Stories


لانگ افیئر از ٹائیگر

نامکمل کہانی ہے

میرا نام نبیل اکرم عمر 25 سال قد 5 فٹ 8 انچ اور صحت قابل رشک ہے میری شادی تقریباً پانچ سال پہلے میری خالہ زاد حمیرا سے ہوئی جو عمر میں مجھ سے 2سال چھوٹی ہے اس کا قد 4 فٹ 7 انچ جسمانی ساخت قابل رشک اور رنگ سانولہ ہے ہم لوگ ایک صنعتکار فیملی سے تعلق رکھتے ہیں شادی کے ایک سال بعد ہی ہم لوگ کراچی سے لاہور شفٹ ہو گئے اور ایک پوش علاقے میں گھر لے لیا ہماری سندر انڈسٹریل سٹیٹ میں ایک فیکٹری ہے والد صاحب نے وہ میری نگرانی میں دے رکھی ہے
شادی سے پہلے ہی میں سیکس سٹوریز بڑے شوق سے پڑھتا تھا اور شادی کے بعد یہ شوق بدستور جاری رہا بلکہ کسی حد تک بڑھ گیا
شادی کے بعد ہماری سیکس لائف آئیڈل تھی لیکن میں اس میں اور زیادہ تحریک چاہتا تھا سیکس سٹوریاں پڑھ پڑھ کر میرے ذہن میں حمیرا کو کسی اور کے ساتھ سیکس کرتے دیکھنے کی خواہش پیدا ہو گئی جو روزبروز شدت پکڑنے لگی ایک روز دوران ہم بستری میں نے حمیرا کو اپنی اس خواہش کے بارے میں بتایا اور اس کو اس پر راضی کرنے کی کوشش کی لیکن اس نے نہ میں جواب دیا اب میں اس کو روز اس بات پر قائل کرنے کے لئے کوشاں رہنے لگا جس پر وہ ناراض ہوئی اور کہا کہ ایسی بات پھر کی تو وہ اپنے میکے چای جائے گی  لیکن میں نے بات بدل کر حالات پر قابو پالیا میں اس کے بعد حمیرا کے سامنے ایسی بات تو نہ کرتا لیکن دل میں موجود خواہش اب بڑھتی جارہی تھی جس پر قابو پانا میرے بس میں نہ تھا میں گھر آکر بھی اپنے لیپ ٹاپ پر ایسی سٹوری پڑھتا رہتا جو ایسے واقعات پر مبنی ہوتی تھیں ایک دو بار حمیرا کو بھی معلوم ہوگیا کہ میں کیا پڑھتا ہوں پہلی بار تو وہ خاموش رہی لیکن دوسری باراس نے مجھ سے کہا کہ آپ کے دماغ سے یہ خناس ابھی تک نہیں گیا میں نے اس کو کہا کہ حمیرا اگر تم ایک بار کرنے کے لئے راضی ہو جاؤ تو پھر نہیں کہوں گا بس ایک بار تو وہ خاموشی سے کمرے سے باہر نکل گئی اس رات پھر میں نے اس موضوع پر بات کی تو اس نے کہا
‛‛نبیل دیکھو یہ باتیں صرف کہانیوں میں اچھی لگتی ہیں عملی زندگی میں ایسا ممکن نہیں ہے‛‛
‛‛یار زمانہ اب بہت بدل چکا ہے لوگ زندگی کو انجوائے کرتے ہیں‛‛
میں نے اس کو قائل کرنے کے لئے کہا
‛‛اس سے ہماری ذاتی زندگی پر کیا اثرات ہوسکتے ہیں اس بارے میں تم نے کبھی خیال کیا اور اگر ہمارے رشتہ داروں اور جاننے والوں کو پتا چلا تو کیا ہو گا اس کے عللاوہ یہ بہت بڑا گناہ ہے‛‛
‛‛حمیرا میری جان ایک بار اگر یہ کام کر لیا جائے تو ہمارے درمیان کچھ نہیں ہوگا بلکہ ہمارا آپس میں اعتماد مزید بڑھے گا اور رہی بات رشتہ داروں کی تو وہ سب اس شہر میں نہیں رہتے ان کو کیسے معلوم ہو گا‛‛
‛‛نبیل میرےخیال میں یہ کام اچھا نہیں ہے‛‛
‛‛اچھے یا برے سے مجھے فرق نہیں پڑتا تم ایک بار اس پر ایک بار سوچ کر تو دیکھو اگر تمہارا دل نہ مانے تو نہ کرنا لیکن ایک بار سوچو تو سہی‛‛
‛‛ٹھیک ہے میں سوچوں گی‛‛
حمیرا کے جواب پر میں خوش ہوگیا کہ وہ کسی حد تک راضی تو ہو گئی اس رات ہم نے دوران سیکس دونوں نے اپنے ذہنوں میں نامعلوم کردار رکھ کر سیکس کیا اور میں نے محسوس کیا کہ حمیرا بھی اس دوران پہلے سے زیادہ تحریک میں تھی
اگلے روز میں فیکٹری سے واپس آیا تو میں نے حمیرا سے پھر اسی موضوع پر بات شروع کردی اس نے مجھے کہا
‛‛ دیکھو نبیل ابھی میں نے اس بارے میں سچا ضرور ہے لیکن کوئی فیصلہ نہیں کیا اور ایک بات میں آپ سے واضع اندازمیں کہہ دوں کہہ اگر میں نے یہ کام کرنا بھی ہے تو آپ مجھے اس معاملے میں فورس نہیں کریں گے میں اس معاملے میں پوری طرح اپنی مرضی کروں گی آپ آئندہ مجھ سے اس معاملے میں بات بھی نہیں کرو گے جب میں کوئی فیصلہ کرلوں گی تو آپ کو آگاہ کردوں گی‛‛
‛‛حمیرا تم کب تک سوچ بچار کرکے کوئی فیصلہ کرلو گی‛‛
‛‛کچھ کہہ نہیں سکتی ہو سکتا ہے ایک مہینہ بھی لگ جائےاور ہاں کل سے آپ اپنا لیپ ٹاپ گھر چھوڑ جایا کریں میں بھی وہ سٹوریزپڑھنا چاہتی ہوں جن سے آپ کو یہ کام کرنے کی تحریک ملی‛‛
اس روزکے بعد میں نے اپنا لیپ ٹاپ گھر میں رکھ دیا اور روز فیکٹری سے واپس آکر حمیرا کی طرف سے کسی جواب کا انتظار کرتا لیکن کوئی ہاں یا ناں نہ ہوتی لیکن میں نے اس دن کے بعد حمیرا سے اس موضوع پر کوئی بات کرنا چھوڑ دی ایک مہینہ سے بھی زائد عرصہ گزر گیا لیکن حمیرا نے کوئی جواب نہیں دیا ایک روز میں نے اس کو خوش گوار موڈ میں دیکھ کر اسی موضوع پر بات کی تو اس نے کہا
‛‛نبیل میں نے آپ سے کہا تھا کہ میں خود بات کروں گی جب میں کوئی فیصلہ کرلوں گی تو‛‛
‛‛ تم نے ایک مہینہ کے اندر فیصلہ کرنا تھا اب کافی دن اوپر ہو گئے ہیں‛‛
‛‛ابھی میں کسی فیصلے تک نہیں پہنچ پائی اور معاملہ ابھی زیر غور ہے تم مجھ پر اس معاملے میں دباؤ نہ ڈالو تو بہتر ہے مجھے اپنی مرضی سے کوئی فیصلہ کرنے دو ابھی صرف آپ کے لئے یہاں تک کی انفارمیشن کافی ہے کہ میں غور کررہی ہوں اس معاملے پر اور 90 فی صد تک اس معاملے میں میری ہاں ہی ہے ابھی کچھ پہلو زیر غور ہیں ان پر کوئی فیصلہ کرنا ہے اور اچھا ہو گا کہ تم فی الحال اس معاملے میں آئندہ بات نہ کرو ورنہ میں اس کو بالکل اپنے ذہن سے نکال دوں گی اور پھر میری طرف سے ناں ہوگی مجھے اس معاملے میں کوئی دباؤ برداشت نہیں ہوگا‛‛
‛‛میں نے صرف تم سے کسی فیصلے تک پہنچنے کا پوچھا تھا کوئی دباؤ نہیں ڈالا‛‛
‛‛ آئندہ ایسا بھی نہ ہی ہو تو اچھا ہے ورنہ میری طرف سے ناں ہی ہو گی‛‛
‛‛ٹھیک ہے آئندہ نہیں پوچھوں گا لیکن اتنا تو بتا سکتی ہو کہ کن پہلوؤں پر ابھی تک غور کر رہی ہو جن پر ابھی تک فیصلہ نہیں ہو سکا ہو سکتا ہے میں تمہاری کوئی مدد کرسکوں‛‛
‛‛مجھے اس معاملے میں کوئی مدد نہیں چاہئے آپ کی تسلی کے لئے صرف یہ بتا دیتی ہوں کہ میں صرف اس معاملے پر غور کررہی ہوں کہ اس کام کے لئے میرے لئے مناسب ترین شخص کون ہو سکتا ہے جو پرائویسی کو بھی ملحوظ خاطر رکھے اور اس کام کے لئے راضی بھی ہو‛‛
‛‛یہ تو کوئی اتنا بڑا کام نہیں ہے اس کو ایک منٹ میں حل ہو سکتا ہے تم جیسی حسین لڑکی کسی کو بھی راضی کر سکتی ہے‛‛
‛‛تو آپ کیا چاہتے ہو میں راہ چلتے کسی بھی ایرے غیرے کے ساتھ لیٹ جاؤں مجھے اس معاملے میں اپنی مکمل مرضی کرنی ہے اور بہتر ہو گا کہ آپ مجھے اس بارے میں اپنی قیمتی رائے سے دور ہی رکھیں‛‛
‛‛جناب آئندہ تم کو کوئی بھی بات بھی نہیں کی جائے گی لیکن پلیز ایک گزارش ہو گی کہ فیصلہ جلد ازجلد کر لیں‛‛
‛‛نبیل پلیز مجھے تسلی کے ساتھ سوچنے دو کوئی ٹائم لمٹ نہ دو میں نے پہلے ہی کہا تھا کہ مجھے دباؤ میں یا جلد بازی میں کوئی فیصلہ نہیں کرنا‛‛
‛‛ٹھیک ہے جناب اپنی مرضی سے فیصلہ کرلو‛‛
‛‛ایک بار ہے جس پر تم سے رائے لینا تھی مجھے اگر کہوتو ابھی بتا دیتی ہوں یا بعد میں کسی فارغ وقت میں بات کرلیں گے‛‛
‛‛ہاں ہاں ابھی پوچھ لو‛‛
‛‛مجھے اس معاملے میں سکیورٹی خدشات ہیں اس کی مکمل گارنٹی تم کو لینا ہوگی‛‛
‛‛کس قسم کے سکیورٹی خدشات ہیں اور کس قسم کی گارنٹی‛‛
‛‛وہ یہ کہہ اگر اس کام کی خبر لیک ہو گئی کسی بھی طریقہ سے تو اس کے نتائج کےذمہ دار آپ ہو گے‛‛
‛‛یار تم خواہ مخواہ اس میں پریشان ہو رہی ہو کسی کو بھی معلوم نہیں ہو گا‛‛
‛‛لیکن مجھے پھر بھی آپ کی گارنٹی چاہئے‛‛
‛‛ہاں ٹھیک ہے میری گارنٹی ہے‛‛
تھینکس آ لاٹس‛اب میں جیسے ہی کوئی فیصلہ کر لوں گی آپ کو اپنے فیصلہ سے آگاہ کر دوں گی لیکن شرط وہی ہے کہ آپ نہیں پوچھ سکتے اور ہاں ایک اور بات وہ یہ کہ ابھی تک میرا فیصلہ 90 فی صد ہاں میں ہی ہے لیکن یہ حتمی نہیں ہے ابھی اور پہلو زیر غور ہیں اس معاملے میں ناں بھی ہو سکتی ہے میرا فیصلہ جو بھی ہوا چاہے ہاں میں ہو یا ناں میں آپ کو اسے ماننا ہی پڑے گا اس پر نظر ثانی نہیں ہو سکے گی‛‛
‛‛ٹھیک ہے میری جان ٹھیک ہے تم جو چاہے فیصلہ کرو مجھے منظور ہو گا‛‛
اس دن کے بعد تقریباً دو ہفتے تک پھر خاموشی رہی ایک دن حمیرا نے دوپہر کو مجھے اس وقت فون کیا جب میں فیکٹری میں ایک بہت ہی اہم میٹنگ میں مصروف تھا اور کہا کہ فیصلہ کرلیا ہے فوری طور پر گھر آؤ میں نے اس سے کہا کہ میٹنگ میں مصروف ہوں تین گھنٹے تک آجاؤں گا تو اس نے کہا کہ فوری طور پر گھر آنا ہو گافون پر حمیرا کافی ایکسائٹڈ لگ رہی تھی خیر میں نے جلدی جلدی میٹنگ نمٹائی اور گھر کی طرف روانہ ہو گیا ڈیڑھ گھنٹہ بعد گھر پہنچا اور جیسے ہی اندر داخل ہوا حمیرا نے مجھے کسنگ شروع کردی اور پھر کہنے لگی
‛‛آئی ہیو ڈن‛‛(میں نے کر لیا ہے)
‛‛او کے اوکے لیٹ میں انفارم واٹ از یور ڈیسیزن‛‛(ٹھیک ہے ٹھیک ہے مجھے بتاؤ تمہارا فیصلہ کیا ہے)
‛‛آئی ول ڈو واٹ یو وانٹ‛‛( میں وہ کروں گی جو آپ چاہتے ہو)
‛‛او تھینکس مائی لو‛ اوکے ناؤ اٹ ول بی ڈن ٹو ڈے‛‛ ( شکریہ مائی لو اب یہ کام آج ہی ہوگا)
‛‛نہیں ابھی میں نےصرف یہ فیصلہ کیا ہے کہ یہ کام کروں گی ابھی اس کے لئے سیکنڈ پارٹنر کو ڈھونڈنا ہے‛‛
‛‛تو ابھی تک اس کا فیصلہ کیا ہی نہیں ہے ‛‛
‛‛نبیل میں نے فیصلہ کیا ہے کہ میں یہ کام کروں گی لیکن جس طرح تم نے کہا اس طرح نہیں میں صرف ایک بار نہیں بلکہ لانگ ٹرم افیئر چاہتی ہوں‛‛
‛‛نو مائی ڈئیر دس ازرسکی اینڈ آئی کانٹ افورڈ اٹ‛‛
‛‛اب آپ اس سے پیچھے نہیں ہٹ سکتے آپ نے کہاتھا کہ جو بھی فیصلہ میں کروں گی ویسے ہی آپ کو منظور ہو گا‛‛
‛‛مگر لانگ ٹرم نہیں میں نے تو صرف ایک بار کہا تھا‛‛
‛‛ضروری نہیں کہ ہر بات اسی طرح ہی ہو جس طرح آپ چاہو میری بھی کوئی مرضی ہے اب میں نے فیصلہ کرلیا ہے آپ کو مانناہی پڑے گا‛‛
اوکے مائی ڈیئر ٹھیک ہے لیکن کس کے ساتھ ہو گا یہ لانگ ٹرم افیئر تمہارا‛‛
‛‛ابھی فی الحال اس بات کا فیصلہ نہیں کیا میں نے‛ یہ بات ابھی بھی بتا رہی ہوں کہ جو بھی فیصلہ کروں گی آئندہ بھی اس کو آپ کو ماننا ہی پڑے گا اگر آپ نے اب ناں کی تو میں اپنے فیصلے سے پیچھے نہیں ہٹوں گی اگر بعد ناں یا مخالفت کرنی ہے تو ابھی بتا دو میں معاملے سے آؤٹ ہو جاتی ہوں‛‛
‛‛اوکے بابا‛‛
‛‛کیا اوکے ‛‛
‛‛تم اپنی مرضی کرو‛‛
‛‛آئی لو یو‛ میں جیسے ہی کسی کا انتخاب کروں گیآپ کو بتا دوں گی‛‛
‛‛لیکن اب کتنا ٹائم لگے گا‛‛
معلوم نہیں امید ہے جلد ہی‛شائد ایک ہفتہ یا کل تک‛‛
‛‛اوکے‛‛
اس کے بعد خود ہی ایک روزرات کو سونے سے پہلے کے معمولات کے دوران حمیرا میرے اوپر لیٹی تھی اچانک اپنا کام چھوڑ کر مجھ سے مخاطب ہوئی
‛‛نبیل میں اس حالت میں آپ کے ساتھ اس موضوع پر بات اس لئے کررہی ہوں کہ یہی حالت ہے ایسی بات کرنے کی آپ نے مجھے آؤٹ آف میرج سیکس کے لئے کہا تھا میں نہیں مان رہی تھی آپ کے اصرار پر تیار تو ہو گئی ہوں لیکن کیا آپ اس سے پیچھے نہیں ہٹ سکتے مجھے کچھ ڈر سا لگ رہا ہے کہ کچھ غلط کرنے جارہی ہوں‛‛
‛‛ڈونٹ بی سلی یار کچھ بھی غلط نہیں ہے‛‛
‛‛پھر بھی مجھے ڈر سا لگ رہا ہے‛‛
‛‛کچھ نہیں ہوگا یار‛‛
‛‛اس میں کہیں ہم دونوں کا پیار کم نہ ہو جائے‛‛
جب مجھے فرق نہیں پڑتا تو تم کیوں ڈر رہی ہو بس تم کسی کے ساتھ جذباتی طور پر انوالو نہ ہونا میں تم سے پیار کرتا ہوں اور کرتا رہوں گا اور یہ جو تم لانگ ٹرم والی بات کررہی ہو اس میں خرابی ہے اس میں جذباتی طور پر تم کسی میں انوالو ہو سکتی ہو میں نے اس لئے تم کو منع کیا تھا لیکن تمہاری ضد پر میں اس پر بھی راضی ہوں‛‛
‛‛لانگ ٹرم اس لئے چاہتی ہوں کہ کالج میں میری کئی سہیلیوں کے لڑکوں کے ساتھ افیئر تھے میں بھی چاہتی تھی کہ میں ڈیٹس پر جاؤں مگر ٹائم ہی نہیں ملا کسی کے ساتھ افیئر چلانے کا گھر والوں نے شادی کردی‛‛
‛‛چلو تم میرے ساتھ افیئر چلا لو‛‛
‛‛چھپ چھپ کر ڈیٹس مارنے کو دل کرتا ہےدل چاہتا ہے گھر والوں کو بھی شک ہو کہ میرا کریٹر خراب ہو رہا ہے وہ میرا گھر سے نکلنا بند کر دیں اور میں پھر بھی میں باز نہ آؤں‛‛
اوکے اوکے میری جان تمہارا جو دل کرتا ہے کرلو‛‛
نبیل میں نے فیصلہ کیا ہے کہ میں کسی شخص کو منتخب کرنے سے پہلے اچھی طرح جان لو اور ہر طرح سے اپنے میعار پر پورا اترنے والے کے ساتھ ہی افیئر چلاؤں‛ اس معاملے میں مجھے آپ کے تعاون کی ضرورت ہے میں ایک دو دن میں ان افراد کو شارٹ لسٹ کرلوں گی اور پھر ان کو ہر طرح سے پرکھنا ہے‛‛
اس معاملے میں میری مدد کس طرح چاہئے تم کو‛‛
‛‛مجھے آپ کی ہر موقع پر مدد چاہئے مجھے شارٹ لسٹڈ افراد کو پرکھنے کے لئے ہو سکتا ہے ان کے ساتھ ڈیٹس کے لئے ایک ایک دن یا رات کو بھی گھر سے باہر رہنا پڑے اس کے لئے آپ کی اجازت کی ضرورت ہو گی امید ہے آپ مجھے ایسا کرنے سے منع نہیں کریں گے‛‛
‛‛میں ہر موقع پر تم کو سپورٹ کروں گا لیکن مجھے یہ سمجھ نہیں آئی کہ تم کسی شخص کو منتخب کرنے کے لئے کس طرح سے جانچنا ہے‛اور کیا اس کے لئے کتنے لوگوں کو جانچنا ہو گا‛‛
‛‛میری جان میں نہیں چاہتی کہ کسی ایسے شخص کے ساتھ میرا افیئر ہو جس کا کریکٹر ٹھیک نہ ہو اور مجھے اپنے معیار کا پارٹنر ڈھونڈنے کے جتنی دیر بھی لگے اور جتنے بھی لوگوں کو پرکھنا پڑے میں پرکھوں گی‛‛
‛‛تم کس طریقے سے پرکھو گی‛‛
‛‛میں ہر طریقے سے پرکھ کر ہر لحاظ سے پرفیکٹ شخص کو ہی اپنا افیئر پارٹنر بناؤں گی‛‛
‛‛ہرلحاظ سے تمہاری کیا مراد ہے‛‛
‛‛میری مراد ہے کہ وہ دکھنے میں چلنے میں سیکس میں سونے میں کھانے پینے میں اور چلنے پھرنے میں بے مثال ہو‛‛
‛‛اس کا مطلب ہے تم اپنے انتخاب کے لئے ہر کسی کے ساتھ سیکس کروگی‛‛
‛‛نہیں سیکس تک معاملہ پہنچنے تک مزید لوگ شارٹ لسٹ ہو چکے ہوں گے‛‛
‛‛تو تم کو حتمی نام سامنے لانے کے لئے کتنا عرصہ درکار ہو گا‛‛
‛‛میں کچھ نہیں کہہ سکتی لیکن جو بھی میرا انتخاب ہو گا اس پر تم بھی فخر کر سکو گے‛‛
‛‛اور اس انتخاب کے کتنے لوگوں کو پرکھو گی‛‛
‛‛ابھی فی الحال کچھ بھی معلوم نہیں ابھی تک میں نے صرف 8 لوگ لسٹ میں شامل کئے ہیں لیکن یہ لسٹ فائنل نہیں ہو سکتا ہے ان میں سے کچھ کو لسٹ سے نکال دوں اور کچھ نئے لوگوں کو شامل کرلوں‛‛
اس لسٹ میں کون کون سے لوگ شامل ہیں‛‛
‛‛یہ بات میں آپ کو نہیں بتا سکتی اور نہ ہی آپ اس معاملے میں اصرار کریں میں صرف آپ کو یہ بتا دیتی ہوں کہ اس لسٹ میں ایک غیر مسلم‛ ایک تمہارا جاننے والا اور ایک گیارویں جماعت کا طالب علم بھی شامل ہے‛‛
‛‛کیا اس لسٹ میں غیر مسلم بھی شامل ہے‛‛
‛‛ہاں عیسائی ہے‛‛
‛‛عیسائی کو اس لسٹ سے نکال دو‛‛
‛‛نہیں ایسا نہیں ہو سکتا میں نے پہلے ہی کہا تھا کہ آپ اس معاملے میں کوئی دخل اندازی نہیں کرسکتے اور ویسے بھی میں نے کون سا شرعی کام کرنا ہے جس کے لئے مسلمان کا ہی انتخاب ضروری ہے‛‛
‛‛ان سب کو تم کیسے جانتی ہو اور کب سے جانتی ہو اور ان سےکس حد تعلق ہے تمہارا‛‛
‛‛ان سب کے ساتھ میری انٹرنیٹ پر تعلق بنا ہے اور ان میں سے کسی سے ابھی ملاقات نہیں ہوئی ایک دو روز میں لسٹ فائنل کرلوں پھر ان کو پرکھنے کا مرحلہ شروع خو جائے گا‛‛
‛‛اوکے اوکے تم جیسے چاہو کرو فائنل کرکے مجھے بتا دینا‛‛
حمیرا کی باتیں سن کر میں کافی ایکسائٹڈ ہو گیا بات مکمل کرنے کے بعد حمیرا نے پھر سے نا مکمل کام مکمل کیا اور میرے ساتھ چمٹ کر سو گئی
ایک ہفتہ کے بعد حمیرا نے مجھے بتایا کہ اس نے لسٹ فائنل کر لی ہے میں نے پوچھا کہ اس لسٹ میں کون کون سے لوگ شامل ہیں تو اس نے بتایا کہ یہ میرا نجی معاملہ ہے پلیز اس میں دخل نہ دیں جب تک کوئی اہل شخص منتخب نہیں ہوتا آپ سے کوئی شناخت ظاہر نہیں کی جائے گی اور نہ ہی اس لسٹ میں شامل افراد کو جاننے کی کوشش کریں میں صرف آپ کو یہ اطلاع کردیتی ہوں کہ اس لسٹ میں پہلے سے شامل ایک شخص کو خارج کر کے دو نئے لوگ شامل کیا گیا ہے اب اس لسٹ میں کل 9 افراد شامل ہیں جن میں ایک گیارویں جماعت کا سٹوڈنٹ ایک عیسائی نوجوان ایک آپ کا جاننے والا شخص ‛ ایک 45 سالہ شادی شدہ شخص اور ایک نوجوان بھارت کا رہنے والا ہے لیکن مسلمان ہے اس لسٹ میں 8 لوگ کاروباری اور ایلیٹ کلاس سے تعلق رکھتے ہیں جبکہ ایک شخص انتہائی غریب ہے اس کے تین بچے ہیں اعلی تعلیم یافتہ ہے لیکن لاہور میں رکشہ چلاتا ہے ‛‛
میں حمیرا کی باتیں بڑے غور سے سن رہا تھا اس نے بات روک کر کچھ دیر توقف کیا اور چند لمحے میرے چہرے کی طرف دیکھتی رہی پھر گویا ہوئی
‛‛ایک دو دن میں میں ان افراد کو جانچنے کا عمل شروع کرنے والی ہوں آج کے بعد آپ گھر آنے سے کم از کم ایک گھنٹہ پہلے مجھے بتائیں گے اور دن کے وقت کہاں جاتی ہوں آپ مجھ سے کوئی سوال نہیں کریں گے اس کے علاوہ گھر میں کون آیا کتنی دیر رہا اور کیا کیا آپ نہیں پوچھیں گے ہاں اگر مجھے رات باہر گزارنا پڑی تو آپ کو اطلاع کر دوں گی لیکن آپ یہ پوچھنے کے مجاز نہیں ہونگے کہ میں نے رات کہاں اور کس کے ساتھ گزاری اور کیا کیا جب تک کوئی فائنل امیدوار منتخب نہیں ہو جاتا آپ کچھ نہیں پوچھیں گے اگر مجھے کچھ آپ سے شیئر کرنا ہوا تو میں خود کروں گی اگر کسی موقع پر بھی مجھے لگا کہ آپ شرائط کی خلاف ورزی کرہے ہیں یا مجھ پر اثر انداز ہونے کی کوشش کررہے ہیں تو میں برداشت نہیں کروں گی میں ایک بات کو اور بتا دوں کہ یہ کام میں آپ کے کہنے پر کر رہی ہوں اب میں ذہنی طور پر اس سٹیج پر آگئی ہوں کہ واپسی نہیں ہوسکتی اس کے علاوہ اس میں کوئی سکیورٹی پرابلم ہوئی تو اس کے ذمہ دار آپ ہوں گے

کیا اس لسٹ میں میری خواہش پر کسی کو شامل کیا جاسکتا ہے
حمیرا کی بات پوری ہونے سے پہلے ہی میں نے اس سے سوال کیا
نو وے' یو ڈونٹ ہیو رائٹ ٹو انٹر فیئر
لسن ٹو می بےبی
آئی ڈونٹ وانٹ ٹو لسن ان دس میٹرمیں نے پہلے ہی کہا تھا یہ میرا معاملہ ہے اور اس میں کسی قسم کی مداخلت برداشت نہیں کروں گی سو پلیزآپ یہ کامجھ پر چھوڑدیں اس معاملے کو میں اپنے طریقے سے ڈیل کرنا چاہتی ہوں
حمیرا نے مجھے تقریباً جھڑکنے والے انداز میں کہا
لیکن جان--------
لیکن ویکن کچھ نہیں ڈونٹ کراس یوور لمٹس
حمیرا نے میری بات سنے بغیر ہی مجھے چپ کرادی
میں سوچنے لگا کہ کتنے تھوڑے سے عرصہ میں حمیرا میں کتنی بڑی تبدیلی آگئی ہے
ہاں ایک بات اور وہ یہ کہ آپ مجھ سے اس بارے میں اب مزید کچھ نہیں پوچھوگے اگر کوئی ضروری بات ہوئی تو میں خود آپ سے ڈسکس کرلیا کروں گی
اوکے ڈارلنگ
میں نے اس بحث کو ختم کرنے میں ہی بہتری سمجھی
تین دن ایسے ہی گزرگئے چوتھے روز  میں نے حمیرا سے کئے وعدے کے مطابق فیکٹری سے کام ختم ہونے کے بعد فون کیا کہ میں گھر آرہا ہوں لیکن اس نے فون اٹینڈ نہ کیا کافی دیر فون کرتا رہا لیکن کوئی رابطہ نہ ہوسکا جس پر مجھے تشویش لاحق ہو گئی میں نے گھر کی طرف رخ کرلیا اور تیزی سے جارہا تھا چند منٹ میں گھر پہنچنے ہی والا تھا کہ حمیرا کا میسج موصول ہوا جس کا مضمون تھا
آئی ایم بزی‛ ڈونٹ کم ٹو ہوم ویٹ آؤٹ سائیڈ ٹل مائی نیکسٹ ایس ایم ایس
میں نے گاڑی گھرکے پاس ہی ایک ریسٹورنٹ کی طرف موڑ دی اور وہاں تقریباً 20 منٹ بیٹھا رہا 20 منٹ کے بعد مجھے حمیرا کا ایک اور میسج موصول ہوا جس میں اس نے کہا کہ میں گھر آسکتا ہوں میسج ملتے ہی میں گھر چلا گیا اور حمیرا کی طرف تجسس بھری نظروں سے دیکھنے لگا کہ وہ مجھے کچھ بتائے گی لیکن اس نے کوئی غیر معمولی بات نہ کی اور معمول کی طرح رویہ اپنائے رکھا میں نے حمیرا کی بات چیت اور حرکات وسکنات سے بھی کچھ اندازہ لگانے کی کوشش کی لیکن کچھ سمجھ نہ سکامیں اسی انتظار میں رہا کہ وہ مجھ سے ابھی کوئی بات کرے گی لیکن اس نے کوئی بات نہ کی  ایک گھنٹہ تک جب اس نے کوئی ایسی بات نہ کی کہ مجھے گھر آنے سے کیوں منع کیا تو میری برداشت جواب دے گئی اور میں نے خود ہی وجہ پوچھ لی

نبیل میں نے آپ سے پہلے بھی کہا تھا کہ دس از مائی پرسنل میٹر‛ ڈونٹ انٹر فیئر
یار تم کو مجھے بتانا چاہئیے کہ تم کیا کرہی ہو
میں وہی کچھ کررہی ہوں جو کام آپ نے میرے ذمہ لگایا ہے
تم کو مجھے اس بارے میں بتانا چاہیے
میں کیا بتاؤں ابھی کچھ فائنل ہی نہیں ہوا میں آپ کو اسی وقت آگاہ کروں گی جب سب کچھ فائنل ہو جائے گا اینڈ بی اشور کہ آئندہ آپ مجھ سے کچھ نہیں پوچھیں گے
میں اپنا سا منہ لے کر بیٹھ گیا حمیرا نے کھانا لگایا ہم دونوں نے اکٹھے کھانا کھایا حمیرا کا رویہ بالکل ایسا ہی رہا جیسا کچھ ہوا ہی نہیں معمولات ازواج میں بھی میں نے کوئی فرق محسوس نہیں کیا
اب میں روزانہ دفتر سے نکلنے سے پہلے حمیرا کو فون کرتا اور تقریباً وہ روز ہی مجھے وہ گھرسے باہر انتظار کرنے کا کہہ دیتی اور میں باہر ہی کبھی کسی ریسٹورنٹ یا کسی پارک میں بیٹھا یہ سوچتا رہتا کہ حمیرا کسی کے ساتھ اس وقت عیاشی میں مصروف ہو گی اور ساتھ ہی اب میں یہ بھی سوچنے لگا کہ میں نے حمیرا کو اس راستے پر لگا کر اچھا نہیں کیا کئی بار میں نے سوچا کہ حمیرا کو اس کام سے روک دوں لیکن میں ایسا نہ کر سکا شائد مجھے بھی اس سے لطف آتا تھا یہ خیال یقیناً میرے لئے اس کوفت سے زیادہ لطف انگیز تھا کہ میری بیوی میرے ہی بستر پر کسی غیر مرد کے ساتھ رنگ رلیاں منا رہی ہے ان خیالات سے میرے اندر ایک عجیب سی تحریک پیدا ہوتی جو میرے لئے عجیب سے سکون کا باعث بنتی اب میرے دل میں یہ خواہش زور پکڑتی جارہی تھی کہ میں حمیرا کو اپنے سامنے کسی دوسرے کے ساتھ عیاشی کرتے ہوئے دیکھوں لیکن یہ مجھے فی الحال ممکن دکھائی نہیں دے رہا تھا دس بارہ دن ایسے ہی چلتا رہا ایک روز میرے ذہن میں ایک ترکیب آئی اور میں حمیرا کو فون کئے بغیر ہی گھر کی طرف چل پڑا اور گاڑی گھر سے نصف کلومیٹر دور ہی کھڑی کرکے گھر سے کچھ ہی دور پارک میں ایک بینچ پر بیٹھ گیا جہاں سے گھر کا مین گیٹ دکھائی دیتا تھا میں نے وہاں پہنچ کر حمیرا کو فون کیا حسب معمول اس نے مجھے کچھ دیر انتظار کا کہا اور تقریباً ایک گھنٹہ بعد مجھے میسج کیا کہ اب گھر آجاؤ میں حیران تھا کہ گھر سے نہ کوئی نکلا اور نہ کوئی اندر داخل ہوا میں نے مزید دس پندرہ منٹ انتظار کیا اور پھر گاڑی لے گھر آگیا معاملہ کچھ عجیب سا تھا میں ایک نئی الجھن کا شکار ہوگیا اگلے روز میں نے پھر اسی طرح کیا لیکن پھر مجھے کوئی دکھائی نہ دیا لیکن میں نے معاملے پر خاموشی اختیار کئے رکھی حمیرا کے میرے ساتھ معاملات حسب معمول چل رہے تھے جس میں ہمارے ازواجی تعلقات بھی شامل تھے
تقریباً پندرہ دن کی محنت کے بعد بھی میں کوئی کھوج لگانے میں ناکام رہا اور اب میں کسی متبادل کا انتظام کرنے کا سوچ رہا تھا کہ ایک روز صبح فیکٹری جانے سے پہلے حمیرا نے مجھے کہا کہ آج گھر جلدی آجائیے گا
خیر تو ہے ناں
میں نے تنظزیہ انداز میں پوچھا
ہاں آپ آئیں گے تو بتا دوں گی
آج بھی آنے سے پہلے فون کرنا پڑے گا
آج کوئی ضروری نہیں لیکن کرلیں تو بہتر ہوگا کیوں کہ جو عادت ہے اس کو ہر صورت کرنا چاہیے
حمیرا نے مسکرا کر کہا
اس دن میں فون کئے بغیر ہی درپہر کے وقت ہی گھر آگیا
اوہو------اتنی جلدی
تم نے ہی تو کہا تھا کہ جلدی آنا
میں نے جلدی آنے کو کہا تھا لیکن اتنی جلدی بھی نہیں
تو میں واپس چلا جاتا ہوں
نہیں میں نے یہ تو نہیں کہا آج میرا ارادہ رات کا کھانا باہر کھانے کا تھا اس لئے کہا تھا
حمیرا نے میری ٹائی کی ناٹ کھولتے ہوئے کہا اور ساتھ ہی میرے ہونٹوں پر کس بھی کر دی میں نے رسپانس دیا تو مجھے شرٹ کے کالر سے پکڑ کر بیڈ روم میں لے گئی اور ہم دونوں نے ایک عرصے بعد دن کے وقت صحبت کی ایک بار فراغت کے دس پندرہ منٹ بعد پھر سے حمیرا نے مجھے پھر سے ریڈی کیا اور خود میرے اوپر آکر حقوق زوجیت ادا کئے آج میں نے حمیرا کے اندر جو گرم جرشی محسوس کی تھی اس سے پہلے کبھی بھی محسوس نہیں کی تھی شام تک ہم دونوں کپڑوں کے بغیر ہی لیٹے رہے اس میں نے حمیرا کو چائے لانے کو کہا تو وہ اسی حالت میں کچن میں گئی اور چائے بنا کر لے آئی چائے کے بعد اس نے پھر سے چھیڑ خانی کی لیکن لیکن میں نے اس کو یہ کہہ کر دیا کہ اب رات کو
رات کو کھانا باہر ایک چائنیزریسٹورنٹ پر کھایا اور پھر گھر آکر وہی بیڈ‛ میں اور حمیرا فراغت کے یعد حمیرا میری چھاتی ںر ہاتھ پھیرتے پھیرتے اچانک رکی اور مجھ سے کہنے لگی
نبیل میں نےتم سےایک بات شیئر کرنی ہے
ہاں ہاں کیوں نہیں
میں نے ان 9 لوگوں میں سے نیکسٹ سٹیج کے لئے 3 لوگوں کو سلیکٹ کیا ہے
کون کون سے تین لوگ ہیں- میں نے اس سے تجسس بھرے لہجے میں پوچھا
نعمان‛ نصیر انکل اور شمعون
اس نے جواب دیا
ان کو کیسے سلیکٹ کیا اور باقی لوگوں کو ریجیکٹ کرنے کی وجہ
میں نے حمیرا کی طرف دیکھتے ہوئے پوچھا
میں یہ بتانا ضروری نہیں سمجھتی
حمیرا نے انکارکردیا لیکن اس کے لہجے میں وہ تلخی نہ تھی جو پہلے میں محسوس کرتا تھا اس لئے میرا حوصلہ بڑھا اور میں نے اس سے کہا
پلیزجان بتاؤ تو سہی
میں نے ان 9 لوگوں میں سے صرف سات لوگوں کو پری کوالیفائنگ راؤنڈ میں اپنی اہلیت ثابت کرنے کا موقع دیا تھا جن کو تین تین راؤنڈ میں علیحدہ علیحدہ اپنی اہلیت ثابت کرنا تھی پہلے راؤنڈ میں ان سب کے ساتھ آمنے سامنے بیٹھ کر بات چیت کی گئی اس مرحلے میں ایک شخص نااہل ہوگیا جبکہ دوسرے مرحلے میں سب کے ساتھ کسنگ سیشن ہوا تیسرے مرحلے پر سب امیدواروں کے ساتھ کسنگ سے کچھ تھوڑا سا آگے بڑھ کر اہلیت ثابت کرنے کا موقع دیا گیا
حمیرا کی بات سن کر میرا ہوشیار چند ہوشیاری پکڑنے لگا میں نے اس کو ٹوکا اور پوچھا
کسنگ سے تھوڑا آگے بڑھنے سے کیا مراد ہے
یار پلیز وہیں تک سنو جہاں تک اور جیسے میں بتا رہی ہوں
پلیز یار تفصیل سے بتاؤ ناں
کسنگ سے آگے سافٹ سیکس میں جو کچھ آتا ہے وہ سبھی کچھ کیا گیا
تفصیل سے بتاؤ ناں
یار مجھے شرم آتی ہے اس طرح ننگے لفظ استعمال کرتے ہوئے
کام کرتے ہوئے شرم نہیں آئی اور بتاتے ہوئے شرم آتی ہے- میں نے دل میں سوچا اور پھر سےیہ کہتے ہوئے اصرار کیا
اس مرحلے پر ان سب نے میری چھاتی کو ٹچ کیا اس کو منہ میں لے کر چوسا اور میرے بدن پر پیار کیا اور ------ اب بس یار
بتاؤ ناں مزید-------- میں نے اصرار کیا
پلیز نہیں بس اور نہیں بتا سکوں گی میں
اچھا ان لوگوں نے تمہاری شرم گاہ کے ساتھ چھیڑ خانی بھی کی تھی
ہاں -------- حمیرا کی آنکھیں یہ کہتے ہوئے نیچے ہوگئیں
کس طرح سے ------- میں نے چسکا لیتے ہوئے پوچھا
میں کس طرح بتاؤں یار ------ حمیرا نے میری چھاتی پر ہاتھ مارتے ہوئے کہا
بتاؤ جو جو کچھ ہوا اور جس جس طرح ہوا سب بتاؤ--- میں نے پھر سے اصرار کیا
نہیں بتا سکتی اور کچھ بھی -----
اچھا یہ تو بتا سکتی ہو اس دوران سب نے تمہارے سامنے اور تم نے ان کے سامنے کپڑے اتارے تھے
ہاں ----- حمیرا نے ہلکی سی آواز میں کہا
ان سے ملاقات کے دوران تمہارے کپڑے کس نے اتارے اور ان لوگوں کے کپڑے کس نے اتارے
ان سب لوگوں نے اپنے اپنے اور میرے کپڑے بھی انہوں نے ہی اتارے تھے سوائے نعمان کے اس سے ملاقات کے دوران سب کچھ مجھے ہی کرنا پڑا
وہ کیوں ------- میں نے پھر سے کہا
نبیل پلیز اب اور کچھ نہیں
اچھا چلو ایک بات اور بتا دو
ہاں پوچھو----- حمیرا نے سپاٹ لہجے میں پوچھا
کسی نے تمہاری شرم گاہ کے اندر انگلی بھی ڈالی تھی
ہاں----- ایک نے
کون تھا وہ ------- اور کس طرح
یار میں نے کہا تھا ناں ای اور نہیں
حمیرا یار پلیز بتاؤ ناں-------
انگلی نصیر انکل نے ڈالی تھی -----
اور سب سے زیادہ مزہ کس کے ساتھ آیا تم کو
شمعون اور نعمان کے ساتھ ------ وہ کیوں اس میں ایسی کیا بات تھی
شمعون ہر معاملے میں نفاصت پسند ہے اس کا کسنگ کا سٹائل اور اور باڈی ٹچ کرنے کا سٹائل ڈفرنٹ ہے اس کے علاوہ بہت کوآپریٹو اور کیئرنگ ہےاس نے پوری باڈی پر اس طرح کس کیا کہ میں بے قابو ہوگئی تھی اگر اصولوں کی خلاف ورزی نہ ہوتی تو میں اس کے ساتھ تمام حدیں عبور کر چکی ہوتی
اصول----- کون سے اصول - میں نے حیرت سے پوچھا
ہاں اصول میں نے تمام لوگوں کو اپنی اہلیت ثابت کرنے کا پورا موقع دی تھا میں نہیں چاہتی تھی کہ کسی کے ساتھ ناانصافی ہو ایک تو شمعون کی باری پانچویں نمبر پر تھی اور دوسری بات یہ کہ مجھے اس راؤنڈ میں یہیں تک ہی سب کو موقع دینا تھا ہاں اگر پہلی باری شمعون کی ہوتی تو ہو سکتا ہے کہ گیم کے اصول بدل دئیے جاتے اور سب کو ایک سٹیپ آگے جانے کی اجازت مل جاتی
حمیرا چپ ہوئی تو میں پھر اس سےپوچھا
یہ شمعون ہے کون
اسلام آباد کا رہنے والا 25 سالہ آئی ٹی انجینئر ہے لاہور کی ایک فرم میں جاب کرتا ہے اور عیسائی ہے
رہتا کہاں ہے
گلبرگ میں
اپنی فیملی کے ساتھ
نہیں اپنےکسی دوست کے ساتھ
شادی شدہ ہے
نہیں
تم نے اس کا ------ دیکھا ہے
ہاں ایک نظر ہی ڈالی تھی
کیسا لگا تم کو اس کا ------
اچھا لگا
کس طرح کا تھا
کس طرح کا ہوتا ہے
میرا مطلب ہے اس کا تو بغیر خطنوں کے ہوگا تم کو کیسالگا
ہاں بغیر خطنوں کے ہی تھا
تم نے اس کو ہاتھ میں پکڑا تھا
ہاں
سائزکیا تھا
میں نے کوئی ناپا تھوڑی تھا اس کو
پھر بھی کوئی اندازہ تو ہو گا
سائز آپ جتنا ہی ہوگا لیکن اس کے خطنے نا ہونے کی وجہ سے اس کی فور سکن بہت ملائم تھی
اس نے اپنا ---- تمہاری شرمگاہ کے ساتھ ٹچ کیا تھا
ہاں
کیا اس کے اوپر رگڑا بھی تھا
ہاں تھوڑی دیر چند سیکنڈ ہی
کیا اس نے اندر کرنے کی کوشش نہیں کی
کی تھی میں اتنی مدہوش ہو گئی تھی کہ پتا ہی نہیں چلا اور اس نے ---- کی ٹوپی اندر کر دی لیکن میں نے منع کردیا تو اس نےنے معذرت کرتے ہوئے باہر نکال لیا
کسی اور نے بھی تمہارے اندر کیا یا کرنے کی کوشش کی
ہاں
کس نے اور کس طرح سے
عابد نے اس کے ساتھ بھی میں اتنی مدہوش ہو گئی تھی کہ پتا ہی نہیں چلا اور اس نے اندر کردیا
پھر
میں نے منع کیا لیکن اس نے باہر نہیں نکالا میں نے نکالنے کی کوشش کی لیکن ناکام رہی اور اس نے اپنا کام مکمل کرلیا اس کو گیم اصولوں کی خلاف ورزی پر ڈس کوالیفائی کردیا ہے
اس نے کس طرح کیا تھا
میں اس کے نیچے لیٹی ہوئی اور وہ میری ٹانگیں کھول کر درمیان میں بیٹھا میرے ہونٹوں پر کس کررہا تھا اور اس کا ----- میری ----- کے ساتھ جڑا ہوا تھا اچانک اس نے اپنے ----- کو ہلکا سا جھٹکا دے کر اندر کر دیا میری ----- گیلی ہونے کی وجہ سے وہ پہلے ہی جھٹکے میں آدھے سے زیادہ اندر چلا گیا تھا اس سے پہلے کہ میں اس کو منع کرتی اس نے ایک زور دار اور جھٹکا دیا اور اس کا ---- جڑ تک میرے اندر چلا گیا میں نے اس کو منع کیا اور اس کو چھاتی سے پرے دھکیل کرنے باہر نکالنے کی کوشش کی لیکن اس نے مجھے اس طرح سے قابو کرلیا تھا کہ میں ناکام رہی
حمیرا خاموش ہوئی تو میں نے پھر اس سے سوال کر ڈالا
اس کا مطلب ہواکہ اس نے زبردستی کی تمہارے ساتھ
نہیں آپ اس کو زبردستی تو نہیں کہہ سکتے جب اس کا میرے اندر پورا چلا گیا تھا تو گیم اصولوں کی خلاف ورزی پر ڈس کوالیفائی تو وہ ہوگیا تھا اس لئے میں نے سوچا کہ اب مزہ پورا کرلینے دیا جائے اس کو اور حقیقت یہ ہے کہ اس میں مجھے بھی بہت زیادہ مزا آیا اس کے ----- کی لمبائی تو آپ جتنی ہی تھی لیکن موٹائی میں کافی زیادہ فرق تھا اس کا جھٹکے دینے کا انداز اور جھٹکوں کے ساتھ مسلسل ہونٹوں پر کسنگ اس کے علاوہ ٹائمنگ کم از کم پچیس  منٹ اگر میں دو بار فارغ ہونے کے بعد اس کو جلدی کرنے کا نا کہتی تو وہ اتنی جلدی فارغ ہونے والا نہیں تھا اس کے ------ کا رنگ کالا اور اس کی ٹوپی باریک جبکہ درمیان سے موٹا اور جڑ سے مزید موٹا تھا  اس کا چھاتی پر پیار کرنے کا انداز بھی بہت انوکھا تھا اس کو میرے نپلزاتنے اچھے لگ رہے تھے کہ ان کو منہ سے نکالنے کا نام ہی نہیں لے رہا تھا اگر عابد ڈس کوالیفائی نہ ہوتا تو یقیناً فائنل وہی جیت جاتا
اگر اس کی صلاحیتوں کی اتنی ہی قائل ہو تو پھر اس کو ڈس کوالیفائی کیوں کررہی ہو
میں کسی کے ساتھ ناانصافی نہیں کرنا چاہتی اور اس کے علاوہ یہ میرا معاملہ ہے اور اس میں آپ کو بھی مداخلت کا حق حاصل نہیں ہے
اگر اس نے سارا کام مکمل کرلیا تو باقی لوگوں کو کیوں نہیں کرنے دیا
وہ تس لئے کہ عابد کی باری سب سے لاسٹ میں تھی
لیکن یاقی امیدواروں کی حق تلفی تو ہو گئی ناں ایک بندہ سب کچھ کر کے ڈس کولیفائی ہوا اور باقی دوسرے جو ناں کرسکے ان کا کیا قصور تھا یا ان کو بھی یہ موقع دیا جاتا
ان سب کو اضافی نمبر دیئے گئے تھے نعمان انہیں اضافی نمبروں کی وجہ سے ہی کوالیفائی کرگیا ہے اس کے علاوہ اس کو انڈر ایج ہونے کے بھی نمبر ملے ہیں
اور اس نعمان کی کیا سٹوری ہے
ہا ہا ہا وہ تو بالکل بچہ ہے اس کو کسی چیز کا پتا نہیں اس کا سارا کام بھی مجھے ہی کرنا پڑا
وہ کیسے
پہلی یار تو بہت کنفیوژ تھا میں نے اس کے ساتھ خود ہی کسنگ کی اس کو پہلے مرحلے پر ہی باہر کردینے کا تھا لیکن اس کے ہونٹ بہت رسیلے تھے دوسری بارتو وہ کالج یونیفارم میں ہی آگیا تھا میں نے ڈانٹا کہ کالج سے بھاگ کر کیوں آئے ہو تو میرے ڈانٹنے پر رونے لگا اور اس نے یتایا کہ آج کالج میں پڑھائی نہیں تھی کالج کا ٹرپ واہگہ بارڈر جانا تھا دل تو کیا کہ اس کو ابھی واپس بھجوا دوں لیکن کہنے لگا آنٹی آئندہ ایسانہیں کروں گا تو میرے دل میں رحم۔آگیا اور میں نے اس کو تس شرط پر موقع دیا کہ آئندہ کبھی وہ کالج ٹائم پر میرے پاس نہیں آئے گا اس کے علاوہ میں پہلی بار اس کے ہونٹوں کا رس چکھ تھی اس لئے اس کو اگلے مرحلے تک پہنچنے میں اس کی تھوئی مدد کی دوسری بار وہ کنفیوژ تو نہیں تھا لیکن اس کو پتا کچھ نہیں تھا کہ کرناکیا ہے
میں نے اس کی شرٹ اتاری تو شرمانے لگا میں نے پکڑکر اپنے سینے کے ساتھ لگایا تو میرے ساتھ چمٹ گیا
میں نے کی پینٹ اور انڈر ویئر اتارا تو اس کا ------- کھڑا ہوا تھا سائز میں آپ سے ایک آدھ انچ لمبا ہی ہوگا اس کو میں نے اپنے ہاتھ میں پکڑا تو لوہے کےکسی راڈ کی طرح گرم اور بہت زیادہ سخت تھا میں نے اپنے کپڑے اتارے تو آنکھیں پھاڑ کر دیکھنے لگا نبیل وہ واقعی بچہ ہے اس کو ریئل میں کچھ پتا نہیں ہے میں نے اس کے ساتھ کسنگ  کی تو میرے ساتھ اس کا ---- ٹچ ہوا تور ساتھ ہی فارغ ہو گیا اس کی ----بہت زیادہ گاڑھی تھی اس نے میری ساری ٹانگیں خراب کردیں میں نے اس کو کسنگ جاری رکھی اور وہ دو منٹ میں پھر سے ریڈی ہو گیا میں تو اس کے ساتھ پندرہ بیس منٹ تک کھیلتی رہی اور ہاں اس میں نپلز چوسنے کی قدرتی ایسی صلاحیت ہے کہ میں اس سے بہت متاثر ہوئی ہوں
حمیرا باتیں کررہی تھی اور میں آنکھوں کو جھپکائے بغیر اس کی طرف دیکھتے ہوئے اس طرح سن رہا تھا جیسے الف لیلہ کی کہانی سن رہا ہوں
ارے یہ تو بالکل ریڈی ہے
حمیرا نےمیرے ----- کو چھوا اور پھر اس کے اوپر چڑھ کر بیٹھ گئی
ایک بات پوچھوں آپ سے
ہاں پوچھو
آج یہ آپ کا ----- اتنا سخت کیوں ہے
معلوم نہیں
تو ووووو پھر کس کو معلوم ہے ---- حمیرا نے اوپر نیچے ہونا شروع کردیا جب میں فارغ ہونے کے قریب ہی تھا تو وہ رک گئی اور میرے ہونٹوں کو چوسنے لگی
یرا میرے اوپر لیٹے ہوئے میرے ہونٹ چوس رہی تھی اس نےمیرے چہرے کو  اپنے دونوں ہاتھوں میں لیا ہوا تھا اور آنکھیں بند کئے ہوئے تھی
میرے دونوں ہاتھ اس کی پشت پر تھے اور میں اس کی کمر سے تھوڑا سا نچلے حصہ کو سہلا رہا تھا تھوڑی دیر ہونٹ چوسنے کے بعد وہ پھر سے میرے اوپر اس طرح بیٹھ گئی کہ میرا ------ اس کے اندر ہی تھا اور میری طرف مسکراتے ہوئے دیکھنے لگی
ایک بات پوچھوں تم سے
میں نے حمیرا سے پوچھا
جی پوچھیں
اگر نعمان اناڑی ہے تو پھر اس کو اگلی سٹیج کے لئے تم نے سلیکٹ کیوں کرلیا
یہی بات تو اس کی سلیکشن کا باعث بنی کہ وہ اناڑی ہے میں اپنی مرضی کے  سے اس کے ساتھ جو مرضی کرسکتی ہوں میں اس کے ساتھ تحکمانہ انداز میں پیش آسکتی ہوں اس کو جو میں کہوں گی اور جیسے کہوں گی وہ اسی طرح بلا چوں چراں کرے گا مجھے تحکمانہ انداز پسند ہے
لیکن یہ بھی تو دیکھو کہ وہ انڈر ایج ہے ----- میں نے تشویش بھرے لہجے میں کہا
محبت اور جنگ میں سب جائز ہے
اس کے جواب پر میں بھی مسکرا دیا
اور یہ انکل نصیر کی کیا سٹوری ہے
ہووووووں ------ میں نے آپ کو بتایا تھا پہلے بھی کہ ان کی عمر 45 سال ہے اور یہ شادی شدہ ہیں
ان کی سلیکشن کی وجہ کیا ہے
انکل نصیر جب پہلی بار مجھ سے ملے تھے تو ان کی زبان سے میرے لئے بیٹی کا لفظ نکلا تھاان کی یہی مجھے پسند آئی وہ خر کسی عورت پر بری نظر نہیں رکھتے اس کے علاوہ ان کا کہنا ہے کہ ان کے پاس  25 سال کا تجربہ ہے میں اسی تجربے سے فائدہ اٹھانا چاہتی ہوں ویسے تو مجھے ان کا عضو تناسل پیشاب کے علاوہ کسی بھی کام کا دکھائی نہیں دیتا تھا لیکن یہ میری غلط فہمی تھی
وہ کیسے -------- یار مجھے تفصیل کے ساتھ یتاؤ----- میں نے حمیرا سے کہا
اچھا بابا اچھا بتا دیتی ہوں لیکن پہلے اس کو تو دیکھ لوں جس کے اوپر بیٹھی ہوں اور میرے اندر مچل رہا ہےحمیرا کا اشارہ میرے ------ کی طرف تھا
کیا پہلے کبھی نہیں دیکھا اس کو ------ میں نے مزاحیہ انداز میں کہا
دیکھا ہے لیکن میرا دل نہیں بھرا اور نا ہی کبھی بھرے گا یہ تو میری اپنی ملکیت ہے میں اس کو جتنی بار بھی دیکھوں اور جس زاوئیے سے بھی دیکھوں مجھے اپنائیت کا احساس ہوتا ہے ------ حمیرا نے فخریہ انداز میں کہا تو میں نے جواب کہ دیکھ لو جس طرح بھی دیکھنا ہے تم نے
نبیل اوپر بیٹھے بیٹھے میں تھک گئی ہوں آپ کرو ناں اب
اوکے ----- میں نے اس کو کہا اور وہ اوپر سے اتر کر بیڈ پر لیٹ گئی اور میں نے ادھورے کام کو مکمل کیا اس دوران حمیرا نے اپنی آنکھیں بند کر رکھی تھیں اور دونوں ہاتھ میرے سر پر رکھے ہوئے تھے اور وہ اپنی زبان کو ہونٹوں پر پھیر رہی تھی اس دوران بار بار میرے سر کو نیچے کرکے میرے ہونٹوں پر کس بھی کر لیتی وہ میرے نیچے لیٹی ہوئی میری ہر بار حرکت کا نیچے سے اپنی پشت کو اوپر کرکے جواب دے رہی تھی آج حقوق زوجیت کی ادائیگی کے دوران ایک نئی بات میں نے نوٹ کی وہ یہ تھی کہ جس وقت میں فراغت کے قریب پہنچتا حمیرا میرے گرد اپنی ٹانگوں کا گھیرا تنگ کرکے مجھے ساکن کراور دو تین منٹ کے بعد گھیرا ختم کرکے نیچے سے اپنے آپ کو اس انداز میں حرکت دیتی اور میں حرکت شروع کردیتا جیسے ہی میری حرکت تیز ہوتی وہ خامرشی کے ساتھ ٹانگوں کا گھیرا اس طریقے سے تنگ کرتی کہ میری حرکت خود بخود کم ہو جاتی اس خوش گوار تبدیلی سے آج دورانیہ جو پہلے سے بہت زیادہ بڑھ گیا تھا آج پہلی بار آدھ گھنٹہ سے زیادہ دورانیئے کی مباشرت میرے لئے حیران کن اور خوش گوار تبدیلی تھی جس کا سہرا حمیرا کے سر تھا
میں جیسے ہی منزل تک پہنچا حمیرا بھی نڈھال ہو چکی تھی میں اس کے اوپر ہی لیٹ گیا حمیرا گہرے سانس لے رہی تھی چندمنٹ کے بعد میں حمیرا کے ساتھ لیٹ گیا اور اس کی چھاتی کے ساتھ کھیلتے کھیلتے انکل نصیر کے حوالے سے دریافت کیا
یار صبح کے چار بج گئے ہیں اب سو جاؤ صبح آپ نے آفس بھی جانا ہے--- حمیرا نے وال کلاک کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا
صبح مجھے آفس لیٹ ہی جانا ہے آپ ابھی بتاؤ--- میں نے اصرار کیا

Posted on: 03:42:AM 28-Jan-2021


0 0 160 0


Total Comments: 0

Write Your Comment



Recent Posts


Hello Doston, Ek baar fir aap sabhi.....


0 0 19 1 0
Posted on: 06:27:AM 14-Jun-2021

Meri Arrange marriage hui hai….mere wife ka.....


0 0 11 1 0
Posted on: 05:56:AM 14-Jun-2021

Mera naam aakash hai man madhya pradesh.....


0 0 14 1 0
Posted on: 05:46:AM 14-Jun-2021

Hi friends i am Amit from Bilaspur.....


0 0 74 1 0
Posted on: 04:01:AM 09-Jun-2021

Main 21 saal kahu. main apne mummy.....


1 0 58 1 0
Posted on: 03:59:AM 09-Jun-2021

Send stories at
upload@xyzstory.com