Stories


بچپن از یاسر خان 2355

نامکمل کہانی ہے


یہ جو کہانی آج لکھ رہا ہوں میری زندگی کا بڑا ہی خوبصورت واقعہ ہے جو بچپن میں ہوا تھا اس کہانی کو پڑھ کر بہت مزہ آئیگا تو غور سے پڑھنا اور انجوائے کرنا یہ بات تب کی ہے جب میری عمر 13 سال تھی اور اس وقت میری للی تھی لنڈ تو نہیں کہونگا کیوں کہ کافی چھوٹا تھا میں میری للی کا سائز بھی کافی چھوٹا تھا تقریباً 4 انچ کی ہوگی فل کڑک ہونے پر..... اس وقت میرے جھانٹوں کے بال ہلکے ہلکے آنا شروع ہوئے تھے بس.....میرے اندر شروع سے ہی سیکس والی فیلنگ بہت زیارہ ہی تھی مگر مجھے سیکس کے بارے میں کچھ بھی نہیں پتہ تھا چھوٹا تھا کافی اور اس زمانے میں نا انٹرنیٹ تھا نا کوئی اور ایسی چیز جس سے ان سب کے بارے میں معلومات مل سکتی ہوں بس اسکول کے دوست تھے اکثر ایسی باتیں کرتے تھے یعنی لڑکیوں کے بارے میں تو تھوڑی بہت دلچسپی سی تھی اور سب سے زیادہ تجسس تھا کہ یہ سب ہوتا کیا ہے کیسے کرتے ہیں بچے کیسے پیدا ہوتے ہیں میں بڑا ہورہا تھا جسم میں تھوڑی تھوڑی تبدیل آرہی تھی اکثر صبح سو کر اٹھتا تھا تو میری للی کڑک ہوئی ہوتی تھی پر اتنا دھیان نہیں جاتا تھا. خیر یہ کہانی ہے میرے پہلے سیکس کی جو میرے اور میری آنٹی (خالہ) کے ساتھ ہوا جو ایک بہت ہی انٹرسٹنگ اسٹوری ہے میری آنٹی جو میری امی سے چھوٹی بہن ہیں وہ کراچی کہ علاقے اورنگی ٹاؤن میں رہتی ہیں جبکہ میرا گھر ملیر میں ہے ان کے اور میرے گھر کا فاصلہ کافی تھا ان دنوں بس میں ہی سفر کیا کرتے تھے میری آنٹی جن کو ہم سب گڑیا آنی کہتے تھے وہ اپنے شوہر کے ساتھ اورنگی میں رہتی تھیں مگر انکے شوہر دبئی میں نوکری کرتے تھے ان کہ گھر میں انکی ساس سسر اور ایک دیور تھا جسکی شادی نہیں ہوئی تھی وہ رہا کرتے تھے.... اور گڑیا آنی کی فیملی کوئی اتنی امیر بھی نہیں تھی نارمل گھر تھا ان کے گھر میں 4 کمرے تھے بس اور میری آنٹی کے پاس بس ایک ہی کمرہ تھا جس میں وہ رہتی تھیں چونکہ انکے شوہر ملک سے باہر تھے تو وہ اکیلی ہی سب کچھ سنبھالتی تھیں اور میری والدہ سے بہت کلوز تھیں تو ہمارے گھر اکثر آجایا کرتی تھیں باقی 3 ماموں تھے جن کہ گھر کم ہی جانا ہوا کرتا تھا میری آنٹی کی شادی کو 10 سال ہوگئے تھے اور انکی ایک ہی بیٹی تھی جو شادی کے بہت ٹائم بعد ہوئی تھی اور اس وقت ایک سال کی ہی تھی میری آنٹی اکثر اسکول کی چھٹیوں میں کبھی میری بہن کو یا کبھی مجھے اپنے ساتھ اپنے گھر لیجاتی تھیں میری امی بھی ہم میں سے کسی کو بھی بھیج دیا کرتی تھیں تاکہ آنٹی کی گھر کے کاموں میں تھوڑی مدد بھی ہوجائے اور ہم اپنی گرمیوں کی چھٹیوں میں تھوڑا گھوم پھر بھی لیں اس بار جب سردیوں کی چھٹیاں آئی تھیں تو گڑیا آنی ہمارے گھر آئیں اور مجھے اپنے ساتھ اپنے گھر چلنے کو کہا میں تو خوش ہوگیا اور فوراً ہاں کردی کہ میں  آپکے ساتھ چلوں گا، کیونکہ میں جب بھی آنی کے جاتا تو بڑا مزہ آتا تھا وہ بڑے اچھے اچھے کھانے بنا کر کھلاتی تھیں میں انکا اکلوتا بھانجا تھا مجھے پیار بھی بہت کرتی تھیں شروع سے خیال رکھا تھا.... خیر میں آنی کے ساتھ انکے گھر آگیا ان کے روم میں ایک بیڈ تھا جس پر وہ اور میری چھوٹی کزن سوتی تھی انکل ان دنوں بھی ملک سے باہر ہی تھے جب میں انکے گھر جاتا تو میں بھی بیڈ کی ایک طرف سویا کرتا تھا کافی بڑا بیڈ تھا تینوں آرام سے سوجاتے تھے.....آنٹی بیڈ کی ایک طرف ہوتی تھیں بیچ میں انکی بیٹی اور دوسری طرف میں سوتا تھا... اب آتا ہوں اصلی کہانی کی طرف تو ہوا کچھ یوں کے ان دنوں میں آنی اپنی بیٹی کو اپنا دودھ پلایا کرتی تھیں وہ اس وقت ایک سال کی ہی تھی اس دن آنی کے گھر رات کا کھانا کھاکر میں ٹی وی دیکھ رہا تھا تو آنی کی بیٹی علینہ کو بھوک لگی ہوگی وہ کافی رو رہی تھی آنی کچن میں کاموں میں لگی تھیں تو میں علینہ کو چپ کروا رہا تھا پر وہ بھوک کی وجہ سے رو رہی تھی اتنے میں آنی آئیں انہوں نے علینہ کو گود میں لیا اور وہیں زمین پر بیٹھ کر اپنی قمیض اٹھائی اور دودھ باہر نکال کر علینہ کے منہ میں دے دیا میرے لیے یہ تھوڑا نیا تھا میں پہلی بار کسی عورت کا دودھ دیکھ رہا تھا آنی کے دودھ بہت بھاری تھے کافی دودھ بھرا ہوا تھا انکے مموں میں، خیر میں نے تھوڑی حیرت سے آنی کے مموں کی طرف دیکھ رہا تھا اور وہ بھی چور نظروں سے تاکہ انکو ایسا نا لگے کے میں انکے مموں کو دیکھ رہا ہوں آنی آرام سے علینہ کو دودھ پلانے میں لگی تھیں انکو اس بات کی ٹینشن نہیں تھی کہ میں وہاں بیٹھا ہوں کیونکہ مجھے تو وہ ویسے بھی ایک بچے کی طرح ہی سمجھتی تھیں مگر میں بلکل چھوٹا بچہ بھی نہیں تھا 13 سال میں بچوں کہ اندر طوفان آنے لگتے ہیں میرے لیے یہ نظارہ بڑا اچھا تھا میں چور نظروں سے آنی کے مموں کا نظارہ کرتا رہا پھر وہ تھوڑی دیر بعد دودھ پلا کر پھر کچن میں چلی گئی اور میں انکے پیارے سے ممے کے بارے میں ہی سوچتا رہا.... اب تو یہ نارمل بات تھی کہ آنی علینہ کو میرے سامنے ہی دودھ پلاتی تھیں لیکن وہ اپنے کمرے میں ہی آکر پلاتی تھیں کیونکہ ان کے سسر گھر میں ہی ہوتے تھے تو جب بھی انکو دودھ پلانا ہوتا تھا وہ کمرے میں آجاتی تھیں لیکن کبھی مجھے ایسا نہیں کہتی تھیں کہ تم باہر جاؤ میرے سامنے ہی وہ قمیض اوپر کرتیں اور شروع ہوجاتی اب تو انکے دونوں مموں کو اچھی طرح سے بہت بار دیکھ چکا تھا. کافی بار ایسا ہوا کے آنی نے میری طرف دیکھا تو میری نظریں اس وقت انکے مموں پر جمی ہوتی تھیں جیسے ہی میری نظر پڑتی کہ آنی مجھے دیکھ رہی ہیں میں فوراً نظروں کو گھمالیتا تھا پر وہ کچھ نا کہتی..... ایک دن میں محلے میں اپنے ہم عمر بچوں کے ساتھ کرکٹ کھیل رہا تھا اچانک بال کو پکڑنے کے چکر میں کیچڑ میں جا گھسا اور زور سے گرنے کی وجہ سے پیر میں چوٹ بھی لگ گئی اور پورے کپڑے کیچڑ میں سن گئے
سب بچے میرا مزاق اڑا رہے تھے میں جیسے تیسے اٹھا اور گھر کی طرف بھاگا گھر پہنچا تو آنی مجھے دیکھ کر گھبرا گئیں


کیا ہوا علی یہ کیسے ہوا چوٹ کیسے لگی

آنی بال پکڑنے کے چکر میں کیچڑ میں گر گیا..

وہ جلدی بھاگتی ہوئے آئی اور مجھے کہا اپنے کپڑے یہی اتارو پورا گھر گندا ہوجائے گا میں نے جلدی سے کپڑے اتارے آنی نے سیدھا باتھ روم کے طرف جانے کا کہا پورا ننگا تھا تھوڑی شرم بھی آرہی تھی میں بھاگتا ہو باتھ روم میں گھس گیا آنی بھی باتھ روم میں آگیں اور مگے سے پانی میرے اوپر ڈالنے لگی جب تھوڑی کیچڑ صاف ہوئی تو انکو میرا زخم نظر آیا جو کافی زیادہ تھا آنی نے جلدی جلدی مجھے نہلا کر روم میں جانے کو کہا میرے ران کے پاس چوٹ لگی تھی کافی خون نکلا تھا خیر میں جلدی سے نہا کر تولیہ لپیٹ کر سیدھا روم میں بھاگا آنی آئیں انہوں نے فوراً میرا تولیہ کھولنے کا کہا انکے ہاتھ میں روئی اور کوئی دوا تھی میں زمین پر لیٹا ہوا تھا میرا تولیہ ہٹانے کے بعد آنی نے پوچھا کہاں درد ہورہا ہے تو میں نے اشارے سے بتایا انہوں نے فوراً میری چوٹ کو دیکھا اور روئی اور کپڑے سے صاف کیا پھر دوا لگائی اور مجھے کہا ایسے ہی لیٹے رہو بس.... جب وہ میری چوٹ پر دوا لگا رہی تھیں تو انکا ہاتھ کئی بار میری للی پر ٹچ ہوا جو میں نے تو فوراً محسوس کیا تھا..... خیر یہ سب ہونے کے بعد سب نارمل ہی چل رہا تھا 3 4 دن آنی نے میری چوٹ پر دوا خود لگائی اور چوٹ اب ٹھیک ہونے لگی تھی... ایک رات میں گہری نیند میں سویا تھا پتہ نہیں رات کا کیا ٹائم تھا مجھے نیند میں اچانک ایسا محسوس ہوا جیسے میری ران اور چوتڑ پر کوئی ٹچ کر رہا ہے پر میں بہت نیند میں تھا اور بے خبر سورہا تھا دوسرے دن جب صبح اٹھا تو کافی دیر بعد اچانک سے وہ بات یاد آئی تو سوچا کہ شاید خواب دیکھ رہا ہونگا..... اس دن مجھے آنی بھی تھوڑی بدلی ہوئی سی محسوس ہوئیں وہ میرا زیادہ خیال رکھ رہی تھیں بار بار پوچھتی تھیں چوٹ کیسی ہے اب درد تو نہیں ہورہا میں نے کہا آنی سب ٹھیک ہے آپ ٹینشن نا لو انہوں نے اس دن میری پسند کا کھانا بنایا رات کو آئسکریم بھی منگوا کر کھلائی..... سونے سے پہلے دودھ کا گلاس بھی دیا اور پھر رات کافی ہوئی تو میں سو گیا اس رات پھر سے مجھے محسوس ہوا جیسے میری جسم کو کوئی چھو رہا ہے اس بار میری نیند پوری طرح سے کھل گئی مگر میں جان بوجھ کر بے سد پڑا رہا جیسے گہری نیند میں ہوں تھوڑی دیر تک یہ سب چلتا رہا مجھے بہت اچھا محسوس ہورہا تھا مزہ آرہا تھا اور اسی مزے میں میری للی میں حرکت ہونے لگی اور آہستہ آہستہ میری للی پوری طرح کھڑی ہوگئی اور لکڑی کی طرح سخت ہوگئی پہلے میرے رانوں پر ہاتھ محسوس ہورہا تھا پھر آہستہ آہستہ رانوں سے ہوتا ہوا میری للی پر ٹچ ہوا مجھے ایک دم کرنٹ سا محسوس ہوا اپنے اندر مجھے پکا یقین ہوگیا کہ یہ سب آنی ہی کررہی ہیں کیوں کہ کمرے میں صرف وہ تھیں میں تھا اور علینہ تھی پر مجھے ڈر بھی لگ رہا تھا کہ یہ ہو کیا رہا ہے میں چپ سے پڑا رہا آنی کا ہاتھ جیسے ہی میری للی پر لگا تو انہوں نے اپنے ہاتھ سے میری للی کا پورا جائزہ لیا اور فوراً ہی اپنا ہاتھ ہٹا لیا اور یہ سب یہیں رک گیا میں اب اور حیرت زدہ تھا کہ پتہ نہیں کیا ہوا یہ رک کیوں گئیں خیر اسی سوچ میں گم نا جانے کب مجھے نیند آگئی اور میں سوگیا.... دوسرے دن صبح اٹھا تو سب نارمل تھا آنی اپنے کاموں میں لگیں تھیں دن ایسے ہی گزرتا رہا پھر رات ہوگئی اور میں پھر سے اپنے بستر میں آگیا اور جلدی ہی سوگیا..... رات کے پتہ نہیں کس وقت میری نیند پھر کھلی اور مجھے پھر محسوس ہوا جیسے میرے جسم کو کوئی ٹچ کر رہا ہے میں اس بار بھی چپ چاپ پڑا رہا اور دیکھتا رہا کے ہو کیا رہا ہے مسلسل ران پر ہاتھ سہلانے سے پھر میری للی میں جان آنے لگی اور وہ آہستہ آہستہ پھر کڑک ہوگئی اس بار میں نے محسوس کیا کہ میری شلوار اتری ہوئی ہے اور میں نیچے سے ننگا ہوں خیر وہ مجھے مسلسل ٹچ کرہی تھیں انکا ہاتھ رانوں کی بیچ والی جگہ پر زیادہ چل رہا تھا پھر انکا ہاتھ میری للی کے بہت پاس آگیا انہوں نے میرے انڈوں کو ہاتھ میں لے لیا جو کافی سخت تھے اور پھر میری للی کو پکڑلیا اور للی کی ٹوپی کو اپنی انگلیوں سے ٹچ کر رہی تھیں مجھے بڑا ہی مزہ آرہا تھا اس وقت کمرے میں گپ اندھیرا تھا کچھ بھی نظر نہیں آرہا تھا اور میری آنکھیں اب پوری طرح کھلی ہوئی تھیں انہوں نے اب میری للی کو ہلکے ہلکے دبانا شروع کردیا جس سے اور مزہ آنے لگا اور میں نے مزے مزے میں اپنی دونوں ٹانگوں کو پھیلا دیا تھا وہ مسلسل للی کو دبا رہی تھیں اور پھر کچھ ہی دیر میں مجھے محسوس ہوا کی جیسے میری للی کچھ گیلا سا کچھ ٹچ ہوا کافی گرم سا اور میرے پورے جسم میں اک جھر جھری سی آئی ہو... میرے تھوڑا ہل گیا تھا کہ یہ کیا ہوا ہے کچھ ہی لمحوں میں لگنے لگا کہ میری للی کسی چیز کے اندر ہے اور وہ چیز اوپر نیچے ہورہی تھی.... اور للی گیلی بھی ہوگئی تھی اور مزہ تو پوچھو مت کیسا تھا.... میں لفظوں میں شاید نہیں بتا سکتا کہ کس طرح کا مزہ تھا وہ..... کچھ دیر یہ سب چلتا رہا اور پھر اچانک سب رک گیا اور میں انتظار کرتا رہا پھر سے کب کریں گی اور اسی انتظار میں ناجانے کب سوگیا...... اسکے دوسرے دن جو کچھ ہوا اسنے میری لائف بدل دی تھی.... دوسرے دن دوپہر کا وقت تھا اس دن بہت ٹائٹ والی سردی تھی میں اپنے کمبل میں لیٹا ٹی وی دیکھ رہا تھا آنی گھر کے کام میں لگی تھیں اس وقت گھر میں صرف میں علینہ اور آنی ہی تھے باقی کے لوگ شاید کہیں گئے ہوئے تھے علینہ میرے ساتھ ہی کمرے میں تھی اپنے کھلونے سے کھیل رہی تھی اتنے میں آنی روم میں آگئیں اور علینہ کو گود میں لیا اور اپنا دودھ باہر نکال کر اسکو پلانے لگیں تو مجھے تھوڑی حیرت ہوئی کیونکہ وہ اس ٹائم علینہ کو دودھ نہیں پلاتی تھیں خیر علینہ نے دودھ منہ میں لیا اور ایک منٹ بعد ہی نکال دیا اور آنی کی گود سے نکل کر پھر سے کھلونوں کی طرف بھاگ گئی آنی اسکو آوازیں دے رہی تھیں مگر وہ نہیں آرہی تھی میں نے دیکھا آنی کا دودھ باہر ہی نکلا ہوا تھا اور ان کے نپل سے دودھ ہلکے ہلکے بہے رہا تھا آنی نے مجھے آواز دی اور علینہ کو پکڑ کر لانے کو کہا میں نے بھاگ کر علینہ کو پکڑ کر آنی کو دیا مگر وہ دودھ کو منہ نہیں لگا رہی تھی کیونکہ اسکا پیٹ بھرا ہوا تھا تو آنی اس کو غصہ کرنے لگی اور بولے جارہی تھیں کہ علینہ میری بچی دودھ پی لے دیکھ سب نیچے گر رہا ہے  دیکھ آجا ورنہ میں بھائی کو پلادونگی مجھے سن کر تھوڑا عجیب لگا مگر علینہ نہیں آرہی تھی... اتنے میں آنی نے مجھے آواز دی....

علی دیکھ علینہ دودھ نہیں پی رہی آجا تو پی لے......

مجھے لگا آنی علینہ کو بلانے کے لیے ایسا بول رہی ہیں مگر انہوں نے مجھے پھر بولا

علی تو پی لے میرا دودھ دیکھ یہ لڑکی نہیں سن رہی اود دودھ ضائع ہورہا ہے میں تھورا چونک گیا میں نے کہا آنی میں تو اب بڑا ہوگیا ہوں میں کیسے پیونگا تو انہوں نے مجھے کہا کچھ نہیں ہوتا تو بھی پی سکتا ہے جلدی آجا سب ضائع ہورہا ہے میں انکی بات کو منع کیسے کر سکتا تھا میں انکے پاس اگیا اور انہوں نے مجھے گود میں لیٹنے کا کہا میں لیٹ گیا اتنے میں آنی نے اپنا الٹے سایڈ والا دودھ پکڑا اور اسکی نپل میرے منہ میں لگا دی جیسے ہی نپل میرے منہ میں آئی تو میں نے نپل کو ہلکے سے چوسا اور دودھ میرے منہ میں آنے لگا اور میں مزے سے دودھ کو پینے لگا.... جب میری نظر آنی کو منہ پر پڑی تو دیکھا کہ انکی آنکھیں بند ہیں اور وہ اپنے ہونٹوں کو دانتوں سے دارہی تھیں میں چپ چاپ مزے سے دودھ پیتا رہا بڑے مزے کا دودھ تھا آنی کا میٹھا بھی کافی تھا جب الٹے سایڈ والے ممے کا دودھ تھوڑا کم ہوا تو انہوں نے سیدھی سایڈ والا مما میرے منہ میں دیا میں نے اسکو بھی چوس کر دودھ پینا شروع کردیا کچھ دیر میں اسکا دودھ بھی ہلکا ہو گیا تو آنی نے کہا چل اب دودھ ختم ہوگیا اٹھ جا.... میں اٹھ کر بیٹھ گیا تو آنی نے پوچھا کیسا لگا میرا دودھ میں نے کہا آنی بہت مزہ آیا میٹھا دودھ ہے آپکا بہت.... انہوں نے کہا کہ چل ٹیھک ہے اگر دوبارہ دل کرے تو بول دینا پھر سے تجھے پلا دونگی یہ لڑکی تو پیتی نہیں ہے ضائع کرنے سے اچھا ہے تجھے پلا دیا کروں... ویسے بھی بہت طاقتور ہوتا ہے ہے یہ والا دودھ میں نے ہاں میں گردن ہلا دی.... پھر آنی وہاں سے اٹھی اور علینہ کو ساتھ لیا اور باتھ روم چلی گئی اور علینہ کو نہلانا شروع کردیا جب علینہ کو نہلا کر فارغ ہوئیں تو مجھے آواز دی اور نہانے کو کہا میں نہانے کا چور تھا اوپر سے سردی تھی تو میں اور نہیں نہاتا تھا تو میں مے منع کردیا میں ابھی نہیں نہارہا


آنی غصہ میں بولی علی جلدی آجا پانی گرم ہے چل آکر نہا جلدی

مجھے جانا ہی پڑا میں باتھ روم. میں آیا تو آنی بولی چل آج تجھے میں خود نہلاتی ہوں تو ٹھیک سے نہیں نہاتا ہے مجھے تھوڑی شرم آنے لگی میں نے کہا آنی میں خود نہالونگا آپ جاؤ... وہ نا مانی اور مجھے کپڑے اتارنے کو کہا....

اور پھر انہوں نے میرے اوپر پانی ڈالنا شروع کیا میری تو سی سی نکل رہی تھی ٹھنڈ سے پانی ڈال کر انہوں نے پہلے میرے سر پر شیمپو لگایا پھر پورے جسم پر صابن ملنا شروع کردیا اور ملتے ملتے میری للی کی طرف پہنچ گئی جب رانوں اور للی پر صابن ملنا شروع کیا تو مجھے مزہ سا آنے لگا انہوں نے میری للی کو پکڑ لیا اور دوسرے ہاتھ سے اسکی ٹوپی کو ٹھیک سے کھولا اور پھر صابن ملنے لگیں میری للی میں ہلچل ہونے لگی اور وہ کڑک ہونا شروع ہوگئی 2منٹ نہیں لگے کے للی پوری طرح سے اکڑ گئی تھی..... آنی مجھے دیکھ کر مسکرا رہی تھیں اور للی کو مسلسل صابن مل رہی تھی اچانک بولی میرا بھانجا اب بڑا ہورہا ہے میں نے کہا ہاں آنی اور اب میں خود سے نہا سکتا ہوں وہ بولی چپ پاگل تجھے کچھ نہیں آتا ہے،،،، اب مجھے اور مزہ آرہا تھا اور آنی مسلسل للی سے کھیل رہی تھیں اور اب انکی مسکراہٹ غائب ہوگئی تھی بلکہ انکے چہرے کا رنگ بھی کافی لال ہوگیا تھا میں نے تو اپنی آنکھیں بند کی ہوئی تھیں مجھے اس وقت اتنی سمجھ نہیں تھی کہ ان سب پر کیسے ری ایکٹ کروں خیر پھر آنی نے میرے جسم کو اچھے سے دھولایا اور تولیہ لپیٹ کر کمرے میں جانے کو کہا اور بولا کے کپڑے بدل لے میں اب نہا کر آتی ہوں..... میں روم میں آیا اور کپڑے بدل کر کمبل میں گھس گیا تھوڑی دیر بعد آنی نہاکر آگئی تھیں انکو بھی سردی لگ رہی تھی وہ بھی اپنے بال سکھا کر اور جلدی سے بیڈ پر لیٹی اور کمبل اوڑھ لیا.... اور ادھر ادھر کی باتیں کرتی رہی کچھ دیر بعد آنی نے پھر سے مجھے پوچھا دودھ پینے میں کیسا لگ رہا تھا میں نے پھر سے وہ ہی کہا کہ اچھا لگ رہا تھا آنی وہ بولی کسی کو بتانا نہیں کہ میں نے تجھے اپنا دودھ پلایا ہے میں نے کہا نہیں بتاؤنگا آنی پھر وہ بولی تو نا اب بڑا ہورہا ہے تو تجھے بہت ساری. باتوں کا خیال رکھنا چاہیے میں نے پوچھا کونسی باتیں آنی تو انہوں نے کہا میں تجھے سب چیزیں ایک ایک کر کے سمجھادونگی مگر میں جو بھی بتاؤں تو وہ کسی اور سے کبھی نہیں کہنا ٹھیک ہے...

جی آنی ٹھیک ہے میں نہیں کہونگا

جاری ہے

لکھاری نے کہانی یہاں تک لکھی ہے اگر کوئی اسے مکمل کرنا چاہے تو لکھ کر بھیج دے

Posted on: 03:19:AM 28-Dec-2020


4 2 200 0


Total Comments: 0

Write Your Comment



Recent Posts


Hello Doston, Ek baar fir aap sabhi.....


0 0 19 1 0
Posted on: 06:27:AM 14-Jun-2021

Meri Arrange marriage hui hai….mere wife ka.....


0 0 15 1 0
Posted on: 05:56:AM 14-Jun-2021

Mera naam aakash hai man madhya pradesh.....


0 0 14 1 0
Posted on: 05:46:AM 14-Jun-2021

Hi friends i am Amit from Bilaspur.....


0 0 76 1 0
Posted on: 04:01:AM 09-Jun-2021

Main 21 saal kahu. main apne mummy.....


1 0 59 1 0
Posted on: 03:59:AM 09-Jun-2021

Send stories at
upload@xyzstory.com