنگھنے لگا، فر یہاں وہاں دیکھا اور دوبارہ سنگھنے لگا. اس کے بعد وہ وہاں سے اٹھ کر چلا گیا، یقین مانو میں یہ سب میرے باتھ روم سے ه چھپ کے دیکھ رہی تھی ... اب میرے تمام شک شبہ دور ہو گئے، مجھے یقین ہونے لگا کہ اروند مجھے چاہتا ہے، اب جیسے کہ میں شرم سے مرنے لگی یہ سوچ کے کہ پدما یہ سب سنتے تو کیا سوچےگي، اب میں نے ڈنر بنایا اور ہم کھانے بیٹھے، مجھے شرم س آ رہا تھا اور میں اروند کو دیکھ بھ نہیں پا رہی تھی، ڈنر ختم کرکے میں نے پدما کو پھونے کیا اور کہا کہ کل صبح اروند کے کولیج جانے کے بعد تم میرے گھر پر آنا ، كيوكي اروند کے بارے میں ه بات کرنی ہے، اس رات بھ میں اچھے سے سو نہیں پائی بس اک تو دور ہو گیا تھا، پر اروند اپنے ماں کو بھ چودنا چاہتا ہے، اب میں اس سوال میں تھی ... کیا میں اروند سے چدوا لوں اور کس طرح؟ فر میں نے سوچا کیوں نہ اروند سے کیسے بھ کرکے آج رات ه سب بات کر صاف کر لنگي .. فر میںنے ایک نائیٹی پہنی اور اروند کہ کمرے میں بہانے سے گئی اور اب بھ میں برا اور پینٹی کے بغیر گئی، اروند بول ماں پاپا کب ايےنگے؟ میں نے کہا ارے پاپا نہیں ہیں تو تمہیں میرے ساتھ اچھا نہیں لگتا، فر میں اسکے پاس بیٹھ TV دیکھتے ہوئے اسے باتیں کرنے لگی، فر میںنے اپنے بدن کو اس کے بدن سے تھوڑا ٹچ کیا اور دیکھا کہ اروند 2 منٹ میں اسہج ہو گیا اور اس کی پہنی ہوئی ٹریک سوٹ سے اسکا لنڈ جیسے سخت سا ہونے لگا، مجھے مکمل مالم ہو رہا تھا، فر میںنے دسرا پلان کیا اور بولی بےٹا ذرا رکو میں ابھی آئی، کہہ کر اپنے کمرے میں آئی اور دوبارہ وہی ٹائیٹ سلوار پہنا اور اروند کہ کمرے میں گئی ... واووو! همممم، اب کیا اروند تو بس، ہو سکتا ہے اروند کے نہ چاہتے ہوئے بھ اسکی نجریں میرے مست بڑے بوبس پر آ ه جاتیں تھیں، فر اروند اپسےٹ ہو کے شاید اس كبرڈ کے پاس گیا اور کچھ ڈھوڈنے لگا، فر میںنے اپنی بڑی گانڈ کو اس طرف پورے 10 انچ کے فاصلے سے ایک ٹیبل پر ہاتھ رکھے جھکے ہوئے ڈوگی سٹائل جیسے ایک کتاب پڑنے لگی اور مکمل توجہ رككھا کہ اب اروند کیا کرتا ہے، فر میں باتیں کرنے لگی اور کتاب کو پڑنے کا ڈرامہ کرتے اس پر نظر رکھی، فر تھوڑی دیر بعد اروند نے میری گانڈ کو دیکھا اور اپنے بیڈ پر بیٹھا .. میں نے بس جیسے پیچھے دیکھا ه نہیں اور انتےجار کیا کہ اب کیا ہوگا، فر اروند نے اپنا موبائل اٹھایا اور کچھ کرنے لگا اور بس فٹا-فٹ 2 کلک میرے پیچھے سے شاید میری گانڈ کہ ه تصویر لی ہوں ... بس میں تو سب سمجھ گئی، فر اب میں شرم سے 1 منٹ بھ وہاں رہ نہیں پائی، اور سو گئی، صرف صبح کہ انتظار تھا، اگلے دن اروند کولیج چلا گیا اور بعد میں 10.30 بجے پدما میرے گھر پر آئی، میں نے پورے کہانی بتا، اروند نے اب بھ میری گانڈ کہ تصویر لی ہے اور یہاں تک میرے پینٹی کو بھ اس نے سنگھا تھا، پدما سنتے ه غصہ ہوئی اور بولی ، یہ سب تم مجھے کیوں کہہ رہی ہو، میں تجھے پہلے کہہ چکی ہوں کہ ایسا موقع دوبارہ نہیں ملے گا، ہو سکتا ہے اروند تیری بےٹا ہو پر یہ سب بہت ہوتا ہے، پدما بولی .. سنندا سوچ مت زیادہ، صرف مزے لے لیا کر. اگلے کچھ دنو کے بعد تیرے شوہر 3 مهنو کیلئے باہر، اور تجھے ایسا اچھا وقت شاید نہ ملے، لپٹ جا اروند کے اپر اور تیری بھری پڑی جوانی کو ٹھنڈك دے اور اروند کو بھ تیری مست مست گرم جوانی کا ذائقہ بھ چکھنے دے ... كيوكي وہ تیری جوانی کو جی بھر کے تاوان دینا چاہتا ہے، اگر تم اسے کھانا کھلانے بھ دی تو کیا برا ہے، اور جب جب مجھے موقع ملے، ضرور آپ کے گرم پرانٹھے بھ اروند کو كھلاگي، میں نے پچھا گرم پرانٹھے ؟؟؟ پدما، ارے بابا چوت! فر میں نے پوچھا یعنی کہ تم بھ ..؟ پدما ہاں، کیوں نہیں، اس عمر میں اگر کوئی سخت اور جاون لنڈ ہم جیسی 40+ عورتوں کو ملے تو کیوں نہ چکھ لیا جائے اور اسے بھ ہماری عمر کہ گرمي محسوس ہونے دی جائے؟ کیا خیال ہے سنندا. سوچ مت اور جلدی مجھے جواب چاہیے، ہاں اگر تم نہیں مانتی ہے تو مجھے اروند کے ساتھ فر جنسی کرنے دے. فر .. میں تو اروند کہ اس تره کہ اداوں پر فدا ہوں، سچ بولوں سنندا! میری چوت بھ گل ہو جاتی ہے جب تم اروند کے بارے میں بولتی ہو ... اب میں کچھ زیادہ نوٹكي دکھا کے پدما کو غصہ دلانا نہیں چاہتی تھی كيوكي میں نے بھ من ه من سوچ لیا تھا کہ پدما صحیح بولتا ہے، اب میں پدما کو بولی ہاں پدما ' میں اس کے لئے تیار ہوں ' .. هممممممم اب تم سمجھی گدھي بس مزے لے اور اروند کو جی بھر کے تیرے بدن کہ مست مست بڑی چیزوں کا مزہ لوٹنے دے ... اس کے بعد پدما نے ایک كوفي لمیٹڈ اور بولی سنندا وعدہ کہ مجھے بھ اروند کبھی کبھی چاہئے، میں بولی تم میری سب سے اچھے سہیلی ہے، جتنا چاہے تم اروند کو اےنجوي کر لے ... فر پدما بولی جاتی ہوں پر آج اور اب سے اس کام پر لگ جا، جب تک تیرے هسبےنڈ 3 مهنو کیلئے جيےنگے تب تک ہمارا کام ہو جانا چاہئے اور اروند ہمارے قبضے میں اور تم پر فدا، صرف اسے کے بعد ہر رات تیرے لئے ایک ' سہاگ رات ' .. هےهےهےےےے کرکے .. پدما چلی گئی .. اب مےمے مکمل ٹھان لیا تھا کہ اپنی جنسی کہ پورتي میں اپنے بےٹے سے ه پورے كرنگي اور وہ جو میرے بڑی گانڈ اور بوبس کو بہت چاہتا ہے اسے بھ جی بھر کے جھیلنے دوگي. اب میں دھیرے دھیرے بھولنے لگی کہ اروند میرے بےٹا ہے، پھر اس بارے میں سوچنا اس کے ساتھ میری انٹيمےسي کہ خوب نظر آنے لگی. صرف ایک بات سے میں پریشان تھی کہ کس طرح شروع کیا جائے، جہاں تک اروند کا سوال ہے وہ کبھی بھ قبل شروع نہیں کر پائے گا كيوكي میں اس کی ماں ہوں، ہو سکتا ہے کہ کافی دنو سے اروند میرے مست بدن کو اپنی ہوس کا شکار بنانا چاہتا ہو پر بچہ ہے اور ہمت جٹا نہ پا رہا ہو .... اب میں نے سوچا جو کرنا ہے سب مجھے ه آغاز کرنی ہوگی ... فر میں اروند کا کولیج سے واپس آنے کا راہ دیکھتی رہی .. اروند کولیج سے واپس آیا اور میں نے کچھ زیادہ پلان اس پر استعمال نہیں کیا كيوكي مجھے پتہ تھا کہ اس کی پاپا کل واپس آ جائیں گے، اگر میں کچھ زیادہ اروند کو موٹوےٹ یا اتیجیت کر دیا تو پھر اس پاپا کے آنے کے بعد ہو سکتا ہے کہ اس کا یہ مزاج سب کے سامنے نہ آ جائے، یہ سوچ کے میں اپنے شوہر کے واپس آنے کا اور پھر 5 دن بعد دوبارہ 3 مهنو کیلئے واپس جانے کا انتظار کیا ... اس دوران اروند کو کبھی کبھی میری چھاتیاں دیکھنا، اور میرے جسم کو اس کو ہلکا سا محسوس کروا لینا جیسے چھوٹی چھوٹی حرکتیں کرنے لگی، تاكي اروند کی توجہ میرے هوٹ بدن پر ٹکا رہے .... اب فر آیا وہ دن جس کا مجھے بیسبری سے انتظار تھا ... وہ یہ ہے کے گاؤں میں اپنا نیا گھر بنوانے کے لیے اروند پاپا پہلے سے تیاری کر چکے تھے اور اس دن وہ 3 مهنو کے لیے جانے لگے
 .. وہ پورے تےير پر اور میں زندگی کے ان حصے لمحے کا انتجار پر جو میرا بےٹا مجھے بہت جلد سوپنے والا ہے ... میں تو بس خوشی سے پاگل اور پتہ نہیں کیوں میرے مست بدن کے ہر ایک ایک انگ جیسے درد سا فوٹنے لگ رہا ہو اور سچ كه میری چوت اور گانڈ تو جیسے مجھے کہ رہی ہو کے کاش اب کوئی اسے بس کھا ه جائے .... اروند کے اس لمبے اور موٹے لنڈ کا میں بیسبری انتظار کرتیں تھی جو میں نے اس دن ٹولےٹ پر اسے مٹھ مارتے ہوئے دیکھا تھا ... پورہ جسم امنگ سے بھرے اور میرے اروند کہ وہ گرم سخت تلوار کا زبردستی میری چوت پر سما جانا اور میری سب سے بڑی گانڈ پر میرے اروند کا بغیر رکے جور جور سے دھکے پر دھکا .. ووو! هممممممم ... میں پاگل س .. بس انتظار اور صحیح ******** اب میرے شوہر بولے سنندا، بیگ وگےرها اروند کے ساتھ باہر لے آو، فر ہم تینو ہمارے گےٹ کے پاس کھڑے تھے تب جاکر ایک کیب جو ہم نے بک کروا رکھی تھی آئی اور تب میری شوہر بولے اروند ہمیشہ ماں کا خیال رکھنا ... تب میں اروند کے نزدیک کھڑی تھی اور اروند کے پاپا بولے سنو اروند کا ذرا خیال رکھا کرو! ہاں فر سے وہ بولے اروند، يےس پاپا، ماں کا خیال رکھنا، تب میں نے اروند کہ طرف دیکھا اور کہا کیوں اروند رکھے گا یا نہیں بول کر اسے ایک ہلکی آنکھ ماری اور ذرا سا اپنے ہاتھ کو اپنے بوبس کے اپر فرا کے واپس لیا ... اروند بس ..... ... تب اروند اور اس کے پاپا اسٹیشن کے طرف نکل پڑے ... اب میں نے فورا پدما کو پھونے لگایا اور بولی اروند کے پاپا چلے گئے گاو تب تو پدما بھ بہت كھش ہوئی اور بولی اب شروع کر لے سنندا .. جو بھ اور جتنے تندہی کرنے پڑے کوئی فرك نہیں كيوكي اروند کچھ غلط نہیں سوچ سکتا ... میں نے کہا ... بس اب اروند کا انتجار ہے .. پر ایک ماں ہونے کے ناطے میں نے جو کرو سوچ سمجھ کے اور سٹیپ بائی سٹیپ كرنگي اب میں اپنے وہ کپڑے استعمال کئے جو میں نے کبھی 5 سال پہلے پہنا کرتیں تھی، مجھے پتہ تھا کہ میں صرف گھر پر اروند کو اكرشت کرنے کے لیے پهنوگي ... اب میں اپنے پرنے 1/3 مزید جانیں مختصر پینٹ کے ساتھ ایک مزید جانیں مختصر ٹوپ نکالا .. مزید جانیں مختصر ٹوپ اس لئے كيوكي میری زبردست بڑی گانڈ ہمیشہ نظر آئے اور الاسٹك نے 1/3 پینٹ میں وہ كي جو آپ ہل جاؤ گے ... میں نے اس پینٹ میں سامنے سے نیچے کے طرف یعنی کہ اگر میں جھك کے کچھ ڈوگی اسٹائل لے ل اس حساب سے جہاں میری چوت ہوگی وہاں سے میں نے 3 یا 4 انچ میں سلا کھول کر فاڈ دی اور بغیر پینٹی کے ساتھ پہن لی .. اب شیشے کے سامنے سے کھڑی گئی میں نے دیکھا اور هممممم ... اس پوس میں میری چوت تقریبا مکمل دیکھ رہی تھی .. بس اروند کہ انتظار میں تو بس میں ہوس اور اروند کیلئے بھكھ سے جل رہی تھی، سوچ رہی تھی کے کاش ماں نہ ہوتی تو مجھے اتنے سوچنے سمجھنے کہ ضرورت نہ ہوتی ... فر اروند آ گیا اور اپنے کمرے میں چلا گیا ... اب تو مجھے جتنا جلدی ہو سکے اروند کو اپنے قبضے میں کر لوں اور بس اےنجوي کرنا شورو کرو اب میں نے اروند کو بہانے سے اپنے کمرے میں بلایا اور پہلے سے ه میں شیشے کہ پاس کھڑی رہی، تاكي میں دیکھ سك کہ اروند میری چوت کو دیکھتا ہے یا نہیں ... اب اروند بولا ماں کیا ہے، میں نے بتو باتوں میں نیچے جھکی اور کچھ کم کرنے لگی ڈوگی جیسے پوسے میں ... اور آنکھیں میری شیشے پر ه تھی ... فر اروند نے جیسے ه میری مست بڑی گانڈ کو دیکھا صرف ہو سکتا ہے کہ میری گرم چوت پر نظر پڑی ہو اور بس وہ تو پاگل جیسے دیکھتا ه گیا، جھپک ایک منٹ کے لیے بھ نہ جھکی يےس لگ رہا تھا اروند بس اب ه میری چوت کو کھا گا ... میں نے سب شیشے پر دیکھ رہی تھی .. اب اروند نے تصویر بھ لے لئے ... مجھے مکمل مالم پڑ گیا اور اب میں نے اس سے پوچھا تیرے گرل-فرےنڈ ہیں کیا؟ وہ بولا نہیں ماں .. میں نے کہا کیوں؟ اور میں نے کہا،،، اروند يگ ہو اور ہونا بھ چاہئے، کچھ نہ سہی کبھی کبھی اس سے اےنجوي تو کر لینا چاہئے، شاید اروند میرے سے اس ترہں کہ بات پہلی بار سني تو چونك سا گیا اور وہاں سے اپنے کمرے میں چلا گیا ... میرا بدن بس اس کی بھوک سے تڑپ رہا تھا اور میں پاگل جیسے .. یہاں تک کہ میری چوت بھ گیلی ہو رہی تھی .. اب میں اروند کہ کمرے میں گئی اور بیٹھی ... اور پھر اروند اٹےچ باتھ روم کے اندر گیا اور ادھر میں نے اپنی دو انگلييا پنی چوت میں ڈالی اور اس کی گیلی ہوئی چوت سے شاید سفید سفید رس ہاں رس ه تھا ... اب میں اسی کے ہاتھ کے ساتھ آئی اور 1 منٹ کے بعد اروند کو بولی اروند بولو یہ کون سی خوشبو ہے، میں نے اپنی چوت میں ڈالی ہوئی انگلييا اس ناک پر رکھی اور سنگھنے کے لیے. ... میں اتنا پاگل س بن چکی تھی کہ مجھے یہ کرنی پڑا، فر اروند بولا کیا موم ...؟ میں نہیں جانتا یہ کیا ہے .. میں نے کہا .. آپ کو اس عمر میں مکمل معلومات ہونا چاہئے کہ یہ کیا ہے .. پر ایسا لگتا تھا کہ اروند کو پتہ چل گیا ہو كيوكي اس کی شکل اور جسم کہ تھرتھراهٹ سے مجھے مالم پڑا ... اس کے بعد اروند کولیج چلا گیا ... میں سارا کام ختم کرکے بس اروند کہ بارے میں سوچنے لگی، کیا اروند مجھے میری بےبسي کو مٹا پائے گا .. کیا وہ مجھے بھرپور چود پائے گا ..؟ جتنا میں چاہتی ہوں كيوكي وہ يگ ہے .. اور میری شادی کے بعد بھ میری چوت اور گانڈ کو کوئی اپنے جیب سے چاٹنا یا فر میرے شوہر کے لنڈ کو جی بھر کے مجھے چس لینے والی جنسی کبھی نہیں ملی ہے، كيوكي یہی ایک اسٹائل کا جنسی ہے جو مجھے بہت بہت پسند ہے اور وہ آج تک میرے نصیب میں ہے ه نہیں ... یہاں تک بھ مجھے میری گانڈ میں چدوانا بھ بہت اچھا لگتا ہے پر کیا کرو اگر اروند راضی ہو بھ گیا کیا وہ میری اسٹائل میں مجھے جی بھر کے چود سکے گا ......؟ مجھے پورا یقین تھا، اروند میرا سب کچھ اب تک دیکھ چکا ہے اور ضرور وہ بھ پیاسا اور بھوکا ہوگا اپنی ماں کے لیے .. اب پدما آ گئی اور میں نے جو سارے ٹرك اروند پر استعمال کئے تھے سارے کے سارے بتائے اور پدما نے کہا بالکل ٹھیک .. بس اب انتظار زیادہ مت کر اور بات کو کھولنے کہ کوشش کر لے کہ کر وہ گئی .. 4.30 بجے اروند آیا اور اس کی شکل کچھ بگڈي ہوئی تھی .. میں نے اسے ایک ہلکی كسس کہ جیسے میں ہمیشہ کرتیں ہوں اور پچھا کیا ہے بےٹا آج تم کچھ اوفف جیسے ہو .. شاید وہ صرف میرے ه بارے میں سوچ کے پریشان تھا .. فر اروند نے کچھ کھایا اور کمرے میں گیا اور میں نے فر سے میری انگلي والی ترکیب سے دوبارہ اسے سنگھاي .. اس بار اروند بولا بہت اچھی خوشبو ہے ماں .. کیا ہے ..؟ فر میںنے ایک اچھی سمائیل دے کر کہا، ہاں بےٹا یہ اچھی ه ہے، صرف تم يگ ہو، جب بڑے ہو جوگے تب .. فر ایک سمائیل اور ہلکی س آنکھ مار کے میں اس کے کمرے سے چلی آئی .. اب کچھ آدھے گھنٹے بعد اروند حال میں آیا اور میرے پاس سوفے سے بیٹھا .. میں فورا اپنے جسم کو اس کے ساتھ لگا کے باتیں کرنے لگی اور آہستہ آہستہ اپنے بوبس کو اس کے بانہوں پر رگڈنے لگی .. اروند کا ردعمل کچھ صحیح نہیں تھا ایسا لگا کہ اروند بھ اپنے بانہوں کو میری بوبس سے الگ ہٹا رہا تھا .. اب میں جان بجھ کے اروند کا موبائل کھول کر وہی والی فولڈر نکالی جیسے میں نے اب دیکھا ہو اور صرف اپنی ٹرك کا استعمال کیا اور ایک زور کی آواز نکالی ..، یہ کیا ہے ..؟ میری اے سی اے سی تصاویر اور میرے ه بےٹے کے موبائل میں .. اوہ مائی گوڈ! یہ میں کیا دیکھ رہی ہوں .. اروند بس جیسے .. ماں؟ اس کے بعد اس کی بولتی بند، میں کھڑی زبردست ڈرامہ کرنے لگی کہ اروند تم میرا بےٹا ہے اور تم ه اپنے ماں کہ اس تره کہ تصویر اے بھگوان، اروند رونے لگا، نیچے سر اور اوپر جیسے دیکھنے کہ ہمت نہ ہو اس میں .. یہ سب تیرے پاپا کو بولنا پڑے گا .. تمہیں ہمارا بےٹا ہونے کہ کوئی هكك نہیں، اے بھگوان کیسے تنے یہ سارے تصویر لے لئے .. کیا تم اپنی ماں کہ بھ عزت نہیں کرتا .. میرے اتنے گندے تصویر ... کیا کرو اروند .. اگر یہ بات اور کسی کو پتہ چلتی تو میں کسی سے منه نظر آنے کے قابل نہ رہتی .. تجھے بےٹا کہنے میں مجھے شرم آتی ہے .. بتاو اروند کیوں؟ اور كسليے ...؟ یہ سب تو نے کیوں کیا؟ وہ جیسے رونے لگا چیخ کر اور میرے پاؤں پر گر کر گڈگڈا کر بولا ماں I am Sorry .. میں فر بس ڈرامہ کرنے لگی اسے ہلکی س ماری پیروں سے دھکا لگایا اور بولی تم معافی کہ قابل نہیں ہے اروند .. جاؤ مجھے کبھی اپنے شکل نہ دکھانا ..، فر ایک اور ڈرامہ کرنے لگی اور فون اٹھا کے تیرے پاپا کو اب ه بات کرتیں ہوں بولی .. اب اروند. ماں پلیج پاپا کو، رونے لگا .. فر میں نے ساری بات بھ کہی جو پہلے ہوئی تھی .. سنو اروند تم کبھی اچھے ہو ه نہیں، میری پینٹی تیرے کمرے کیا کرتی تھی .. صحیح ہے یا غلط .. وو بولا کون س اور کیا پینٹی ماں؟ .. ڈرامہ سے فر میں کرو فون پاپا کو ..؟ اب اروند ماں ..! مے: کیوں؟ میری پینٹی تیرے کس کام کہ ...؟ تم فلمیں بھ دیکھتا ہے وہ بھ in**st .. یعنی کہ تم اپنے ماں کو بھ .. شرم آنی چاہئے اروند .. میں نے تیرے لےپٹوپ کہ پوری هسٹري چےكك کہ ہے .. بس پورن وہ ماں اور بےٹا .. شرم اروند نہ جانے کیا کیا گندي باتیں سوچی ہوگی تنے میرے بارے میں .. اب تو تیرے پاپا کو بتانا ه پڑےگا. بہانے سے دوبارہ پھونے اٹھایا اور ڈائل کرنے لگی اور منقطع بھ، اب اروند ماں پلیج، نہیں، ہاں، ماں، سوری، اروند بس نےگھبرائی ہوئے رو رہا تھا .. اب میں کہا اروند ایک بات پر میں تیرے پاپا کو نہیں بتاگي .. بتاو کیوں اور کس لئے یہ سب تو نے كي؟ بولو .. ورنہ، صرف ... ماں آپ مجھے مار ڈالوگے اگر میں نے آپ کو سب سچ بتایا تو اس سے اچھا تو میں گھر چھوڑ کے ه چلا جا .. اب میں ڈرامہ بھرے تھوڑے غصے سے، مجھے بتاو کیوں؟ ایک بےٹا ہونے کہ ناطے تمہیں ذرا بھی اپنی ماں کہ قدر نہیں .. بولوووو؟ اب اروند روتے ہوئے بولا .. کیا بتا موم ماں یہ سچ ہے، میں آپ کو پسند کرتا ہوں .. اب میرا ڈرامہ اوه نووووووو تم ذرا شرم کرو، ماں کو تم .. ہو گوڈ!، اروند: سوری ماں ' پر یہ سچ ہے .. اچھا کیوں تم مجھے پسند کرتا ہے فر بولو، اروند: ماں آپ کہ بڑی اور مست گانڈ اور بڑے بوبس کے لئے، اوہ نہیں اروند، میں اور نہیں سن سکتی .. اے بھگوان. یعنی کہ ...؟ اوههههه، میرے سامنے سے ہٹ جاؤ، کہ کر میں اپنے کمرے پر چلی گئی اور پھر ڈرامہ کرکے دوبارہ فورا آ گئی، تم نے میرے ننگے فوٹو بھ لئے وہ بھ میری ' چوت ' کے اب میں صاف الفاظ میں بھ کہنے لگی .. اگر میرے کپڑے پھٹے ہوئے تھے تنے میری چوت کو دیکھا اور تصویر بھ .. دمم؟ تمہیں شرم نہیں آئی اروند. جو تیرے پاپا کو کرنا، اور دیکھنا چاہئے وہ تمہیں بھ .. اور فلم دیکھتے ہو in**st؟ ' هوٹ ماں کہ چدا بےٹے کی طرف ' یعنی کہ تم ہمیشہ ه میرے بارے میں یہ سب سوچتا ہے؟ کیا تم یہ سوچتے ہو کہ میں تمہاری رنڈي ......؟، اروند "نہیں ماں،" ... "تو پھر یہ سب کیا ہے ..؟" تم میری مست جوانی اور بدن کے بارے میں سوچ کر مٹھ مار دیتی ہے یا نہیں ..؟، اور وہ تصویر جو تم نے لیے ہیں اپنی ماں کہ چوت کے، اوه نوووووو اروند، میں تمہیں معاف نہیں كرگي.. نہیں ماں ایسا نہیں ہے، ہاں میں ضرور آپ کے هوٹ اور مست بدن پر فدا ہوں پر کبھی ایسا گندا سوچا ه نہیں، اب میں بولی اچھا گندا سوچا نہیں اور کیا کیا سوچتا اور کرتا اروند .. بولو؟ تم مجھے باتھ روم، میں چھپ کر دیکھتے ہو گندے تصویر لیتے ہو اور کہتے ہو کے گندا سوچتے نہیں .. اروند، صرف روتا چلا جا رہا تھا اور میں بس خوشی سے پاگل اور میری مست جوانی کہ بھوک بہت جلد مٹےگي سوچ کر ... . چلو ٹھیک .

Posted on: 04:24:AM 14-Dec-2020


0 3 404 0


Total Comments: 0

Write Your Comment



Recent Posts


Hello Doston, Ek baar fir aap sabhi.....


0 0 19 1 0
Posted on: 06:27:AM 14-Jun-2021

Meri Arrange marriage hui hai….mere wife ka.....


0 0 15 1 0
Posted on: 05:56:AM 14-Jun-2021

Mera naam aakash hai man madhya pradesh.....


0 0 14 1 0
Posted on: 05:46:AM 14-Jun-2021

Hi friends i am Amit from Bilaspur.....


0 0 76 1 0
Posted on: 04:01:AM 09-Jun-2021

Main 21 saal kahu. main apne mummy.....


1 0 62 1 0
Posted on: 03:59:AM 09-Jun-2021

Send stories at
upload@xyzstory.com