Stories


ٹیوشن سے شروع از ڈیگن ہیم گائی 69

نامکمل کہانی ہے

ہیلو فرینڈز
 سب کیسے ہیں
 میرا نام علی ہے اور میں لندن میں مقیم ہوں آج میں کہانی لکھنے جا رہا ہوں جو میرے لندن آنے سے چار سال پہلے شروع ہوئی
 سنہ 2006 کی بات ہے میں تب بی کام پارٹ ون میں تھا دن میں کالج اور دوپہر کے بعد گھر میں ٹیوشن پڑھاتا تھا
 سیکس کی طرف کوئی زہن نہیں تھا ہاں البتہ کالج میں دوست پورن کلپس دیکھتے تو میں دیکھ لیتا تھا
 جب کبھی مہینے میں ایک بار بہت شدت ہوتی تو مٹھ مار کر گزارا کرتا
 پھر ایک دفعہ میرے ایک دوست نے مجھے ایک پورن سی ڈی دی میں گھر ایا کالج سے کھانا کھایا
 ٹیوشن کے بچوں کے آنے میں گھنٹہ تھا میں امی کو بولا میں اوپر سونے جا رہا ہوں بچے آئے تو مجھے پہلے اوپر کی بیل بجا کر جگاناژ
 میں اوپر اپنے روم میں آیا ٹراؤزر شرٹ اتاری بس بنین پہنی ہوئی تھی نیچے سے فل ننگا کیونکہ گرمیوں کے دن تھے
 میں نے سی ڈی لگائی کمپیوٹر میں لگائی اور مگن ہو گیا پورن مووی دیکھنے میں
 اب میں یہاں بتا تا چلو کہ میں نے میٹرک کے بعد سے اپنے لن کی خوب دیکھ بھال کی سرسوں کا تیل لگا کر اکثر مساج کرتا
 اس سے میرا لن 6 انچ سے تھوڑا بڑا اور موٹائی بھی تھی
 میں سکون سے ٹانگیں کھول کر بیڈ پر مووی انجوائے میں مگن تھا اور ساتھ ساتھ تیل سے لن کو مزا دے رہا تھا
 کہ اچانک روم کا دروازہ کھولا
 میری th9 کلاس کی سٹوڈنٹ عینی دروازہ پہ تھی پہلے اس نے میرے لن کو دیکھا آنکھیں پھاڑ کر جو کہ تیل کی مالش سے فل چمک رہآ تھا
 پھر اسکی نظر کمپیوٹر سکرین پر پری جس میں ایک لڑکا ایک لڑکی کی پھدی چاٹنے میں مگن تھا
 اس سے پہلے عینی کچھ بولتی میں
 فوراً  سمبھالا خود کو اور کھڑا ہو اپنے ٹراؤزر اتآر دیوار پر لگی کھنڈی سے
 اور ٹراؤزر پہننے لگا کیونکہ میرا لن فل کھڑا تھا
 ٹراؤزر پہن کر اس پ بڑا تمبو بنا ہوا تھا
 میری حیرت کی انتہاء  نہ رہی جب میں نے یہ دیکھا کی عینی وھیں بت بنی کھڑی مجھے دیکھ رہی تھی
 ہونا تو یہ تھا کہ وہ مجھے سوری کرکے مڑ جاتی یا نیچے بھاگ جاتی
 مگر وہ تو ایسے جیسے میری اس حالت کو انجوائے کر رہی ہو
 خیر ٹراؤزر پہن کر میں نے عینی کو سوری بولا
 اور کہا کہ عینی تم اتنی جلدی کیوں ائی اور میرے روم کا دروازہ کیوں نہیں کھٹکھٹایا
 تو وہ بولی دروازہ تھوڑا سے پہلے ہی کھولا تھا
 اور میں اسلیے جلدی آئی کہ کل میتھ کا ٹیسٹ ہے اسکی تیاری کرنی تھی کیونکہ باقی بچے ھوتے ہیں تو آپ زیادہ ٹائم نہیں دے پاتے
 یہ سن کر میں بولا چلو کوئی نہیں لیکن پلیز جو تم نے دیکھا کسی کو نہیں بتانا
 یہ کہتے ہوئے مجھے شرم بھی آ رہی تھی
 کیونکہ وہ میری سٹوڈنٹ تھی اور اس نے مجھے رنگے ہاتھوں پورن دیکھتے مٹھ مارے ھوئے پکڑا تھا
 خیر ان باتوں میں میرا لن سو گیا لیکن تیل سے لتھڑا لن ٹراؤزر پر نشان چھوڑ گیا
 یہ بھی مجھے تب پتہ چلا جب عینی نے مجھے اشارہ کیا کہ آپ کا ٹراؤز گیلا
 وہ سمجھی کہ شائید میں نے سو سو کر دیا
 لیکن مجھے پتہ تھا کہ لن پہ لگے تیل کا نشان ہے
 عینی کا اشارہ سن کر میں اٹھا الماری سے دوسرآ ٹراؤزر نکالآ اور عینی کو میتھ کی بک نکالنے کا بول کر خود باتھ روم چلا گیا اورٹراؤزر چینج کرکے باہر نکلا تو حیرت کے مارے میرا منہ کھلا رہ گیا
 کیونکہ میں کمپیوٹر پر مووی بند کرنا تو بھول ہی گیا تھا
 جیسے میں اٹیچ باتھ سے نکل کر روم میں آیا تو عینی کمپیوٹر کی سکرین پر نظر جمائے لڑکی کو لڑکے چوپے لگاتے غور سے دیکھ رہی تھی
 میں جیسے تھوڑا ہوش میں۔ آیا تو جلدی سے ماؤس پکڑ کر مووی بند کی سی ڈی نکالی کمپیوٹر بند کیا
 اب سی ڈی پر بھی گندی تصویر بنی تھی میں نے سی ڈی اپنی االماری میں رکھی
 اتنے میں عینی چپ کرکے بیٹھ گئی اور میتھ کے بک نکال کر صفحے الٹنے لگی
 میں پیچھے مڑا اور عینی کے پاس چپ کرکے بیٹھ گیآ اور سوچنے لگا یہ سب کیوں ہوا میری کیا عزت رہ گئی اپنی سٹوڈنٹ کے سامنے
 وہ مجھے کیا سمجھتی ہو گی کہ میں کیسے گندے کام کرتا ہوں
 خیر ایک دم عینی نے مجھے علی بھائی کہہ کر آواز دی میں سوچوں سے باہر نکلا
 وہ بولی زیادہ نہ سوچیں بس سمجھے کچھ ہوا ہی نہیں
 غلطی میری میں ہمیشہ کی طرح آج اوپر والی بیل بجائے بنا آ گئی
 پھر میں بولا نھیں تمہاری غلطی نہیں
 میں ہی دروازہ بند کرنا بھول گیا تھا
 خیر چلو بتاؤ کس چیپٹر کا ٹیسٹ ہے
 پھر میں اس کو ٹیسٹ تیار کروانا شروع کیا اتنے میں باقی بچے بھی آ گئے
 عینی کی ایک بیسٹ ٹیوشن فرینڈ تھی زویا جو کہ ساتویں کلآس میں تھی زویا عینی کے ساتھ بیٹھتی تھی آج بھی ایسے ہوا
 میں باقی بچوں کو پڑھا رہا تھا کہ میں نظر پڑی کہ عینی زویا کو کچھ بتا رہی تھی
 پھر اچانک زویا ہنس پڑی اور حیرت کا اظہار کرتے ہوئے منہ پہ ہاتھ رکھ لیا
 اچانک زویا نے مجھے بہت تجسس سے دیکھا
 میں سمجھ گیا کہ عینی نے زویا کو بتآ دیا
 مجھے بہت غصہ آیا اور عینی کو غصہ سے اپنی پڑھائی میں توجہ دینے کا بولا
 تو بجائے ڈرنے کہ عینی ہنسنے لگ پڑی
 زویا نے پھر مجھے دیکھا اور وہ بھی ہنس پڑی
 خیر میں اب کیا پوچھتا زویا سے کہ کیوں ھنس رہی ہو مجھ پر
 میں نے چپ رہنے میں ہی خیریت سمجھی
 خیر دو گھنٹے بعد ٹیوشن کا ٹائم ختم ہوا میں نے باقی بچوں کو چھٹی دی لیکن عینی کا کیونکہ ٹیسٹ تھا سو میں اس کو آدھا گھنٹہ اور پڑھانا چاہتا تھا کہ تآکہ اس کا ٹیسٹ بہت اچھا ہو
 اور زویا کو اس لیے روکا کہ تاکہ عینی کو زویا کی کمپنی مل جائے
 اچانک مجھے ٹوائلنٹ جانا پڑا جب میں روم میں آیا تو دیکھا عینی زویا کو میرا وہی ٹراؤزر دیکھا رہی تھی جس پر میرے لن پر لگے تیل کا نشان تھاژ
 وہ دونوں ٹراؤزر دیکھنے میں مگن تھی کہ میں چپ کر ان کے پاس دبے پاؤں گیا اور ایک دم بولا
 کسی کے کپڑوں کو ایسے چپکے نھیں دیکھنا چاہیے
 یہ سن کر دونوں ایک دم اچھلی عینی کے ہاتھ میں ٹراؤزر تھآ اور اس جگہ سے پکڑا تھا جہاں نشان تھا
 پھر میں عینی کے ہاتھ سے ٹراؤزر لیتے بولا
 بہت مس کر رہی ہو کسی چیز کو ؟
 دوبآرہ دیکھنا ہے
 تو وہ بولی علی بھائی پلیز ایسے مت بولے مجھے شرم آتی ہے
 پھر میں بولا تب نہیں آئی جب مجھے ننگا دیکھ کر منہ دوسری طرف نہیں کیا
 اور جب مووی میں چوپے لگتے دیکھے تب شرم نہیں آئی
 اور اب کیا کسر رہ گئی تھی کہ میرے ٹراؤزر پر میرے لن والی گیلی جگہ زویا کو دیکھا رہی ہو
 یہ سن کر عینی شرمندہ ہوکر وہاں سے ہٹی اور سوری بول کر اپنی جگہ یر بیٹھ گئی زویا بھی اس کے پاس بیٹھی میں اپنا ٹراؤزر گندے کپڑوں کی بن میں پینکھ کر ان کی طرف مڑا اور بولا
 اب تم دونوں بھی گھر جاؤ
 کل آنا
 یہ سن کر عینی زویا دونوں اپنے اپنے بیگ بند کرکے اٹھی تو میری نظر عینی پر پڑی اسکی آنکھوں میں آنسو تھے شائید میری ڈانٹ سے یا پھر شرم سے
 خیر میں اگے بھر عینی کے سر پر ہاتھ پھیڑا اور اسے دلاسہ دے کر بولا کہ تم اب کیوں رو رہی ہے
 چلو بھول جاؤ سب
 میں نے بنا کسی غلط ارادے کے عینی کو سائیڈ سے ہگ کیا کہ اٹس اوکے
 لیکن میرا لن اس کی اس سائیڈ کمر سے ٹکڑایا
 مجھے خود نہیں پتہ چلا کیسے میرا لن نیم کھڑا ہوا تھا
 عینی کو فوراً احساس ہوا کہ کچھ اسکی کمر پر چبھا اس نے مجھے ہگ سے ہٹانے کے لیے جیسا اپنا ہاتھ بڑھا کر پیچھے کرنا چاہا تو اسکا ہاتھ میرے نیم کھڑے لن پر لگا
 ایک دم سے وہ پیچھے ہو گئی
 عینی کے ہاتھ لگنے سے میرے لن میں جیسے جان لوٹ آئی لن نے جھٹکا مارا جو کہ عینی نے دیکھا اور زویا نے بھی میں نے جلدی سے دونون ہاتھ بڑھا کر لن پر گرا دیے
 عینی اور زویا جلدی سے جوتی پہن کر نکلنے لگی جاتے جاتے دونوں نے مجھے دیکھا تو میں بولا کہ جو کچھ ہوا اس بھول جانا اور کل ٹائم پر پڑھنے آنا
 اور ہاں اوپر والی بیل لازمی بجانا
 یہ سن کر عینی ہنس کر بولی آپ بھی کنڈی لگا کر جو کرنا ہو کر لینا
 اس کا جواب سن کر میں بھی ہنسا
 اتنے میں زویا میں ٹراوزر پر بنے بڑے تمبو کو دیکھنے میں کھو گئی
 عینی کی نظر پڑی تو بولی چل بس کر اور کتنا دیکھنا
 زویا ہوش میں آئی ہڑبڑاتی ہوئی بولی میں تو کچھ نہیں دیکھ رہی
 یہ سن کر عینی نے میرے ٹراؤزر پر بنے تمبو اشارہ کرتے کہا یہ دیکھ رہی تھی تو ابھی
 اب عینی کو اتنا کھل کر بولتے دیکھ کر میں آپنے ٹراؤزر پر لن پہ ہاتھ رکھ کر بولا بس کر دو اس کے پیچھے ہی پڑ گئی ہو
 یہ سن عینی زویا ہنسی اور جانے لگی سیڑھیوں کی طرف
 میں ان ک پیچھے نہیں گیا کیونکہ نیچے میری سسٹر اور امی تھے
 عینی اور زویا نے سیڑھیا اترنے سے پہلے ایک بار پھر میں ٹراؤزر کی طرف دیکھا
 میں اسی میں شیر ہو گیا کہ شائید ان کو میرا لن دیکھنے میں مزا آ رہا
 خیر وہ نیچے اتر گھر چلی گئی
 پھر رات ہوئی اگلا دن چڑھا
 میں کالج گیآ اور کالج سے گھر
 گھر آ کر کھانا کھا کر میں روم میں آیا تو پچھلے دن کی کاروائی یاد آئی کہ عینی دلچسپی لے رہی ہے میرے لن میں کیونکہ اس نے تو فل ننگا کھڑا تیل سے چمکتا دیکھا تھا
 میں منصوبہ بنانے لگا کہ اب عینی کو پھسانا مشکل نہیں
 عینی کا جسم بیان کرتا چلو
 درمیانہ قد موٹے ممے موٹی بنڈ اور درمیانہ رنگ نہ گوری نہ کالی
 ہونٹ بڑے تھے تھوڑے موٹے ہونٹ تھے اس کے
 چوپے لگوانے کے لیے کمال تھےغ
 خیر میں نے آج نیکر اور بنین پہن کر دوبارہ وہی پورن مووی لگائی اور کنڈی لگا کر دیکھنے لگا
 ٹیوشن کا ٹائم ہونے میں کوئی پندرہ منٹ تھے کہ میرے روم کا دروازہ ہلکا سا بجا
 میں بولا تو عینی بولی میں ہوں
 میں عینی کی آواز پہچان گیا تھا
 میں ایک دم روکا کیونکہ نیکر میں تھا اور مووی دیکھنے سے لن فل کھڑا تھا
 پھر میں بولا باقی بچے بھی ہیں تو بولی نہیں اکیلی ہوں میں فوراً  دروازہ کھولا تو بجائے سلام کرنے کے اسکی نظر نیچے میرے نیکر پر پڑی اور وہ ہنس پڑی
 میں بھی للچا اٹھا اس کو اندر آنے دیا تو مووی چل رہی تھی
 لڑکی لڑکے کے لن پر اچھل رہی تھی لڑکی کی پھدی سے لیس دار چیز نکل رہی تھی
 عینی دیکھ کر بولی یخخ کیا کیا دیکھتے ہو
 بند کرو مجھے الٹی آ رہی ہے
 میں ہنسا بولآ سیکسیں میں ہوتا ہےخیر میں نے مووی بند کی اود بیڈ پر بیٹھ گیا لیکن لن نہیں بیٹھا تھا
 فل راکٹ کی طرح سیدھا تھا عینی کی نظریں جمی ہوئی تھیں
 پھر بولی آپ جا کر ٹوائلٹ میں چینج کر لے تھوڑی دیر میں باقی بھی بچے آنے والے میں بولا ہاں مگر پہلے یہ جو کھڑا اس کو بیٹھا لو
 تو ہنس کر بولی جیسے کل مجھے ڈانٹا تھا اس کو بھی ڈانٹے
 میں بولا یہ ڈانٹ سے نہیں بلکہ پیار سے بیٹھے گا
 تو عینی بولی میرے لن کی دیکھ کر
 شیرو بیٹھ جاؤ شاباش
 عینی کے منہ سے شیرو کا لفظ اپنے لن کے لیے سں کر میں بہت ہنسا
 تو عینی بولی کہ کیوں ہنس رہے ہو
 میں بولا یہ شیرو ہے کیا
 تو بولی اور کیا بولو اتنا بڑا اور مؤٹا ہے
 اسلیے شیرو بول رہی ہوں اس کو
 تو میں بولا چلو اپنے شیرو کو پیآر سے بیٹھاؤ
 تو کہتی کہا تو ہے پیآر سے شیرو کو
 میں بولا یہ شیرو سے نہیں بیٹھے گا بلکہ اس کو پیار کرنآ پڑے گا
 یہ کہہ کر میں روم کے اٹیچ باتھ کے دروازے میں کھڑا ہوا اور بولا اب تو یہاں مجھ پر اور باہر بھی نظر رکھنا میں تمھیں سکھاؤ گآ کہ شیرو کو پیار کیسے کرتے تو عینی بولی نھیں مجھے نھیں سیکھنا میں تو ایسے مذاق کر رہی تھی
 آپ جانو آپ کا شیرو جانے
 تب میں بولآ وھاں مذاق
 کسی کے لن کے ساتھ
 واہ کیا اچھا مذاق ہے
 یہ کہہ کر میں نے جلدی سے عینی کے پاس آ کر اس کی قمیض کے اوپر سے اچانک سے اس کی پھدی پکڑ لی مگر ہلکی سی اور بولا اب میں کرو تمہاری پھدی پر مذاق
 عینی نے فوراً میں ہاتھ چھڑایا اور بولی یہ کیا بدتمیزی ہے چھوڑے مجھے
 تب میں بولا تم میرا لن دیکھو مزے سے وہ بدتمیزی نہیں
 تب وہ چپ ہوگئی اور پھر میں بولا اب تمہاری سزا ہے تم۔میرے شیرو کو بیٹھاؤ گی
 کہتی مجھے نہیں پتہ
 میں بولا پتہ تمہیں سب کہ کتنا بڑا کتنا موٹا ہے
 یہ کہہ کر میں جلدی سے تیل کی شیشی پکڑی اور باتھ کے دروازے پر کھڑا ہو کر عینی کو بولایا
 وہ ڈری میرے پاس آئی میں نے جلدی سی ٹراؤزر نیچے کیا لن چھلآنگ لگا کر باہر عینی کے منہ سے خودی نکل گیا واؤ
 پھر میں نے تیل ہاتھ پر لگا کر لن پر ملتے ہوئے عینی کو بولا غور سے دیکھو کہ کیسے کرتے پیار شیرو کو
 طریقے بہت ہیں مگر ابھی صرف یہ ہی طریقہ تمہارے لیے
 لیکن وہ تو دنیا سے بے خبر میرے لن کو دیکھ رہی تھی
 پھر میں بولا ہیلو عینی سیکھ رہی ہو نا
 تو پہلی جی جی
 تب میں بولا لو پکڑو جلدی کیونکہ ٹائم نہیں ہے زیادہ
 عینی کیونکہ میرے لن کی دیوانی ہو چکی تھی
 اسی نشہ میں اسنے کانپتے ہاتھ بڑھا کر میرے لن کو ٹوپے سے دبایا افففففف کیا مزا تھا
 وہ میرے ٹوپہ کو دیکھ کر بولی کہ یہ تو مشروم کی طرح لگ رہا ہے تو میں ہنس کر بولا تمھیں پسند ہے تو اس کو کس کرو تو بولی نہیں
 پھر اس نے ہلکا میرے لن کا مساج کرنا شروع کیا جڑ سے ٹوپے تک میں اس کو بولا کہ ٹائیٹ دبا کر جڑ سے ٹوپے تک گرفت لاؤ اپنے ھاتھ کی
 تیل لگنے سے چکناہٹ کا مزا آ رہا تھا
 عینی زمین پر بیٹھ کر میری ہلکی ہلکی مٹھ مار رہی تھی
 اور غور سے میرے ٹوپے سے نکلنے والے پانی کے قطرے کو دیکھ رہی تھی
 میں فل مزہ میں تھا پہلی بار کسی لڑکی نے میری مٹھ مآری
 پھر مجھے احساس ھوا میں فارغ ہونے والا تو میں بولا عینی اٹھو ؤہ اٹھی میں اس کو لے کر واش روم کے۔اندر کموڈ کے پآس ایا اور اپنا لن کا رخ کموڈ فلش کی طرف کیا عینی کے ہاتھوں میں میری پہلی یچکاری نکلی پھر دوسری پھر تیسری پھر کافی اور نکلی
 میں لمبے سانس لینے لگا
 پھر عینی کھڑی ہوئی وہ خود ہی مجھے لن سے پکڑ کر سنک کے پاس لائی میرا لن دھویا
 اب بھی میرا لن زیادہ چھوٹا نھیں ہوا تھا
 پہلے تو فل۔اکڑا تھا
 اب منی نکلنے کے بعد ربڑ کی طرح تھوڑا بے جان ہوکر لچک دار ہو گیا تھا
 میں نے لن کو گھومآیا ایسے جیسے سپرنگ والا لن ہو
 عینی بڑے غور سے دیکھ رہی تھی
 میں بولا عینی پلیز صرف کس شیرو کو پلیز
 عینی نے اگے بڑھ کر لن کو ہونٹوں سے لگایا پھر لن کی ٹوپی جس کو وہ مشروم کہہ رہی تھی
 اس ٹوپی پہ زوردار کس کی اور پھر اچانک ٹوپی پر زبان پھیر کر ٹوپی کو ہونٹ میں دبا کر چسکی لی
 میرے جسم میں مزے کی لہر دوری
 میں بے ساختہ عینی کو اٹھایا اور اس سے پوچھے بنا گھٹنوں کے بل بیٹھ کر فل سپیڈ سے اس کی قمیض اٹھا کر شلوار نیچے کرکے اس کی پھدی پر منہ لگا دیا
 عینی جب سمبھلی تو دیر ہو چکی تھی وہ ہڑبڑارتی بولی نہیں کریں یہ
 پلیز مجھے یہ نہیں کرنا
 میں اس کی پھدی کی اوپر زبان پھیرتی چھوڑ کر اس کو دیکھ کر بولا بس ایک چسکی مجھے لینی تمہاری پھدی کی
 پھر میں نے اس کی پھدی کے ہونٹ کھولے جو براؤن کلر کے تھے پھدی کی شیو شائید کچھ دن پہلے ہوئی تھی
 میں نے پھدی کے ہونٹوم میں جلدی سے زبان پھیڑ کر پھدی کے دانے کو زبان سے مسلا عینی کانپ اٹھی اس نے میرے کندھوں کو اپنے ھاتھوں کے پنجوں میں جکڑ لیا
 مجھے احساس ہوا کہ عینی کو بھی مزا آ رھا تو میں کبھی چومتا کبھی پھدی کے دانے کو چوستا
 پہلی بار میں کوئی پھدی چوم رہا تھا
 خیر آدھا منٹ حسرت پوری کرکے کھڑا ہوا تو عینی بولی کیا ہوا میں بولا کہ ٹیوشن ٹائم ہو گیا باقی بچے آتے ہو گے
 اب تمہیں مزا کل دو گآ
 جیسے تم نے مجھے مزہ دیا
 یہ کہہ کر میں نے اس کے ہونٹ پر کس کرنی چاہی تب وہ بولی چھی گندے پہلے کرلی کرلو میری وہ جگہ چومی آپ نے
 میں بہت ہنسا
 جلدی سے کرلی تب تک وہ اپنے کپڑے صحیح کر چکی تھی میں نے جلدی سے آگے بڑھ کر اس کو فرنچ کس کی اففف پہلی کس لائف کی مزا آگیا
 
 پھر میں نے آس کو روم میں بھیجا اور ٹراؤزر پہن کر رؤم میں آ گیا عینی بستے سے بک نکال رہی تھی اتنے میں باقی بچے بھی مجھے اوپر والی منزل پر آتے سنائی دیے
 میں فوراً بولا دیکھا عینی اگر تھوڑی دیر اور مستی کرتے تو آج باقی بچوں کو بھی پتہ چل جاتا
پھر روز کی طرح بچے پڑھنے آئے عینی اور زویا ہمیشہ کی طرح ایک ساتھ بیٹھے
 اچانک مجھے خیال آیا کہ آج بھی عینی زویا کو ساری کاروائی بتائے گی یا نہیں
 جیسے کل والی کاروائی بتائی
 میں اس سوچ میں تھا ساتھ ساتھ باقی بچوں کو پڑھا رہا تھا اور میری نظر اس بار عینی زویا یر نہیں بلکہ شو کیس کے بڑے شیشہ پر تھی کیونکہ میں نے عینی اور زویا کو شیشے  ک سامنے بیٹھایا تھا
 اگر میں ڈائریکٹ عینی کو دیکھتا رہتآ تو شاید عینی میرے سآمنے آج کی کاروائی نہ بتاتی اسلیے میں شیشے میں چپ کر کے عینی اور زویا  یر نظر رکھے ہوئے تھا
 میں چاھتآ تھا کہ عینی زویا کو میرے اور عینی کے درمیان ہونے والی سکنگ لیکنگ اور کسنگ کی کارروائی ضرور بتائے تاکہ زویا کا بھی دل کرے کیونکہ ایک دن پہلے وہ ٹراؤزر میں میرےمیرے کھڑے لن کو دیکھ کر ہی دیوانی ہو گئی تھی
 زویا میں مجھے عینی سے زیادہ دلچسپی تھی کیونکہ وہ بٹ کشمیری فیملی سے تھی
 اس کی بنڈ بڑی ممے اس کی عمر حساب سے بڑے تھے زویا کا رنگ سفید تھا عینی کی نسبت
 تھی وہ چھوٹی عمر کی کیونکہ ساتویں کلآس میں تھیں
 میرا پہلے کبھی دھیان اس کی طرف نہ گیا تھا سیکس کے لیے
 لیکن جب سے عینی نے گزشتہ روز میرے کھڑے لن کی طرف متوجہ کرکے دیوانہ کیا میں نے بھانپ لیآ کہ عینی کی طرح زویا بھی گرم ہے
 ورنہ زویا آنکھیں پھاڑ پھآڑ کر میرے ٹراؤزر کے ابھار کو نہ دیکھتی
 خیر آج بھی میری توقع کے مطابق عینی نے زویا کو بتایا کہ ٹیوشن ٹائم سے پہلے کیا ہوا
 میں شیشے میں ان کو باتیں کرتے ہنستے ہوئے دیکھ رہا تھا
 اب یہ نھیں پتآ کہ عینی نے سارا کچھ بتایا یا نہیں
 خیر جب زویا کو پڑھانے کی باری آئی تو میں نے زویا کو بلآیا اپنی طرف
 لیکن یہ کیا آج وہ شرما رہی تھی
 پہلے کبھی پڑھنے کے لیے وہ نھیں شرمائی
 جب وہ میرے پاس میں بہت دھیمی آواز میں بولا کیا ہوا
 سب ٹھیک تو ہے تو چپ کچھ نہ بولی
 پھر میں بولا یار تم آج شرما رہی ہو روز تو تمہیں پڑھاتآ ہو
 آج پتہ نہیں یہ سب کیوں
 تو بولی نہیں میں تو نہیں شرما رہی
 خیر میں نے پڑھانا شروع کیا
 ایک دم میں ایک بات نوٹ کی کہ آج زویا نے ہمیشہ کی طرح سر پر ڈوپٹہ نھیں لیا تھا ورنہ وہ ڈوپٹہ سر سے نھیں اتارتی تھی
 پھر مجھے یہ بھی یاد آیا کہ جب زویا آج ٹیوشن آئی تھی تب بھی آس کے سر پر ڈوپٹہ تھا
 مطلب کہ یا تو خود ڈوپٹہ کو صرف ایک کندھے پر لٹکا کر میرے پاس یا پھر عینی کی حرکت تھی یہ
 خیر میں پڑھاتے پڑھاتے اسکی قمیض کے کھلے گلے میں دیکھ رہا تھا اس نے آف وائٹ برا پہنا تھا
 جیسا کہ میں نے بتایا کہ زویا کی عمر تو چھوٹی تھی لیکن وہ جسمانی حساب سے صحت مند
 موٹی بند ممے بھی اس کے گول بنے ہوئے تھے
 لیکن پیٹ اسکآ برابر تھا موٹے لوگوں کی طرح نکلآ ہوا نہیں تھا
 خیر جب میں پڑھاتے اس کے کھلے گلے کو دیکھ رہا تھا
 اچانک زویا نے نوٹ کر لیا تو اس نے شرم کے مارے ڈوپٹے سے خود کو ڈھانپنے کی کوشش کی
 میں نے جلدی سے ہاتھ بڑھا کر اس کو بازو سے پکڑ کر نہ کا اشارہ کیا
 وہ چپ رہی
 میں پھر بار بار اس کو میتھ کے سوال سمجھاتے ھوئے اس کے گلے میں جھانکتآ رہا
 پھر نا جانے مجھے کیا ہوا میں نے سب سے بچتے ہوئے زویا کے ایک ممے کو ہلکا سا دبا کر ہاتھ پیچھے کر کے زویا کے چہرے کو دیکھنے لگا کہ آس کو کیسی لگی میری حرکت
 میں شیر ہو گیا کیونکہ زویا کے چہرے پر شرم کی مسکراہٹ تھی
 پھر میں نے محسوس کیا کہ میرا شیرو ٹراؤزر میں فل جوبن پہ ہے
 میں نے جان بوجھ کر پین اپنی جھولی میں گرایا زویا نے پین اٹھانے کی غرض سے ہاتھ بڑھایا ہوگا
 جیسے ہی کی گرفت میرے لن کو ٹچ ہوا لن نے جھٹکا مارا
 زویا نے فوراً ہاتھ پیچھے کر لیا
 یہ ساری کارروائی عینی تو دیکھ ہی رہی تھی
 کیونکہ میں نے اسکو دیکھا اس کے چہرے پر ہنسی تھی
 خیر زویا کو سبق سے کر میں نے عینی کو بلآیا
 اس کو سبق دیتے وقت میں سب سے بچتے اسکے ممے دبائے
 خیر چھٹی کا وقت ہوا تو اچانک عینی بولی کہ مجھے ٹوائلٹ جانا ہے
 میں بولا اوکے چلی جاؤ
 اس نے زویا کو ویٹ کرنے کا بولا
 باقی بچے نیچے جانے لگے زویا بیڈ پر بیٹھ گئی
 ابھی دس سیکنڈ ہوئے تو واش روم کا دروآزہ کھلآ عینی نکل کر بولی کہ باقی بچے چلے گئے
 میں بولا ہاں کیوں؟
 اور تم اتنی جلدی واش روم سے بھی نکل آئی
 تو بولی مجھے واش رؤم نہیں جآنا تھآ میں بس ڈرآمہ کیآ
 چلو زویا ادھر آ جلدی
 تیرے لیے روکی ہو
 میں بولا کیا مطلب تو عینی بولی میرے ساتھ جو کیا اب اس کے ساتھ کریں
 میں پہلے تو حیران ہوا لیکن خوش بھی
 لیکن میں زویا کو دیکھ رہا تھا کو وہ کیا کہتی
 زویا عینی کو کہنے لگی چل کتی میں نے نھیں کرنآ
 تؤ کر تجھے مزہ آتا ہے تو میرے حصہ کر پھر کر لے
 پھر عینی اچھا مجھے کتی بنا دیا ہے
 خود تو مزے سے مزے پوچھ رہی تھی کہ لن پر کس کتنی بار کی کتنا بڑا تھا
 کتنی دیر پیار کیا
 اب تو شرما رہی ہے
 میں عینی کی بات سن کر گرم ہو گیآ میں فوراً روم کے باہر کا ماحول دیکھا
 امی ہمیشہ کی طرح نیچے والے روم میں تھی
 بہن میری اکیڈمی تھی
 بھائی ابو دوکان
 میں جلدی سے روم میں آیا بنا کسی روک ٹوک کے
 ٹراؤزر گھٹنوں تک اتآر کر تھوڑی سی ٹانگیں کھول کر کھڑا ہو گیا
 میرا لن کسے میزائل کی طرح 90 اینگل پر کھڑا تھا
 زویا کی تو دیکھ کر جیسے آنکھیں باہر آ گئی
 آج پہلی بار ننگا دیکھا اس نے
 عینی نے دیکھتے ہی بولا
 مائی لوو مائی شیرو
 میں عینی کی طرف بڑھآ عینی فوراً ہاتھ میں تھام لیا
 بھت نرم ہاتھوں سے ٹوپے کا مساج کرنے لگی جس کو مشروم کہتی تھی
 پھر میں بولا اپنے شیرو کی کس کرو عینی فوراََ نیچے جھک کر میرے ٹوپے کو چومنے لگی میں بولا لآلی پاپ ہے تمہارا چوسو اس کو
 تو کہتی پہلے زویا
 زویا جو بہت غور سے سب کچھ دیکھ رہی تھی ایک دم ہڑبڑا کر بولی نہیں میں نہیں
 تؤ عینی میرا لن چھوڑ کر اس کے پاس حا کر اس کے ممے پکڑ کر بولی اچھا اتنی تو شریف ہے نہیں
 جتنی تو بن رہی
 میں بتاؤ علی بھائی کو جب میں تیرے گھر آتی ہوں تو میں کیا کرتے
 میں اچانک بولا عینی کیا مطلب تمہارا
 ابھی عینی کچھ بولنے لگی کہ زویا اس منہ پر ہاتھ رکھ کر بولی کہ بس کر گشتی سب کو بتادے
 عینی کے منہ سے زویا ہآتھ ہٹا کر میں نے بھی زویآ کا مما پکڑ لیا تو عینی بولی دبائے بلکہ کھا جاؤ آس کا مما
 یہ عمر میں جتنی چھوٹی ہے
 کام اتنے بڑے کرتی ہے
 میں تو اس کے دودھ بھی چس چکی ہوں
 میں بولا واہ زویا مجھے سے ایوی شرم کر رہی ہو
 تھوڑا دودھ مجھے بھی پلاؤ
 زویا بولی بہت بڑی حرآم زادی ہے تو تیرے میں یہ لن جائے گا تو میں ٹیپ لگا دینی تاکہ تیرا منہ چپ ہو جائے
 میں ہنس کر بولا اپنی یہ دو بلیوں کی لڑائی بعد میں لڑنا اب میرے شیرو کو ٹھنڈا کرو دونوں جیسے مرضی
 میں اس دؤران زویا مما چھوڑ کی اسکی بنڈ پر ہاتھ پھیڑ رہا تھا اس کی قمیض ہٹا کر اففف دونوں پارٹس کافی گوشت بھرے تھے
 میں بنڈ کی لکیریں انگلی گھسائی
 ادھر عینی میرے لن کی مٹھ مارنے لگ پڑے
 میں آگے ہو کر عینی کو کس کی بیس سیکنڈ کی اس دوران دونوں نے ایک دوسرے کی زبان بھی چوسی
 پھر میں عینی کو  چھوڑ کر زویا کی طرف بڑھا زویا کا سر پکڑ کر عینی نے میری طرف کیا
 میں نے زویا کے نیچے ہونٹ جلدی سے اپنے ہونٹ میں بھر کر چوسنا شرؤع کر دیا
 اور اپنے ہآتھ کی انگلیوں کو زؤیا کی بنڈ کو سوراخ پر مسلنے کے بعد میں نے زویا کی پھدی پر انگلی لے جانے میں کامیاب ہو گیا
 زؤیا اب فل مدھوش تھی میں نے اس کے منہ میں زبان گھسا کر اس کے ہونٹ دانتوں اس کی زبان پر پھیڑنے لگا
 اتنے میں عینی میرے لن کے ٹوپے کو لالی پاپ کی طرح چوس رہی تھا میں فل مزے میں تھا پھر میں نے زویا کو چھوڑ کر عینی کو کھڑا کرکے اس کی شلوار گھٹنوں تک آتار کر اس کی پھدی کی لائن پر اپنی زبان پھیڑنے لگا
 میں نے اپنی زبان کو ہلکا سآ  عینی کی پھدی کی لائن میں پھنسا کر اوپر سے نیچے پھیرنے لگا جیسا کسی کارڈ مشین میں کارڈ ڈال کر سویپ کرتے ہیں
 عینی کے پھدی کے دانے کو جب میری زبآن لگتی میں تھوڑا سا دباتا تو وہ لرز جاتی
 اسکی پھدی جاتے میں فل پاگلوں کی طرح اس کو بنڈ سے پکڑ کر دبوچ لیا
 میں اب پوری طرح اس کی پھدی کے لپس اپنے ہونٹ پھر کر چوس رہا تھا
 اور وہ میرے بالوں کو نوچ کر اپنی پھدی پر میرا سر دبا رہی تھی
 اسکی سسکیاں مجھے پاگل کر رہی تھی
 دو منٹ تک پھدی چاٹ کر میں اٹھا عینی لمبی لمبی سانسیں لے رہی تھی
 ایک دم پھر عینی نے زویا کو پکڑ کر بالوں سے اپنی طرف کھینچ کر کسنگ شروع کر دی اور اس کی شلوار کے اوپر سے ہی اس کی پھدی مسلنے لگ پڑی
 اتنے میں مجھے عینی کی سائڈ قمیض میں نظر آئی میں نے جلدی سے اپنے لن پھر تھوک مل کر عینی کی قمیض ہٹا کر عینی کی بنڈ کے درمیان  لن نیچے سے اوپر کرنے لگا
 دل بہت تھا لن بنڈ کے سوراخ کے آر پار کردو لیکن ابھی وہ وقت نہیں تھا کیونکہ بنڈ میں ڈالنے سے عینی کی چیخیں پورا محلہ سنتا
 میرا لن فل مزہ میں تھا ادھر عینی نے زویا کی شلوار نیچے کرکے اس کی پھدی پر انگلیاں پھیڑنا شروع کردی میں نے جیسے یہ منظر دیکھا میں جلدی سے عینی کی بنڈ سے لنڈ نکال کر زویا کی پھدی پر لپکا اور عینی کا ہاتھ ہٹا کر پہلے زویا کی پھدی کو دیکھا
 اس کی پھدی پر جیسے بالوں کی افزائس ابھی شروع ہوئی تھی
 موٹے لپس تھے زؤیا کی پھدی کے گوشت بھرے
 جب عینی کی لپس پتلے تھے مجھے زویا کی پھدی کے لپس گوشت بھرے بہت اچھے لگا
 میں پھر پاگلوں کی طرح اپنے پیاسے ہونٹ زویا کی پھدی کے ہونٹوں میں جوڑ کبھی فرنچ کس کرتا کبھی زبان سے چاٹتا
 اب زویا نے پوری ٹانگیں کھول کر ایسے مجھے شو کروایا کہ جیسے وہ چاہتی ہو کہ میں اسکی  پھدی کے اندر ہی گھس جاؤ
 خیر تھوڑی بہت چوما چاٹی کے بعد میں کھڑا ہوا
 اور دونوں ننگی پھدیوں پر اپنے دونوں ہاتھوں سے ایک ساتھ مسلنے لگا
 عینی اور زویا دونوں مدھوش میرے کندھوں پر سر لگا کر فل ٹن حالت میں اپنی پھدیوں کے مساج کا مزا لینے لگی
 اس دوران کبھی میں زویا کو کس کرتا کبھی عینی کو پھر مجھے اپنے دونوں کی ہاتھوں پر گیلا پن محسوس ہوا  اور عینی کے جسم اکڑنے لگا اس نے اپنا پورا وزن مجھ پر ڈال دیا اور پھر وہ فآرغ ہو گئی
 ہلکا سا فوارہ اس پھدی سے نکلا جس سے شلوار  گیلی ہو گئی پھر عینی مجھ سے الگ ہوئی
 زویا نے بھی مجھے چھوڑا اور بھاگ کر واش روم میں گئی میں اس کے پیچھے واش روم گھس گیا وہ کموڈ پر بیٹھے پیشاب کر رہی تھی اور انکھ بند کرکے لمبے لمبے سانسیں لینے لگی
 میں چپ کر اس کے پاس گیا اور اس کی پھدی کو دیکھتا رہا جب اس نے پیشاب کرکے آنکھیں کھولی تو مجھ دیکھ کر اپنی ٹانگیں بند کرکے مجھ سے پھدی چھپانے لگی
 میں نے سنک کا نلکا کھول کر اپنے ہاتھوں میں پانی بھر کر زویا کے پاس آیا اور زویا سے کہا کہ ٹانگیں کھولو
 آس نے ٹانگیں کھولی میں نے پانی ڈالا اس کی پھدی پر
 چار بار ایسے کرکے اس کی پھدی اچھی طرح صاف کی
 پھر وہ کھڑی ہوئی اور خود مجھے کس کرنے لگی اتنے میں عینی بھی واش روم آ گئی اور بولی بس کردو
 دس منٹ ہو گئے ہیں
 آنٹی اوپر نے آ جائے
 تو میں بولا پہلے مجھے ٹھنڈا کرو خود تو تم ٹھنڈی ہو گئی ہو
 یہ سن۔کر عینی نیچے بیٹھ کر بنا کچھ بولے میری ٹوپی کو منہ میں لے کر چوسنے لگی
 ایک منٹ تک چوسوانے کے بعد میں نے زویا کو کھنچ کر نیچے بٹھایا اور عینی میرا اشارہ فوراً سمجھ گئی اس نے لن کو زویا کی طرف بڑھا کر بولی جیسے لالی پاپ چوستی ہو
 افففف زویا نے اس کی ابتداء  میری ٹوپی پر اپنی زبان پھیڑ کر کی
 پھر دھیرے دھیرے عینی کی طرح صرف ٹوپی چوسنے لگی ایسے جیسے وہ ٹوپی کو اپنے منہ میں کھنیچنا چاہتی ہو اور اس نے اپنے دونوں ہاتھوں سے میرا لن پکڑا  ہوا تھا
 مجھے احساس ہوا انہوں دیر سے مجھے فارغ کرنا میں نے عینی کو کہا کہ روم میں تیل کی شیشی پڑی ہوئی ہے لے کر آؤ جلدی
 وہ جا کر لائی میں کموڈ پر بیٹھ گیا ٹانگیں کھول کر اور پھر عینی خود تیل سے میرا لن ملنے لگی اور بولی چل میرے شیرو ہو جا ریڈی
 عینی بہت تیز تیز مسل رہی تھی پھر میں بولا عینی میرا ہونے لگا تو عینی بولی کموڈ میں کرنا میں بولا نہیں تم دونوں میری سائیڈ پر آ جاؤ
 میری منی فرش پر گرنے دو بعد میں صاف کرلے گے
 پھر عینی سائیڈ پر آ کر تیز کرنے لگی اور زویا مجھ پر جھک کر کسنگ کرنے لگی
 اور پھر میں منزل پر پہنچ گیا میں مزہ سے اپنی ٹانگیں کھول چکا تھا اور منی کی پچکاری اچھل اچھل کر گر رہی تھی عینی ہاتھ چلاتی گئی ادھر میں زویا کے ہونٹ زور سے چوستا گیا
 پھر جب میں مکمل فارغ ہوا
 میری سانسی لمبی لمبی چل رہی تھی
 میں اٹھ کر لن دھویا
 عینی زویا روم میں جا چکی تھی
 میں واش روم کا فرش صاف کرکے روم میں آیا تو عینی زویا گھر جا چکی تھی
 میرے بیڈ پر جاتے جاتے ایک پیپر چھوڑ گئی جس کے اوپر زویا کی ہینڈ رائٹنگ میں لکھا تھا تھینک یو سر
 یہ پڑھ کر میں ہنس پڑا
 
 عینی زویا کے جانے کے بعد پھر وہی نارمل روٹین میں نے ڈنر کیا اور سونے چلا گیا
 لیکن رات کو لائٹ کا مسئلہ ہو گیا پوری رات لائٹ غائب یو پی ایس بھی جواب دے گیا
 صبح چھہ بجے لائٹ آئی لیکن نیند پوری نہ ھونے کی وجہ سے میں بہت تھکا ہوا تھا
 تقریباً سات بجہ میری بہن اٹھانے آئی تو میں نے بول دیا کہ میں آج کالج نہیں جاؤ گآ میرا سر درد اور تھکاوٹ ہے
 پھر میں سونے کی کؤشش کرتا رہا لیکن گرمی سے برا حال
 میں نے سآرے کپڑے اتار دیے اور ننگا ہی ایک پتلی سی چآدر اپنی ٹانگوں پر ڈھانپ کر سونے کی کوشش کرتا رہا
 لیکن نیند کوسو دور
 خیر میں پچھلے دو دن عینی زویا کے ساتھ ہونے والی کارروائی سوچنے لگا
 زویا کی گوشت بھرے پھدی کے ہونٹ اور عینی کی بنڈ میں لن رگرنا سوچ کر میرا لن فل اکڑ میزائل کی طرح کھڑا ہو گیا
 مجھے اپنے لن پر خوشی ہونے لگی کہ اگر یہ بڑا نہ ہوتا میں نے اس کی سرسوں کے تیل سے مالش نہ کی ہوتی تو آج مجھے عینی زویا کے چوپے اور ان دونوں کی پھدی چاٹنے کا موقع نہ مل پآتا
 خیر کوئی ساڑھے نو بجے مجھے کسی کی اوپر والی منزل پر آتے ہوئے آواز آئی
 یہ ہماری کام والی ستآرہ سالہ انیقہ تھی
 رنگ کآلا لیکن ممے فل ٹائٹ تھے
 موٹی بالکل نہیں تھی کمر پتلی ممے موٹے اس کی پتلی لمبی جسامت کے حساب سے آور بنڈ تھوڑی سی باہر نکلی ہوئی
 انڈین ایکٹر بیپاشا باسو کی طرح ایٹریکٹو تھی
 انیقہ کی منگنی ہوئی تھی
 میری کئی بآر اس کو پھنسانے کی نیت ہوئی لیکن میں نے کوشش نھیں کی تھی
 خیر جب وہ اوپر آئی تھی تو مجھے میرے کھڑے لن کو دیکھ کر ایک آیڈیا آیا کہ جس لن نے عینی زویا کو بنا پھنسائے میرے لن کے قریب کیا
 انیقہ کو بھی ضرور میری طرف لائے گا
 میں چپ کرکے سیدھا لیٹا رھا بیڈ پر
 لن سیدھا کھڑا تھا
 چآدر پر بڑا ابھاڑ تھا
 میں نے ہلکی سی آنکھیں کھولی رکھی اور سونے کی ایکٹنگ کرتآ رہا
 انیقہ روم میں یہ کہتے ہوئے اینٹر ہوئی بھائی اٹھ گئے ھو
 اچانک ان فقروں کے بعد مکمل خاموشی
 انیقہ کی نظر شاید میرے کھڑے لن پر  پڑی تھی
 وہ میرے پاس آئی اور بولا بھائی
 میں چپ لیٹا رہا
 اس نے مجھے بازو سے بہت ہلکا ہلایا میں پھر بھی چپ رھا لیکن ہلکی سی کھولی آنکھوں سے دیکھ رہا تھا
 پھر اچانک اس نے وہ حرکت میرے منہ آہآہ نکلتا رہ گیا
 آس نے سیدھے سے میرا لن پکڑا لکن زور سے بس نرم گرفت وہ شاید موٹائی لن چیک کر رہی تھی
 پھر اس نے پانچ سیکنڈ بعد لن چھوڑ کر دوبارہ مجھے آواز دی لیکن میں چپ رہا
 پھر وہ پیچھے ہٹی اور مجھ کچھ سیکنڈذ کے بعد جھاڑو لگنے کی آواز آئی وہ روم کی صفائی کرنے آئی تھی
 لیکن کوئی آدھے منٹ بعد پھر وہ میرے پاس آئی اور بنا جھجھک کے اس نے میرے لن کے اوپر سے چادر ہٹائی لن پورا اس کے سامنے مکمل جوبن پہ تھا
 یہ دیکھ  کر کہ انیقہ میرا ننگا لن دیکھ رہی ہے
 میرے لن نے جھٹکا مارا اور لن کی ٹوپی سے پانی کا قطرہ نکلا جو بہتا ہوا نیچے لن کی جڑ طرف آ رہا تھا انیقہ نے انگلی بڑھا کر اس قطرہ کو پورا نیچے آنے سے روکا اور اس قطرہ کو اپنی انگلی پر مل کر میرے ٹوپے یر مل دیا اور اس دوران ایک قطرہ اور نکلا
 کیونکہ انیقہ نے ٹوپے پر اپنے انگھوٹے کو پھیڑا اور ہلکا ٹوپے کو دبایا افففففف کیا ادا تھی
 میرے منہ سے خود ہی آہ نکل آئی اور میں نے آنکھیں کھول دی
 ایک دم انیقہ کو ایک جھٹکا لگا وہ میرا ٹوپا چھوڑ کر پیچھے ہٹنے لگی تو میں نے اسکی بازو پکڑ لی جلدی سے
 وہ بولی بھائی کیا ہوا چھوڑو مجھے
 میں غصے سے بولا بھائی
 ٹوپا کس کا تھا جس پر مزے سے انگھوٹے پھیڑ رہی تھی
 وہ بولی کیا آپ جاگ رہے تھے
 میں بولا ہاں
 اب شاباش جلدی سے جو کام چھوڑا پورا کر
 میں تجھے انعآم بھی دوں گا
 کہتی کونسا انعام میں بولا کر پھر دیتا ہوں
 اس کا میں نے ہاتھ پکڑ کر اپنے لن پر دبایا اس نے میرا لن پکڑ کر مٹھ مارنے لگی
 میں بولا سچ بتا کہ میرا لن پسند آیا تو خود ہی بول پڑی عاشق کے لن سے بڑا ہے
 عاشق اس کا منگیتر ہے
 پھر خود ہی چونک گئی اپنی کہی ہوئی بات پر یہ اس نے کیا بول دیا
 پھر میں بولا مطلب کہ میرا لن تجھے عاشق کے لن کی نسبت زیادہ پسند آیا
 یہ سن کر وہ شرما گئی
 پھر میں بولا اسی طرح کرو جیسے پہلے تم ٹوپے کو کر رہی تھی
 تو بولی روکو پہلے میں نیچے دیکھ لو سب اوکے ہے
 یہ کہہ کر وہ روم سے باہر گئی
 جیسے ہی وہ روم سے باہر  نیچے صحن میں حالات چیک کرنے گئی میں نے جلدی سے اپنا نوکیا n70 نکال کر مووی ریکارڈنگ آن کر دی اور اپنے بیڈ کے ایک سائیڈ پر رکھ دیا کہ انیقہ نہ دیکھ پائے
 نیچے صحن میں جھانک کر سب حالات چیک کرکے بھاگی آئی اور بولی کہ میں بس تھؤڑا سا پیار کرو گی کیونکہ مجھے صفائی بھی کرنی روم کی
 میں بولا اس کی فکر نھیں کرو صفائی میں کر دو گا آج
 پھر میں بولا میرا ٹوپا چوسو
 اور فوراً جھک کر اپنے ہونٹ میرے ٹوپے پہ لا کر آنکھیں بند کرکے ایک کس کرکے بولی آج میں یہ لن کاٹ کر اپنے ساتھ لے جاؤ گی اور عاشق کو بولو گی کہ یہ ہوتا ہے اصلی لن
 میں ہنس کر بولا
 اب سے یہ تمہارا ہے چلو شاباش بتا دو کتنا پیار ہے تم کو اس سے یہ سن کر اس نے زبان نکال کر پھلے ٹوپے پر پھر پورے لن پر پھیڑتی رہی
 اچھی طرح گیلا کر لن کو منہ میں لے کر چوسنے لگی
 جب لن میں چوستی تو زبان کی نوک کو ٹوپے پر رگڑتی افففففففف مزا آجاتا تھا مجھے
 ادھر میں نے بہت احتیاط سے انیقہ کو لن میں مصروف پاکر جلدی سے اسکی قمیض اٹھا کر شلوار کھینچ دی اور اسکی پھدی کو جکڑ لیا
 یہ کیا اسکی پھدی پر تو کالا جنگل تھا
 خیر جب میں نے پھدی کو جکڑا الٹے ہاتھ سے میں سمجھا کہ وہ مجھے منع کرے گی
 لیکن نہیں مجھے اس نے روکا ہی نہیں
 وہ تو ایسے لن کو چوسے لگا رہی تھی کہ جیسے بعد میں پھر موقع نہیں ملنا
 خیر میں نے اپنی انگلی اسکی پھدی کے بیچ رگڑنی شروع کی میری انگلی پھدی کے اندر چلی گئی بنا کسی سیل رکاوٹ کے
 میں سمجھ گیا کہ یہ ورجن نہیں ہے
 پھر میں نے دو انگلی اس کی پھدی میں گھسا کر فنگرنگ شروع کر دی اب اس نے لن منہ سے نکال کر آہ کرتے ہوئے بولے
 سالے پہلے مسلتا میری پھدی پھر انگلی اندر کرتا
 خشک پھدی میں خشک انگلی کیوں گھسائی
 یہ سن کر پھلے میں تھوڑا کنفیوز ہوا کہ کیا کرو
 پھر وہ بولی چلو اب کرو انگلی اندر باہر آرام آرام سے
 جب میں بولو گی تب تیز کرنا
 یہ کہہ کر وہ پھر سسے چوسے لگانے لگ پڑی
 آدھر میں انگلیوں سے اسکی پھدی چود رہا تھا
 اور کچھ سیکنڈذ مجھے میری انگلیاں چکنی محسوس ہونے لگی
 جیسے کوئی لیس دار چیز میری انگلی پر لگی
 میں فل جوش میں تھا
 ایک تو وہ فل گرم چوپے لگا رہی تھی ادھر اسکی پھدی چکنی ہو رہی تھی
 پھر میں ایک حرکت اور کی اسکی قمیض اوپر ہٹائی تو اس نے چوپے روک کر خود ہی قمیض کا پلو اوپر کر کے برا بھی اوپر کر دی
 افففف کالے ممے اور ممو پر ڈارک براؤن سرکل
 اور لمبے نپلز
 میں بچوں کی طرح لپک کر نپلز منہ میں لے کر نپلز کے چوسے مارنے لگا
 میں کوشش کر رہا تھا کہ نپلز کو دانت نہ لگے
 میں ہونٹ اور زبان کے نرم لمس سے انیقہ کے نپلز کو مساج کر رہا تھا انیقہ فل جوش میں میرے بالوں میں ہاتھ پھیڑنے لگی کیونکہ میں اوپر سے اسکے نپلز چوس رھا تھا
 اور نیچے سے اسکی پھدی چود رہا تھا
 کوئی ایک منٹ بعد انیقہ جھٹکے مآرنے لگی
 اور انیقہ کی پھدی کے اوپر والے حصے سے جہاں دآنہ ٹائپ سکن نکلی ہوتی جہاں سے میرا خیال ہے لڑکیوں کو پپشاب بھی اتا ہےانیقہ وہاں سے پانی کا چھوٹا سا فوارآ چھوڑا اور پھر مجھ پر گر گئی
 میرا الٹا بازو گیلا ہو گیا میں نے اس کی قیمض کے پلو سے بازو اور انگلیاں صاف کی
 پھر میں اس کو اٹھایا
 اور اس کو لے کر واش روم جانے لگا
 وہ بولی بس میں بولا ہیلو میڈیم یہ کیا
 اپنا کام بنتا بھار میں گئی جنتا؟
 میں اسکو کے کر واش روم آ گیا میں فل ننگا تھا میں ہمیشہ کی طرح کیموڈ پر ٹانگیں چوڑی کر کے بیٹھ گیا
 اور بولا مجھے نہیں اس کو سکون دے دو جس کو تم نے بے چین کر دیا ہے
 پھر وہ بولی کتنا سکون دو
 ابھی اتنا چوسا تو ہے
 میں بولا بس دو منٹ اور جلدی کیونکہ ٹائم نھیں ہے
 امی اوپر نہ آ جائے
 میں ساتھ ساتھ مٹھ بھی مار رہا تھا کہ لن بیٹھ نہ جائے
 خیر انیقہ نے لن کو منہ میں لے کر جاندار چوپے مارنے شروع کر دیے وہ کبھی لن کو جڑ سے کھینچتی کبھی منہ میں ہی ٹوپے اور لن پر زبان گھوماتی
 تقریباً تین منٹ بعد مجھے لگا میں چھوٹنے لگا ہو
 میں بولا انیقہ میں ہونے لگا
 یہ سن کر انیقہ نے اپنے ہونٹوں کی گرفت ٹائٹ کر کے چوسنے لگی اور میری پیچکاریاں اس کے منہ میں نکلنے لگی اانیقہ نے چوپے روک دیے لیکن پن کو ٹوپے سے اپنے ہونٹوں میں دباتی رہی
 میرے سارے قطرے نکل گئے تو انیقہ لن منہ سے نکال کر سنک میں منی تھوکنے لگی
 پھر میں اٹھا اس کے پآس آیا انیقہ نےمیرا پن دھویا اور پھر نیچے بیٹھ کر میرے سکڑتے لن پر کس کر کے باہر نکل پڑی
 اور مجھے بولی آپ باہر نہ آنا میں آپ کو کپڑے دیتی ہو
 میں بولا صرف ٹراؤزر جو کنڈی پر لٹکا وہ دو
 اس نے مجھے ٹراؤزر دیا میں نے ٹراؤزر پہنا اور رؤم میں آ گیاپھر اس نے صفائی شروع کی میں نے بھی اس کی مدد کی تاکہ جلدی مکمل ہو اور امی نہ پوچھے کہ اتنی دیر کیوں لگی
 خیر صفائی مکمل کرکے وہ جانے لگی تو میں نے اس کو کھینچ کرکے آپنے سینے سے لگآ اس کے گال پر اس کے ماتھے پر کس کیا پھر اپنے پرس سے دو سو روپے نکال کر دیے کہ یہ انعام لے لو
 وہ مجھے بولی مجھے نہیں چاہیے یہ انعام کیونکہ میں نے بھی انجوائے کیا ہے
 حسآب برآبر
 یہ کہہ کر وہ سمائل دے کر نیچے چلی گئی میں پھر جلدی سے اپنے موبائل کی طرف لپکا
 موبائل ریکارڈنگ تو میں انیقہ سے چھپ کر روم کی صفائی کے دوران بند کر دی تھی
 میں چوپوں کی ریکارڈنگ عینی اور زویا کو دکھانا چاہتا تھا کہ ایسے لگاتے ہیں چوپے
 خیر پھر میں اپنے کپڑے نکالے الماری سے اور شاور لینے چلا گیا
 پھر نیچے جا کر ناشتہ کیا
 

Posted on: 02:58:AM 25-Jan-2021


0 0 321 0


Total Comments: 0

Write Your Comment



Recent Posts


Hello Doston, Ek baar fir aap sabhi.....


0 0 19 1 0
Posted on: 06:27:AM 14-Jun-2021

Meri Arrange marriage hui hai….mere wife ka.....


0 0 12 1 0
Posted on: 05:56:AM 14-Jun-2021

Mera naam aakash hai man madhya pradesh.....


0 0 14 1 0
Posted on: 05:46:AM 14-Jun-2021

Hi friends i am Amit from Bilaspur.....


0 0 74 1 0
Posted on: 04:01:AM 09-Jun-2021

Main 21 saal kahu. main apne mummy.....


1 0 58 1 0
Posted on: 03:59:AM 09-Jun-2021

Send stories at
upload@xyzstory.com