Stories


برسات کی رات دوست کی بیوی کے ساتھ از رابعہ رابعہ 338

میرے دوست کی نئی نئی شادی ہوئی تھی، اس کی بیوی کتنی ہاٹ تھی کیا بتاؤں. گورا گورا رنگ، تراشا بدن، بڑی بڑی آنکھیں، لمبے بال، پنکھڑیوں سے ہونٹ، عام جیسی چوچیاں، بڑے بڑے گول گول ہپ، گدراي جوانی جس مجا لینے کو میں بے تاب تھا. برسات کی ایک رات تھی جب میرا دوست بزنس کے لئے باہر گیا تھا، میں نے اس کے گھر پہنچا. بجلی گل تھی، میں جب گیا تو دروازہ کھلا تھا، بجلی تبھی گئی تھی. میں سیدھا اندر چلا گیا. وہ شاید کچن میں تھی. اس نے لال ساڑی پہن رکھی تھی جس کے آر پار اس بلاوج دکھ رہا تھا. میں نے دروازہ کھٹکھٹایا تو وہ آئی. تبھی بجلی کڑکی اور وہ ڈر کر مجھسے لپٹ گئی. میں اور کیا چاہتا تھا؟ میں نے اس سے زور سے اپنی باہوں میں سمیٹ لیا، اس کی پیشانی کو چوما، اس کے چوتڑوں پر ہاتھ رکھا اور اس کے ہونٹوں پر اپنے ہونٹ چسپاں دئے. اس نے سمجھا شاید اس کا شوہر ہوں میں، اندھیرے میں پتہ نہ چلا. اس نے چھوڑنا چاہا لیکن میں نے اسے پکڑ کر رکھا. اس نے کہا یہ آپ آج کیا ہو گیا ہے؟ اتنا پیار اچانک؟ میں نے کچھ نہ بولا، میں نے اسکا پلو نیچے گرایا، اس کی چوچیاں ٹٹولنے لگا. وہ بولی پہلے چائے تو پی لو، تھوڑا پھریش ہو جاؤ. میں بولا- کوئی بات نہیں، آج آپ کو پیار کرنے کو جی چاہتا ہے. وہ شرما گئی، بولی- آپ کی آواز کو کیا ہو گیا ہے؟ میں بولا- گلا بیٹھ گیا ہے. میں نے اسے اٹھایا باںہوں میں اٹھایا اور بیڈروم میں لے آیا. درمیان میں اس کے ہونٹوں کو چوستا رہا. بیڈروم میں دوست کی تصویر تھی. میں نے اسے بستر پر ڈالا، پھر بولا رانی آج میں آپ کو جی بھر کر پیار کروں گا. پہلے میں آپ کو لںڈ ہیلو كراوگا. وہ بولی یہ کیا ہوتا ہے؟ میں بولا- میری پیںٹ اتارو، پتہ لگ جائے گا. اس نے میری جپ کھولی. میں نے پتلون نکالی، میرا لںڈ کھڑا تھا. میں نے اس کے للاٹ کو چوما، پھر اس کے بالوں کو سہلایا. پھر اپنا لںڈ اسکے سر کو چھايا، میںنے کہا- میرا لںڈ آپ سجدہ کرتا ہے. پھر اس کی ناک کو چوما اور لںڈ کو چھايا، پھر اس کے ہونٹوں پر اپنے ہونٹ رکھ کر چوسے. میںنے کہا- کیلا كھاوگي کیا؟ اس نے کہا جی ہاں. میں نے اس کے منہ میں لںڈ گھسیڑ دیا. میںنے کہا- چوس میری رانی. اس نے چوسا. پھر میں نے اس کے گلے کو کس کیا اور چوچیوں تک پہنچا. میری تمنا پوری ہونے والی تھی. تبھی فون بجا، میں نے اٹھایا، میرا دوست تھا. اس نے اپنی بیوی راميا کے بارے میں پوچھا. میںنے کہا- چد رہی ہے. اس نے کہا کیا؟ اس نے مجھے گالی دی، پھر اس نے سمهالكر کہا- کوئی بات نہیں، اچھے سے چودو، مجھے ایک بچہ چاہئے. میں اسے کبھی خوش نہیں کر پایا. میںنے کہا- ضرور. کہتا ہوئے میں نے ایک ہاتھ سے زور سے راميا کی چوچی دبائی تو وہ چللا اٹھی. دوست بولا ذرا پیار سے کرو. میں نے فون رکھ دیا. وہ بولی کس کا فون تھا؟ میںنے کہا- ایک دوست تھا! میری رانی کیسا لگ رہا ہے؟ وہ بولی اچھا. میںنے کہا- میری چھممكچھللو تیری چوچیاں بہت مزہ ہیں، ذرا دکھا دے. وہ بولی نہیں ابھی نہیں. یہ میرے بچے کے لئے ہیں. میں نے اس کی بائی چوچی کو دبایا، پھر دائیں کو دبایا. اس کی چوچيا بڑی ہونے لگی. میںنے کہا- دیکھو بلاوج پھٹ جائے گا، اسے اتار دو. میں نے بٹن کھولنے شروع کیا، اس نے میرا ہاتھ ہٹا دیا. میں نے پھر پھر اس کے ہاتھ کو پکڑا اور منہ سے بلاوج کو فاڑ ڈالا. وه- آپ میرا عصمت دری کر رہے ہو کیا؟ مے- نہیں رانی، محبت ہے یہ. اسکی چوچیاں اب بھی برا میں تھی، میں نے برا میں انگلی ڈالی اور چوچیوں کو چودنا شروع کیا. پھر ہک کھول دئے تو اب اس کی چچیا میرے سامنے تھی. گوری گوری چوچیاں. میں نے اس کے بائیں چوچی سے اپنا لںڈ کو چھو لیا، پھر دائیں سے. میںنے کہا- واہ، کیا عام ہیں! راميا، آپ عام تو بہت رسیلے ہے. چکھ لوں کیا؟ وہ کچھ نہیں بولی. میں نے ایک چوچی چوسنے لگا، ساتھ میں دوسری چوچی کو دباتا رہا، وہ سسکاریاں لیتی رہی. پھر دوسری کو چوسا، پھر چوچیوں کے بیچ کس کیا. وہ آہ اہ کرتی رہی. میرا خواب پورا ہو رہا تھا. میںنے کہا- بیبی، ذرا آپ اپنی دونوں چوچیوں کو آپس میں دباو، میں لںڈ درمیان میں رکھتا ہوں. اس نے وہی کیا، میں نے اسکی چوچیوں کو چودا. میںنے پوچھا- کیسا لگا؟ وہ شرم سے سرخ ہو گئی. پھر اس کی ناف کو لںڈ سے چھوا اور پھر کس کیا. اب اس کے چوتڑوں کی باری تھی. کیا مست چوتڑ تھے اسکے! میں نے زور دیا، کس کیا، وہ چیخ اٹھی. پھر میں نے اس کی رانوں کو چوما، میںنے کہا- رانی اپنی ٹاںگے سپریڈ. میں نے اس کی چوت کو کس کیا، انگلی ڈالی اور چودنا شروع کیا. پھر اپنا لںڈ دال دیا پھچاک سے. تبھی لائٹ آ گئی. جلدی میں میں سوئچ آف کرنا بھول گیا تھا. لیکن اس نے آنکھیں بند کر لی تھی. میں چودتا رہا، وہ سسکاریاں لیتی رہی، آنکھیں بند کرکے اور کچھ دیر کے بعد میں جھڑ گیا. اس نے آنکھیں کھولی، مجھے دیکھا، میں نے اسے دیکھا. اس نے کہا یہ کیا؟ یہ تو آپ ہو؟ میںنے کہا- رانی میری نظر آپ پر پہلے سے تھی. آپ چودنے کی خواہش تھی. اس نے مجھے دھکا دیا. تبھی دوست کا فون آیا، میں نے اٹھایا اور اسپیکر آن کیا. اس نے پوچھا کیسی لگی میری بیوی؟ میںنے کہا- بہت ہاٹ. اس نے کہا اچھے سے چدائی ہو گئی؟ میں نے كها- ہاں جیسا تم نے کہا تھا. راميا سب سن رہی تھی. اس نے پوچھا اس کو کیسا لگا؟ میںنے کہا- پتہ نہیں، خود پوچھ لینا. اس نے کہا ٹھیک ہے مستی کرو، راميا کو پیار دینا. میں نے راميا کو کہا- دیکھا، یہ بول رہا تھا تمہارا شوہر، اب بولو. وہ کچھ نہ بولی، آہستہ آہستہ کپڑے پہننے لگی. میںنے کہا- تھوڑا صاف تو کر لو. وہ چپ رہی. میں نے اس کے بالوں کو سہلایا، وہ مجھسے لپٹ گئی، بولی- آپ کی کوئی غلطی نہیں. اس نے آہستہ سے میرے گالوں کو چوما. میں نے اسے اٹھایا اور باتھ روم میں لے آیا، پھر اس کے جسم پر صابن لگایا، صاف کیا. میںنے کہا- کیسا لگا بھابھی آپ کو؟ وہ بولی بھابھی مت کہو! مجھے اچھا لگا. اصل میں میں پہلے ہی جان گئی تھی کہ آپ ہیں. میںنے کہا- آپ کی چوچیاں بہت پیاری ہیں. میں نے اسے صاف کیا، چوچیوں پر پھر کس کیا. بدلے میں اس نے میرے لںڈ کو چوما. پھر ہم دونوں بستر میں گھس کر گئے. میںنے پوچھا- پھر کب؟ وہ بولی جب آپ کہو تب. میں نے اگلے اگلے ہفتے کشمیر جانے والا ہوں، چلو گی میرے ساتھ؟ وه- ضرور میرے بادشاہ. میںنے کہا- واہ میری رانی. کہہ کر میں نے اس کے ہونٹوں پر اپنے ہونٹ رکھ دیے جنہیں وہ چوسنے لگی. پھر ہم کشمیر کے راستے میں تھے ... ٹرین میں .. میں اور وہ .. اکیلے میں

Posted on: 04:31:AM 14-Dec-2020


0 0 162 0


Total Comments: 0

Write Your Comment



Recent Posts


Hello Doston, Ek baar fir aap sabhi.....


0 0 19 1 0
Posted on: 06:27:AM 14-Jun-2021

Meri Arrange marriage hui hai….mere wife ka.....


0 0 15 1 0
Posted on: 05:56:AM 14-Jun-2021

Mera naam aakash hai man madhya pradesh.....


0 0 14 1 0
Posted on: 05:46:AM 14-Jun-2021

Hi friends i am Amit from Bilaspur.....


0 0 76 1 0
Posted on: 04:01:AM 09-Jun-2021

Main 21 saal kahu. main apne mummy.....


1 0 62 1 0
Posted on: 03:59:AM 09-Jun-2021

Send stories at
upload@xyzstory.com