Stories


میری گرم فیملی از مریم عزیز

نامکمل کہانی ہے

ڈیئر ریڈرز ، آئی ایم سکندر فرا م لاہور پاکستان . . . .
میں کافی عرصے سے اس فورم کا ممبر ہوں شاید تب سے جب سے یہ فورم بنا ہے میں یہاں موجود تقریباً ہر اسٹوری پڑھ چکا ہوں مجھے ہمیشہ صرف انسیسٹ اسٹوریز نے ہی اٹریکٹ کیا ہے. شاید اسکی ایک وجہ میری فیملی بھی ہے . . . چلیں تو اسٹوری کی طرف آتے ہیں
سب سے پہلے میں اپنی فیملی کاتعارف کروا دوں . . .
فیملی میں 5 لوگ ہیں . . میں سکندر . . میرا بھائی . . سمیر . . بھائی کی بیوی صباء . . میری بہن ثمرین اور میری موم نائلہ . .
میں ، عمر ، 21
سمیر ، عمر ، 24
صباء سمیر کی وائف ، عمر ، 22 ، فگر ، 36 / 29 / 38
ثمرین سسٹر ، عمر ، 19‎ ، فگر ، ۶۳ / 28 / 36
نائلہ موم ، عمر ، 41 ، فگر ، 38 / 32 / 40
سو ریڈرز . . یہ تو ہے میری فیملی کا تعارف  . . .
جی تو اب آتے ہیں اسٹوری کی طرف . .
ہم لاہور کے علاقے ماڈل ٹاؤن میں رہتے ہیں . . گھر میں صرف 4 لوگ ہی ہوتے ہیں میں بھابی چھوٹی بہن اور موم . . بھائی کو ایک سال ہو گیا ہے وہ انگلینڈ میں جاب کر رہا ہے . . اسکی شادی صباء بھابی سے 2 سال پہلے ہوئی تھی صباء ثمرین کی فرینڈ تھی شادی سے پہلے . . ثمرین یونیورسٹی میں اسٹڈی کرتی ہے ویسے تو وہ یونیورسٹی وین میں جاتی ہیں کبھی کبھی میں بھی چلا جاتا ہوں چھوڑنے . . گھر میں ٹوٹل 4 رومز ہیں . . ایک نیچے والے پورشن میں اور 3 اوپر والے پورشن میں نیچے والے پورشن میں صرف موم ہی رہتی ہیں میں ثمرین اور بھابی تینوں کا روم اوپر ہے . . موم تو بس اپنے کام سے کام رکھتی ہیں دن میں ایک چکر تو مارکیٹ کا ضرور لگاتی ہیں ثمرین بھی تقریباً 3 سے 4 بجے تک واپس آتی ہے . . . اور میری موبائل شاپ ہے حفیظ سینٹر میں میں تقریباً 11 یا 12 بجے گھر سے جاتا ہوں . . . اور بھابی بس گھر کے کاموں میں ہی بزی رہتی ہیں یہ سب ایک دن اچانک ہی اسٹارٹ ہوا . . اِس واقعے سے پہلے میرے مائنڈ میں اپنی فیملی کے بارے میں ایسا ویسا کوئی خیال نہیں تھا . . .
اس دن سنڈے تھا موم اور ثمرین شاید خالہ کی طرف گئے تھے میں تقریباً دوپہر کو 1 بجے اٹھا اور نیچے گیا تو صرف بھابی ہی تھی کچن میں میں نے موم کا پوچھا تو وہ بولی موم اور ثمرین خالہ کی طرف گئے ہیں . . میں نے کہا او کے میں مارکیٹ سے ہو کر آتا ہوں آپ میرے واشروم سے کپڑے لے آ نا دھونے کے لیے اور کہہ کے باہر نکل گیا باہر جا کر مجھے یاد آیا موبائل تو اوپر ہی رہ گیا ہے گیٹ ابھی کھلا ہی تھا میں واپس اندر گیا تو بھابی ابھی بھی کچن میں ہی تھی اسے میرے واپس آنے کا پتا نہیں چلا میں اوپر اپنے روم میں گیا تو سوچا پہلے نہا لوں کہیں لائٹ نا چلی جائی . . میں باتھ روم میں گُھس گیا اور جلدی جلدی میں روم کا ڈور لوک کیا ہی نہیں باتھ روم کا ڈور تو کبھی لوک کرتا ہی نہیں تھا میں کیونکہ موسٹلی روم کا ڈور ہی لوک رہتا ہے لیکن ویسے بند ہی ہوتا ہے باتھ روم کا ڈور . . . میں باتھ روم میں گیا اور سارے کپڑے اُتارے اور شاور چلا کر نہانے لگا اپنی باڈی اور منہ پر صابن لگا لیا میں نے . . اس ٹائم میرا لنڈ سیمی ایریکٹ پوزیشن میں تھا ویسے میرا لنڈ جب فل کھڑا ہوتا ہے تو 8 . 5 انچس کا ہوتا ہے اس ٹائم سیمی ایریکٹ تھا اور شاید 5 انچس کا ہو گا اور ٹانگوں کے بیچ لٹک رہا تھا . . . میں نے اچھی طرح پوری باڈی پر صابن ملا اور فیس پر بھی اسکے بعد جب پانی ڈالا تو میرا جسم دھلتا گیا جب فیس پر سے سارا صابن صاف ہوا تو میں نے آنکھیں کھولی تو میں ایک دم دیکھ کر جھٹکا کھا گیا کہ باتھ روم کا ڈور تھوڑا سا کھلا تھا اور باہر سے بھابی چھپ کر دیکھ رہی تھی مجھے اپنی طرف دیکھتا دیکھ کر ایک دم سے دروازے سے پیچھے ہوئی اور بولی وہ تم گئے نہیں میں کپڑے لینے آئی تھی . . میں نے فوراً آگے ہوکر دروازہ بند کیا اور بولا میں ابھی نہا کر خود لے آتا ہوں نیچے . .
میں بہت ہی زیادہ گھبرا گیا کہ بھابی نے مجھے ننگا دیکھ لیا . . لیکن اس وقت تک بھی میرے ذھن میں کوئی غلط خیال نہیں تھا . . بس پھر میں فٹافٹ نہایا اور نہا کر نیچے گیا تو بھابی صوفے پر بیٹھی ٹی وی دیکھ رہی تھی . . مجھے دیکھا اور ہلکی سی سمائل دی اور بولی آؤ ہینڈسم . . مجھے یہ ورڈ انہوں نے پہلے کبھی نہیں بولا تھا . . میں پزل ہو گیا اور کپڑے انہیں دے کر باہر نکل گیا . .
میں باہر جا کر سارے راستے یہی سوچتا رہا کہ یہ کیا ہو گیا اور میں بہت ہی پزل ہو رہا تھا . . . خیر میں کچھ دیر مارکیٹ میں گھومتا رہا پھر جب گھر واپس آیا تو بھابی ابھی بھی ٹی وی دیکھ رہی تھی میں بھی جا کر انکے پاس بیٹھ گیا اور ٹی وی دیکھنے لگا اور میں نے بھابی سے پوچھا کہ موم نے کب تک آنا ہے وہ بولی شام کو ہی آئیں گے میں پھر اٹھا اور کچن میں جا کر فریج کھول کر کچھ کھانے کے لیے دیکھنے لگا ابھی میں کھڑا ہی ہوا تھا کہ اچانک مجھے اپنی بیک پر کوئی فیل ہوا میں سیدھا ہوا تو بھابی میرے پیچھے کھڑی تھی اچانک سیدھا ہونے سے انکے ممے میرے ساتھ ٹچ ہو گئے اور وہ مسکرا رہی تھی اور بولی کیا ڈھونڈ رہے ہو . . میں فوراً ڈور بند کرکے پیچھے ہوا اور بولا وہ کچھ کھانے کے لیے دیکھ رہا تھا وہ بولی کیا كھانا ہے میں بنا دیتی ہوں میں نے کہا کچھ بھی بنا دو اور میرے روم میں دے دینا میں فوراََ اپنے روم میں آ گیا . . . دراصل میں بہت ہی زیادہ پزل ہو رہا تھا کیونکہ بھابی میرے اتنے نزدیک کبھی بھی نہیں آئی تھی اور نا ہی میرے دِل میں بھابی کے لیے کبھی کوئی ایسا ویسا خیال تھا% 1 بھی نہیں . . . اِس لیے مجھے کچھ سمجھ نہیں آرہا تھا . . خیر کوئی 20 منٹس بَعْد بھابی میرے روم میں كھانا لیکر آئی اور مجھے دیا میں بیڈ پر بیٹھا تھا كھانا رکھ کر وہ بولی تمہارے پاس کوئی اچھی مووی ہے تو دو . . میں نے کہا وہ سامنے ٹرالی میں پڑی ہیں دیکھ لیں . . وہ بیٹھ کر دیکھنے لگی ان موویز میں کچھ ایسی موویز بھی تھی . . آئی لائک ٹو پلے گیمز . . اینڈ . . وائلڈ تھنگس . . . وہ آئی لائک ٹو پلے گیمز کو پکڑ کر مجھے دکھاتیہوۓ بولی یہ کیسی ہے . . میں ایک دم حیران رہ گیا اور بولا وہ یہ آپ کے دیکھنے والی نہیں آپ کوئی اور لے لو . . وہ ہنسنے لگی اور بولی میں نے یہ نہیں پوچھا بس بتاؤ کیسی ہے . . میں نے کہا اچھی ہے . . تو وہ لیکر اپنے روم میں چلی گئی . . اور میں بھابھی کی طرف سے دیئے گئے ایک اور جھٹکے کے بارے سوچتا رہا . . . خیر میں نے کھانا ختم کیا اور برتن نیچے رکھنے چلا گیا پھر جب واپس اوپر آیا تو اپنے روم میں جانے سے پہلے سوچا دیکھوں بھابی دیکھ رہی ہیں مووی یا نہیں میں نے انکے روم کا دروازہ کھولا تو وہ آل ریڈی کھلا ہی تھا لوکڈ نہیں تھا میں اندر دیکھا تو ٹی وی پر مووی چل رہی تھی لیکن بھابی شاید باتھ روم میں تھی . . . میں تھوڑی دیر سوچتا رہا کہ کیا کروں . . میں اندر روم میں چلا گیا اور ابھی اندر اینٹر ہوا ہی تھا کہ باتھ روم کا ڈور اوپن ہوا اور بھابی اپنے جسم پر ایک تولیا لپیٹ کر باہر نکلی شاید نہا کر آئی تھی انہیں اِس حالت میں دیکھ کر میں تو فوراً باہر کی طرف بھاگا اور بھابی بھی تھوڑا سا گھبرائی . . . میں سیدھے اپنے روم میں آ گیا . . لیکن اتنے تھوڑے سے ٹائم میں جو نظارہ دیکھا وہ مجھے گرم کرنے کے لیے کافی تھا ٹاول صرف ہپس سے تھوڑا سا ہی نیچے تھا اور انکے آدھے ممے تو اوپر سے نظر آ ہی رہے تھے اُف کیا گورے گورے موٹے موٹے اور ٹائیٹ ممے تھے اور رانیں بالکل نیٹ کلین ویل شیپڈ . . . یہ وہ لمحہ تھا جب بھابی کے لیے میرے دِل میں سیکس کا خیال آیا . . اور شاید ایسا ہی کچھ بھابی کے ساتھ ہوا تھا جب انہوں نے مجھے باتھ روم میں نہاتے دیکھا تھا . . خیر میں کافی پزل تھا اور اپنے بیڈ پر بیٹھا ہوا تھا اور بیٹھے بیٹھے کب سو گیا پتہ ہی نہیں چلا . . . پھر تقریباً 2 گھنٹے تک میں سوتا رہا اور پھر مجھے فیل ہوا کوئی میرا نام پکار رہا ہے جیسے ہی مجھے تھوڑی ہوش آئی لیکن آنکھیں بند ہی تھی مجھے اپنے لنڈ پر کچھ دباؤ فیل ہوا . . میں نے فوراََ اپنی آنکھیں کھولی اور ساتھ ہی وہ دباؤ یکدم غائب ہوا میرے سامنے بھابی خالی مجھے شولڈر سے ہلا رہی تھی اور کہہ رہی تھی موم بلا رہی ہیں . . . انکی آنکھیں سرخ ہو رہی تھی اور فیس پر سیکس صاف جھلک رہا تھا وہ مجھے اٹھتا دیکھ کر فوراََ باہر نکل گئی . . میں سوچنے لگا میرےلن پر کیا تھا . . . کیا بھابی نے میرا لن پکڑا ہوا تھا . . یہ سوچ کر میرا لن جو اس ٹائم سیمی ایریکٹ تھا فل کھڑا ہو گیا . . . اور میں سوچنے لگا یہ سب کیا ہو رہا ہے بھابی ایسا کیوں کر رہی ہے اور میرے اندر انکے لیے ایسی فیلنگز کیوں آ رہی ہیں . . خیر میں اٹھا اور باتھ روم گیا فرش ہو کر نیچے چلا گیا . . . تو موم شاید باتھ روم میں تھی بھابی اور ثمرین بیٹھی باتیں کر رہی تھی مجھے دیکھتے ہی دونوں چُپ ہو گئی اور بھابی میری طرف دیکھ کر اپنا نیچے والا ہونٹ دانتوں میں دبانے لگی اور ثمرین منہ نیچے جھکائے سمائل کر رہی تھی . . . جیسا کہ میں پہلے بتا چکا ہوں شادی سے پہلے وہ دونوں فرینڈز تھی . . . . میں نے بھی بھابی کو سمائل دی اور موم کے روم میں چلا گیا . . موم شاید باتھ روم سے آ چکی تھی انہوں نے مارکیٹ سے کچھ سودا لانے کے لیے کہا میں باہر جانے لگا تو بھابی بولی میں بھی ساتھ چلتی ہوں مجھے بھی کچھ لینا تھا . . . میں نے کہا او کے اور وہ موم کو بتا کر آگئی میں گاڑی باہر نکلنے لگا تو وہ بولی بائیک پر چلتے ہیں . . میں نے کچھ سوچا اور پھر کہا او کے چلو اور بائیک باہر نکالی بھابی کو ساتھ بٹھایا اور مارکیٹ چلے گئے . . مارکیٹ کوئی 15 منٹ کی د وری پر تھی . . بھابی کے پیچھے بیٹھتے ہی مجھے اپنے بیک پر انکے فل ٹائیٹ ممے فیل ہوۓ . . . میری تو بائیک ہی ڈ ولنے لگی تھی . . اور ساتھ ہی انہوں نے اپنا ہاتھ میرے پیٹ پر رکھ لیا جیسے میاں بیوی بیٹھتے ہیں اور میرے ساتھ بالکل چپک گئی
چھ دیر تو وہ چُپ کرکے بیٹھی رہی پھر اچانک انہوں نے اپنا ہاتھ پیٹ سے اٹھا کر میری ران پر رکھ دیا لن کے بالکل پاس اور ایک دم مجھ سے بائیک تھوڑا ڈول گئی . . موقع کا فائدہ ا ٹھا تے ہوۓ وہ ہاتھ کو لن کے بالکل اوپر لے آئی اور ہلکا سا وہاں سے د با کر بولی اُف دھیان سے چلاؤ نا اور میں ایک دم سنبھلا اور وہ ہلکا سا مسکرانے لگی اور اپنا فیس میرے کان کے پاس لاکر بولی اتنا گھبرا کیوں رہے ہو تمہیں کھا تو نہیں جائونگی . . جب وہ بول رہی تھی تو انکے گال میری گردن سے ٹچ ہو رہے تھے اور انکی گرم سانسیں فیل ہو رہی تھی اوپر سے میری بیک پر انکے لگے ہوۓ ٹائیٹ ممے میری تو حالت خراب ہو رہی تھی . . خیر ہم مارکیٹ پہنچے اور وہاں سے کچھ شاپنگ کی اور واپس گھر آ گئے . . . . بھابی کو گھر چھوڑ کر میں باہر فرینڈز کی طرف نکل گیا اور پھر رات کو 2 بجے واپس آیا . . میرے پاس گیٹ کی کیز تھی جب اندر آیا تو نیچے کوئی نہیں تھا موم شاید اپنے روم میں سو چکی تھی میں اوپر گیا تو ابھی میں اپنے روم میں اینٹر ہونے ہی لگا تھا کہ ثمرین بھابی کے روم سے نکل کر اپنے روم میں گُھس رہی تھی مجھے دیکھ کر اس نے صرف سمائل دی اور اندر چلی گئی . . .
میں اپنے روم میں آ گیا اور آکر ٹراؤزر پہنا شرٹ تو میں رات کو پہنتا ہی نہیں تھا . . میں فریش ہو کر بیڈ پر لیٹا ہی تھا کہ میرے روم کا ڈور نوک ہوا میں نے ویسے ہی اٹھ کر اوپن کیا تو سامنے بھابی کھڑی تھی . انکی نظر تو جیسے میری باڈی پر ہی جم گئی اور میری انکی باڈی پر کیونکہ وہ اس ٹائم ایک باریک سی نائٹی میں تھی جس میں انکی برا ہلکی ہلکی نظر آ رہی تھی . . انکے 36 کے ممے پتلی کمر گورا چٹا رنگ دیکھ کر میرا تو دماغ گھوم گیا وہ اچانک میرے روم میں آئی اور ڈور بند کرکے بولی کیا کر رہے ہو میں نے کہا کچھ نہیں بس سونے لگا تھا . . وہ اچانک میرے بالکل پاس آگئی اور میرا ایک ہاتھ اپنے ہاتھ میں پکڑ کر اور دوسرا ہاتھ میرے سینے پر رکھ کر بڑے ہی سیکسی انداز میں بولی آج میرے روم میں سو جاؤ نا مجھے پتہ نہیں کیوں آج بہت ڈر لگ رہا ہے . . . اور ساتھ اپنا ہاتھ سینے پر پھیرتے ہوۓ پیٹ پر لے آئی اور مزید نیچے لے جا رہی تھی انکا ہاتھ لن پر پہنچنے ہی لگا تھا کہ میں نے ان کو اچانک جھٹکے سے پیچھے کیا اور کہا بھابی کیا کر رہی ہیں آپ . . . وہ پہلے تو چُپ کرکے کھڑی رہی پھر اچانک میری طرف دیکھ کر بولی دیکھو سکندر مجھے پتہ نہیں کیا ہو گیا ہے . . تمہارا بھائی 1 سال سے میرے پاس نہیں آیا اور میں ایک عورت ہوں میری کچھ ضرورتیں ہیں . . . پتہ نہیں مجھے تم سے یہ سب کہنا چاہیے کہ نہیں لیکن میں مجبور ہو کر کہہ رہی ہوں تم ایک بالغ لڑکے ہو تم میری مجبوری کو سمجھ سکتے ہو . . . میں نے کہا بھابی آپ میری بھابی ہو اور میں ایسا کچھ سوچ بھی نہیں سکتا . . آپ بتاؤ میں کیا کر سکتا ہوں آپکے لیے اس کے علاوہ . . وہ ایک دم غصے سے بولی جاؤ باہر سے کوئی مرد لے آؤ میرے لیے . . اور روم سے نکل گئی . . . میں سر پکڑ کر بیڈ پر بیٹھ گیا کہ یہ سب کیا ہو رہا ہے . . میں سوچنے لگا کہ بھابی جو بول رہی تھیں وہ بات کسی حد تک ٹھیک بھی ہے شادی کے ایک سال بَعْد ہی بھائی چلے گئے تھے بھابی اب ایک سال سے بالکل اکیلی ہے . . وہ خود پر کیسے کنٹرول کرتی ھوگی . . آخر اسکی جسمانی ضرورتیں ہیں اور بھائی کا ابھی 2 سال تک آنے کا کوئی پروگرام نہیں تھا . . میں عجیب الجھن میں پھنس گیا اور سوچنے لگا کیا کرنا چاہیے . . . اور اچانک میرے مائنڈ میں بھابی کی آخری بات آئی . . کہ باہر سے کوئی مرد لے آؤ میرے لیے . . . اِس بات نے تو مجھے جیسے گہری سوچ میں ڈال دیا . . عجیب خیال آنے لگے . . کہیں بھابی اپنی جسمانی ضرورت پورا کرنے کے لیے باہر کسی سے . . . نہیں نہیں ایسا نہیں ھونا چاہیے تھا . . اِس سے تو ہمارے گھر کی بدنامی ہو سکتی ہے . . پھر کیا کیا جائے بھابی بھی اپنی جگہ ٹھیک بول رہی ہے . . انہی سب سوچوں کے ساتھ میں نے ایک فیصلہ کیا اور اسی طرح صرف ٹراؤزر پہنے ہوۓ اپنے سیمی ایریکٹ لن کے ساتھ بھابی کے روم کی طرف چلا گیا اور نوک کیا . . بھابی نے دروازہ کھولا تو وہ اسی ڈریس میں تھی اور انکی آنکھوں میں آنسو تھے . . . دروازہ کھلتے ہی میں اندر چلا گیا اور بھابی دروازہ بند کرکے مجھ پر ٹوٹ پڑی مجھے بیڈ پر گرا دیا اور میرے اوپر چڑھ کر انہوں نے کس کی بارش کر دی . . . میرے پورے فیس پر کبھی گال پر کبھی ماتھے پر کبھی کانوں پر کبھی گردن کی رائٹ سائڈ کبھی لیفٹ سائڈ انکی کس بہت زیادہ ویٹ تھی میرا پُورا فیس گیلا ہو گیا اور انکی سانسیں . . . اف وہ تو انتہائی گرم تھیں ایسے لگ رہا تھا انکے منہ سے آگ نکل رہی ہے اتنی گرم سانسیں تھی انکی . . اور وہ میرے اوپر تقریباً لیٹی ہوئی تھیں میرے ننگے سینے پر انکا سیکسی اور گرم بدن ایک باریک سی نائٹی میں چپکا ہوا تھا مجھے اپنی چھاتی پر فیل ہو رہا تھا کہ بھابی کے ممے کتنے ویل شیپڈ اور ٹائیٹ ہیں اور انکا جسم کتنا سوفٹ ملائم ملائی کی طرح ہے میں نے بھی اپنے دونوں ہاتھ بھابی کی بیک پر رکھ دیے اور دھیرے دھیرے انکی بیک پر اپنے ہاتھ پھیرنے لگا کیا ویل شیپڈ فگر تھا انکا اُف میں ہاتھ پھیرتا پھیرتا انکی گانڈ پر لے آیا اُف میرے خدایا ایسی ویل شیپڈ اوپر کو ابھری ہوئی گول گول گانڈ میں نے اپنی ساری عمر میں نہیں دیکھی تھی . . . میں نے گانڈ دبانا شروع کیا اور وہاں بھابی نے میرے ہونٹوں پر اپنی زبان پھیری . . . پوری زبان باہر نکال کر میرے ہونٹوں پر پھیر کر انہیں گیلا کیا . . . اور پھر میرے نیچے والے ہونٹ کو اپنے منہ میں لیکر چوسنا شروع کر دیا . . اچھی طرح چوس رہی تھیں جیسے کھا ہی جائیں گی . . پھر اسی طرح اوپر والے ہونٹ کو منہ میں لیا اور کھا جانے والے انداز میں چوسنے لگی ساتھ ہلکا ہلکا کاٹ بھی رہی تھی . . . . اور پھر انہوں نے اپنے دونوں ہاتھوں سے میرے فیس کو پکڑا اور مجھے بولی اپنی زبان باہر نکالو میں نے باہر نکالی ہی تھی کہ انہوں نے اپنا پُورا منہ کھول کر زبان کو منہ میں ڈال لیا اور انتہائی ویٹ کس کی ایسا لگ رہا تھا زبان کو کھا ہی جائیں گی تقریباً 3 سے 4 منٹ تو وہ زبان ہی چُوستی رہی پھر انہوں نے میرے منہ میں اپنی زبان ڈالی اور میں نے بھی کچھ کم نا کی اور انکی زبان کو سمجھو کہ کھا ہی گیا کیا میٹھی زبان تھی بھابی کی . . . . میں تو بھابی کا دیوانہ ہی ہو گیا . . . اور پھر بھابی اپنی زبان پھیرتے پھیرتے نیچے کی طرف جانا شروع ہوئی اور میری گردن سے ہوتے ہوۓ میری چیسٹ پر آگئی . . پہلے انھوں نے میری چیسٹ کی لیفٹ سائڈ پر اچھی طرح زبان پھیری اور کس کی اور پھر میرے لیفٹ والے نیپل کو منہ میں ایسے ڈالا جیسے اگر وہ ایک سیکنڈ بھی لیٹ ہو جاتی ڈالنے میں تو وہ ضایع ہو جاتا . . اس ٹائم میرےلن نے نیچے سے ایسا جھٹکا کھایا کہ مجھے لگا کہ بس ابھی گیا کہ ابھی گیا . . . . بھابی کا چوسنے کا انداز ایسا تھا کہ اگر وہاں 80 سال کا بابا بھی ہوتا تو اسکا لن بھی لوہے کا ہو جاتا . . . . پھر بھابی نے وہی کام میرے رائٹ والے نیپل کے ساتھ کیا اور پھر آہستہ آہستہ اور نیچے آتی گئی اور میرے پورے پیٹ پر کس کی زبان پھیری یہاں تک کہ بھابی نے مجھے ماتھے سے لیکر بیلی بٹن تک اچھی طرح گیلا اور لال سرخ کر چھوڑ ا تھا . . . اور مزے سے میری یہ حالت تھی کہ میرا لن پھٹنے والا ہو چکا تھا . . پھر بھابی میرے ٹراؤزر کو نیچے کرنے ہی لگی تھی کہ میں نے بھابی کے ہاتھ پکڑ لیے اور انہیں بیڈ پر سیدھا لٹا کر انکے اوپر آ گیا . . . جیسے ہی ہم فیس ٹو فیس ہوۓ بھابی کا چہرہ دیکھ کر میرے جوش میں مزید اضافہ ہو گیا لال سرخ ہو رہا تھا انکا چہرہ آنکھیں بھی گلابی ہو چکی تھی سانسیں اکھڑی ہوئی تھی اور بار بار اپنے ہونٹ کو دانتوں سے دبا رہی تھیں . . . بھابی کے ہونٹ سیم ایک پورن اسٹار جیسے ہیں . . . شاید اپنے نام سنا ہو آڈرے بیٹنی . . . اسکے جیسے ہیں . . . اور شکل بھی تقریب 80 %
اینی ویز . . . پھر کیا تھا میں بھابی پر ایسے ٹوٹا جیسے شیر شکار پر . . . . . میں نے بھابی کے دونوں ہونٹوں کو ایک ساتھ اپنے منہ میں لے لیا اور کھا جانے والے انداز میں میں چوسنا شروع کر دیا بھابی میرا پورا پورا ساتھ دے رہی تھیں اپنے ہینڈز کو میری بیک پر رب کر رہی تھیں . . میں کبھی اوپر والے ایک کبھی نیچے والے ہونٹ کو پاگلوں کی طرح چوس رہا تھا اور جیسے میں چوس رہا تھا مجھے لگ رہا تھا نشان تو ضرور پڑ جائیں گے بھابی کے ہونٹوں پر پھر میں نے بھابی کا سیکسی منہ کھلوایا اور بھابی کی زبان باہر نکلوا کر اسےپاگلوں کی طرح چوسنے لگا . . . . پھر میں نے بھابی کے نرم نرم گالوں پر دندیاں کاٹی اور پھر زبان پھیری پھر میں نیچے کی طرف ہوا بھابی کی پوری گردن کو چوس چوس کر گیلا کر دیا اور پھر میں نے بھابی کی نائٹی کو دونوں ہاتھوں میں پکڑ کر پھاڑ ہی ڈالا اور نیچے سے بھابی کا سیکسی بدن نکل آیا آہ کیا بدن تھا وہ نظارہ میں کبھی نہیں بھول سکتا چھوٹی سی برا میں 36 کے ٹائیٹ اور گول گول ممے قید کیے ہوۓ آدھے تو باہر جھلک رہے تھے . . بس پھر کیا تھا میں ٹوٹ پڑا مموں پر دونوں کو ہاتھوں میں پکڑا تو یوں لگا جیسے ملائی ہاتھوں میں پکڑی ہے . . میں نے برا کو بھی پکڑ کر پھاڑ دیا اس ٹائم میرے اوپر جنون سوار ہو چکا تھا اور بھابی کے منہ سے بھی سسکاریاں نکل رہی تھا . . آہ . . اف . . . اوہ . . . . جیسے ہی بھابی جی کے ننگے ممے میری آنکھوں کے سامنے آئے تو ما نو جیسے مجھے جنت ہی مل گئی اُف کیا نظارہ تھا... بالکل گول گول فل ٹائیٹ اپنی جگہ پر بالکل قائم . . اور نیپل کوئی آدھے انچ کے ھونگے لائٹ پنک کلر کے میں نے تو پاگلوں کی طرح لیفٹ والے ممے کو اپنے دونوں ہاتھوں میں پکڑا تو مجھے اسکی اکڑ اور نرمی نے مدہوش ہی کر دیا میں نے اپنی زبان کو اسکے نیپل پر پھیرنا شروع کر دیا نیپل فل اکڑ چکا تھا میں نے دھیرے دھیرے اُس پر زبان پھیری اور پھر یکدم اسے منہ میں ڈال کر ایسے چوسا جیسے کھا ہی جاؤنگا . . . ساتھ ساتھ دونوں ہاتھوں سے اس ممے کو دبا بھی رہا تھا میری اِس حرکت پر بھابی نے دونوں ہاتھ میرے بالوں میں رکھ دیے اور سہلاتے ہوئے بولنے لگی اُف سکندر مجھے مار ڈالو گے کیاآہ تم نے تو ابھی سے میری پھدی گیلی کردی ہے آہ پلیز ایسے ہی چوستے رہو اف . . . بس پھر میں اس ممے کو دونوں ہاتھوں میں پکڑے دباتا رہا ساتھ ساتھ اس نیپل کو کھا جانے والے انداز میں چوستا رہا . . کوئی پھر پورے ممے کو اسی طرح لیفٹ رائٹ اپ ڈاؤن ہر طرف سے چوس چوس کر لال سرخ اور گیلا کر دیا . . . پھر میں نے یہی کام رائٹ والے ممے کے ساتھ کیا جب دونوں ممے فل گیلے اور لال سرخ ہو کر چمکنے لگے تو میں نے انہیں ہاتھوں میں پکڑ کر مسلنا شروع کر دیا یوں لگ رہا تھا ان پر تیل ملا ہوا ہے اور بھابی کے اوپر آ کر انکے ہونٹوں کو چوسنا شروع کر دیا . . . . بھابی کی تو آہیں سننے والی تھی آہ اوئی اوہ اف مر گئی . . . . . اِس ٹائم بھابی میرے نیچے صرف پینٹی میں تھی اور میں ٹراؤزر میں فل کھڑے لنڈ کے ساتھ انکے اوپر تھا جب میں کس کر رہا تھا اور ساتھ ساتھ مموں کو دبا رہا تھا تو بھابی نے ہاتھ نیچے لے جا کر میرا لنڈ پکڑنا چاہا تو میں نے بھابی کا ہاتھ پیچھے کر دیا اور نیچے انکے پیٹ پر آ گیا انکا پیٹ کسی کالج گرل کی طرح بالکل فلیٹ تھا اور چھوٹی سی کمر گوری چٹی چھوٹا سا بیلی بٹن انکے پورے پیٹ پر میں نے اپنی زبان پھیرنا شروع کر دی مموں سے لیکر انکی پینٹی تک لیفٹ رائٹ اوپر نیچے ہر طرف زبان پھیر پھیر کر اور کس کر کر کے انکا پورا پیٹ گیلا اور لال کر دیا مموں کی طرح . . . . اور پھر میں نیچے اور انکی ران کو کھولا اُف کیا ویل شیپڈ رانیں تھیں نرم نرم سوفٹ اسکن آہ . . . . انکی رانوں کے بیچ آکر میں نے انکی رائٹ والی ران پر گھٹنے سے لیکر پینٹی تک چوس چوس کر اور زبان پھیر پھیر کے گیلا کر دیا اسی طرح لیفٹ والی ران کو کیا اور ایک دم سے ہاتھ اوپر لے جا کر انکی پینٹی کو اتار دیا . . اب میری پیاری سیکس بم بھابی میرے سامنے بالکل ننگی تھی . . . انکی پینٹی اترتے ہی میں ایک دم حیران رہ گیا انکی چوت بالکل صاف نیٹ اینڈکلین اور جو حیران کن بات تھی وہ یہ کہ اتنی چھوٹی پھدی . . میں نے اپنی پوری زندگی میں کبھی کسی مووی میں بھی اتنے چھوٹی پھدی نہیں دیکھی تھی . .زیادہ سے زیادہ 2 انچ کی ھوگی اور لپس بالکل ساتھ جڑے ہوئے . . . . میں نے ایک دم اوپر بھابی کی طرف دیکھا تو وہ اپنے ممے دبا رہی تھی اور فل گرم ہو کر میری طرف دیکھ رہی تھی مجھے اپنی طرف حیرانگی سے دیکھتے ہوۓ بولی کیوں کیسی لگی اپنی بھابی کی پھدی . . . . میں نے کہا بھابی اتنی چھوٹی سی پھدی . . وہ بولی کیوں پسند نہیں آئی میں نے کہا دس اِز دی موسٹ سیکسی پھدی آئی ہیو ایور سین ان مائی لائف . . . وہ بولی پھر کھا جاؤ اپنی بھابی کی پھدی کو . . . میں نے پھدی کے چاروں طرف اپنی زبان پھیری پھدی کی سائڈز کو گیلا کیا میرے ایسا کرنے سے بھابی کے منہ سے سسکاریاں اور تیز ہو گئی اور انہوں نے میرے بالوں کو پکڑ لیا . . . میں نے بڑے مزے سے پھدی کی سائڈز کو گیلا کرنے کے بَعْد زبان کو آہستہ آہستہ پھدی کے لپس پر پھیرا اور بھابی کی تو جیسے جان ہی نکال گئی . . . انکے منہ سے لمبی سیآہ نکلی . . میں نے زبان پھیرتے پھیرتے ایک دم انکی پھدی کا لیفٹ لپ اپنے منہ میں ڈال لیا اور اسے كھانا شروع کر دیا بھابی کا تو برا حال ہو گیا میں نے بڑے پیار سے پھدی کا لیفٹ لپ چوسنا شروع کر دیا لپ اتنا چھوٹا سا تھا کہ ایزیلی منہ میں چلا گیا پھر میں نے اسی طرح رائٹ والے لپ کو منہ میں ڈالا . . ایک بات تو تھی پھدی کا ٹیسٹ کمال تھا اور بڑی پیاری مہک آ رہی تھی دل تو کر رہا تھا کہ کھا ہی جاؤں پھر دونوں لپس کو باری باری چوسنے کے بعد میں نے ایک دم پوری پھدی کو منہ میں ڈال لیا چھوٹی سی پھدی تھی آرام سے منہ میں آگئی اور بھابی نے میرے بالوں کو زور سے کھینچا اور اُف کی آواز نکالی میں نے پھدی کو منہ میں لیکر اسکے لپس کے بیچ زبان اوپر نیچے کرنا شروع کر دی . . . . ایسا مزہ تو نا ہی مجھے کبھی آیا تھا اور نا ہی بھابی کو . . . . پھر میں نے پھدی کو منہ سے نکالا اور پھدی کے چھوٹے سے لپس کو دونوں ہاتھوں سے کھولا اور بیچ میں زبان ڈال کر آگے پیچھے کرنا شروع کر دی میری اِس حرکت سے تو بھابی تڑپ ہی اُٹھی . . . . . تقریباً 15 منٹس تک میں نے بھابی کی پھدی کو ہر طرح سے چوسا . .
اِس دوران بھابی دو مرتبہ فارغ ہو گئی . . . پھر اچانک مجھے بھابی نے اپنے اوپر سے جھٹکا دے کر بیڈ پر سیدھا لٹا دیا اور اِس سے پہلے کہ میں کچھ کرتا ایک ہی جھٹکے سے میرا ٹراؤزر اُتار پھینکا . . جیسے ہی میرا 8 . 5 انچ کا لنڈ فل ٹائیٹ جھولتا ہوا باہر آیا بھابی اسے فوراً اپنے دونوں ہاتھوں میں پکڑ کر بولی . . اس نے ہی تو میری نیت خراب کی تھی . . . کیسے اتنا بڑا کر لیا تم نے تمہارے بھائی کا تو اِس سے کافی چھوٹا ہے اُف کیسے لے پاؤں گی اسے میں ساتھ ساتھ میرے لنڈ کو اوپر نیچے بھی کر رہی تھی اور اپنے ہونٹوں پر زبان پھیر رہی تھی . . . پھر اچانک وہ میرے لنڈ پر جھکی اور میرے لنڈ کو دونوں ہاتھوں میں پکڑے رکھا اور میری بالز کے اوپر زبان پھیرنا شروع کر دی اور بولی اُف کتنی موٹی موٹی ہیں بالز بھی آہ آج تو مزہ آ جائیگا اچھی طرح بالز کو گیلا کرنے کے بَعْد انہوں نے میرے لنڈ کی نیچے والی سائڈ پر بوٹم سے لیکر کیپ تک زبان پھیری پھر اسی طرح لنڈ کی رائٹ سائڈ پر پھر لیفٹ سائڈ پر پھر اوپر والی سائڈ پر لنڈ کے ہر طرف اوپر سے نیچے نیچے سے اوپر تک زبان پھیر پھیر کر لنڈ کو اچھا خاصہ گیلا کر دیا اور پھر دونوں ہاتھوں سے لنڈ کو ملنا شروع کر دیا بھابی یہ سب میری ٹانگوں کے بیچ بیٹھ کر رہی تھی اور لنڈ اتنا گیلا تھا کہ پچک پچک کی آوازیں آ رہی تھی اور بھابی کے ممے بھی ہل رہے تھے . . . . . . پھر اچانک بھابی جھکی اور میرے لنڈ کی کیپ کو منہ میں ڈال لیا اُف مجھے تو لگا میں ابھی چھوٹ جاؤنگا
 بھابی نے کیپ کو منہ کے اندر رکھتے ہوئے ہی اندر ہی اُس پر زبان پھیری . . . اُف بھابی کی یہ حرکت تو میں نے کبھی کسی مووی میں بھی نہیں دیکھی تھی . . . . اچھی طرح کیپ پر زبان پھیرنے کے بَعْد بھابھی نے لنڈ کو آہستہ آہستہ منہ میں لے جانا شروع کیا اور آدھے سے تھوڑے زیادہ پر جا کر رک گئی کیونکہ شاید اِس سے زیادہ جا نہیں رہا تھا لنڈ کی موٹائی اتنی تھی کہ بھابی کو پُورا منہ کھولنا پڑا تھا میں نے دونوں ہاتھوں سے بھابی کے سر کو پکڑ کر پُش کرنا چاہا تو بھابی لنڈ منہ سے نکال کر بولی . . گھوڑے کا لنڈ ہے اِس سے زیادہ نہیں جائے گا . . . پھر دوبارہ بھابی نے لنڈ منہ میں ڈال لیا اور چوسنا شروع کر دیا بہت ہی ویٹ سکنگ کر رہی تھی بھابی . . . انکا تھوک لنڈ کے ساتھ ساتھ بہہ کر میری بالز تک جا رہا تھا . . یہیں سے آپ اندازہ لگا لو اس ٹائم میری کیا حالت ھوگی ساتھ ساتھ وہ اپنے ہاتھ سے لنڈ کو مسل بھی رہی تھی پھر بھابھی نے ایک اور کام کیا . . میرے لنڈ کو اپنے منہ میں لیفٹ سائڈ پررکھ کر گال کے ساتھ رگڑنا شروع کر دیا منہ کے اندر سے . . . . آہ بھابی کسی پروفیشنل پورن اسٹار کی طرح چوس رہی تھی . . . جب میری برداشت ختم ہو گئی تو میں نے بھابی کو جھٹکا دے کر بیڈ پر سیدھا لٹایا اور بھابی کی ٹانگوں کے بیچ آ گیا میں پھدی پر لنڈ رکھنے ہی لگا تھا کہ بھابی بولی . . ٹھہرو ادھر اوپر آؤ انھوں نے اپنے مموں کی طرف اشارہ کیا . . . میں چھلانگ مار کر انکے پیٹ پر آ گیا انہوں نے میرا گیلا لنڈ پکڑ کر مموں کے بیچ کیا اور ماموں کو سائڈز سے دونوں ہاتھ سے دبا کر میرا لنڈ بیچ میں پھنسا لیا اور بولی مارو جھٹکے
بس پھر کیا تھا میں تو اس ٹائم اتنا گرم ہو چکا تھا کہ مجھے کچھ نظر نہیں آرہا تھا جب میں نے اپنے لنڈ کے ارد گرد بھابھی جی کے ٹائیٹ اور گول گول مموں کی نرمی محسوس کی میں نے دیوانہ وار جھٹکے مارنے شروع کر دیے جب میں آگے کو جھٹکا مارتا تو میرا لمبا لنڈ بھابھی جی کی ٹھوڑی سے ٹکرا جاتا یہ دیکھ کر بھابھی جی نے فیس تھوڑا نیچے کرکے اپنی زبان باہر نکال لی اِس طرح کرنے سے جب میرا لنڈ آگے کو جاتا تو اسکی کیپ بھابھی جی کی زبان سے جا لگتی . . . اور باقی لن پر بھابھی جی کے مموں کی نرمی اور گرمی اُف میرا تو لنڈ پھٹنے والا ہو گیا تھا میں نے دیوانہ وار جھٹکے دینے شروع کر دیے بھابھی بھی خوب مزے لے رہیں تھی پھر مجھے لگا جیسے اب میں چھوٹ جاؤنگا میرے جھٹکوں میں تیزی آ گئی اور بھابھی بھی شاید سمجھ گئی انہوں نے مموں کو مزید دبا دیا اور پھر میرے لنڈ نے پہلی پچکاری چھوڑی جو سیدھی بھابھی کی زبان پر پڑی ساتھ ہی میں نے مموں سے لنڈ باہر کھینچا اور ہاتھ میں پکڑ کر آگے پیچھے کرنے لگا بھابھی کے کھلے منہ کے پاس کرکے اور میری ساری منی بھابھی کے منہ کے اندر اور فیس کے اوپر گرنے لگی اور بھابھی بھی منہ کھو لے ساری منی اپنے منہ میں ڈلوا رہی تھی میں کافی زیادہ فارغ ہوا اتنی منی تو کبھی مٹھ مارنے کے دوران بھی نہیں نکلی تھی جب آخری قطرہ بھی بھابھی کی زبان پر گر پڑا تو بھابھی بڑے مزے سے منہ بند کرکے ساری منی پی گئی اور جو فیس پر لگی تھی اسے بھی اپنی انگلی سے صاف کرکے چاٹنے لگی اور میں فارغ ہوتے ہی بھابھی کے اوپر سے ہٹ گیا اور انکے برابر لیٹ گیا اور سوچنے لگا یہ کیا کر دیا میں نے کیا مجھے ایسا کرنا چاہیے تھا میں نے اپنے بھائی کی عزت کے ساتھ یہ کیا کیا ایسے سوال میرے مائنڈ میں آنے لگے اور بھابھی اٹھ کر باتھ روم چلی گئی میں ابھی یہی سب سوچ رہا تھا کہ بھابھی واپس آئی اور میرے ساتھ لیٹ گئی میں نے انکی طرف دیکھا تو وہ سمائل کر رہی تھی میں نے کہا بھابھی کیا ہمیں یہ سب کرنا چاہیے تھا ؟ . . . میری بات سن کر انکا فیس ایک دم سیریس ہو گیا اور وہ بولی اگر تم نہ کرتے تو مجھے باہر کسی سے کروانا پڑتا کیونکہ میں اب مزید برداشت نہیں کر سکتی تھی تمہارا بھائی مجھے سیکس کا نشہ ڈال کر خود تو باہر چلا گیا میں نے اسے فون پر بھی کئی مرتبہ اپنی کنڈیشن کا بتایا تو وہ میری بات سیریس ہی نہیں لیتا تھا مجھے تو شک ہے اس نے وہاں شادی کی ہوئی ہے اب تم ہی بتاؤ میں اور کیا کرتی یونہی تڑپتی رہتی تم نے میری ہیلپ کی ہے اس میں کچھ غلط نہیں اور ویسے بھی گھر کی بات گھر ہی میں رہ گئی غلط تو تب ہوتا اگر میں باہر کسی سے ایسا کچھ کرواتی . . . یہی تو وہ بات تھی جسے سوچ کر میں نے بھی یہ قدم اٹھایا تھا کہ کہیں گھر سے باہر بھابھی ایسا ویسا نا کچھ کر بیٹھے خیر مجھے تھوڑی تسلّی ہوئی تو بھابھی نے میرا لنڈ پکڑتے ہوۓ بولی . . اچھا ایک بات تو بتاؤ یہ تم نے اتنا بڑا کیسے کیا تمہارے بھائی کا تو ایسا نہیں ہے میں نے کہا میں نے تو کچھ نہیں کیا قدرتی طور پر ہی ایسا ہے وہ بولی مم تمہاری بیوی تو بڑی لکی ھوگی اور لمبا موٹا ہتھیار تو قسمت سے ہی نصیب ہوتا ہے بھابھی کے نرم ہاتھ کے لمس سے میرے لنڈ میں پھر سے حرارت شروع ہو گئی بھابھی نے بھی اسے فیل کیا اور فوراً لن چھوڑ کر بولی چلو اب ٹراؤزر پہن کر جاؤ اپنے روم میں . . . میں حیرانگی سے بھابھی کی طرف دیکھنے لگا اور بولا کیوں کام پُورا نہیں کرنا ؟ . . . بھابھی میرا مطلب سمجھتے ہوۓ بولی جو تم کرنے چاہ رہے ہو وہ میں اِس ٹائم نہیں کروا سکتی میں نے پوچھا کیوں ؟ . . . . . . . بھابھی میرے لنڈ کی طرف اشارہ کرتے ہوۓ بولی ذرا اسکی صحت دیکھو اور میری پھدی کا سائز دیکھو تمہیں کیا لگتا ہے یہ آرام سے اندر گھس پائیگا . . . . اسے برداشت کرنے کے لیے ہمت چاہیے اور میری تو تمہارے بھائی سے چدواتے ہوۓ بہت چیخیں نکلتی تھی کیونکہ تم نے دیکھ لیا ہے کہ میری پھدی قدرتی طور پر انتہائی چھوٹے سائز کی ہے اس لئے ہم دونوں اس دن سیکس کریں گے جس دن گھر میں کوئی نا ہو تاکہ میری چیخیں سننے والا کوئی نا ہو . . . میں بھابھی کی بات سمجھتے ہوۓ بولا او کے میری پیاری بھابھی جی اور میں نے اپنا ٹراؤزر پہنا اور روم سے باہر نکل کر اپنے روم میں چلا گیا اور جاتے ہی سو گیا صبح میری آنکھ تھوڑی لیٹ کھلی صبح سنڈے تھا سب گھر ہی میں تھے . . . . میں نیچے گیا تو موم اپنے روم میں تھی اور بھابھی اور ثمرین کچن میں تھی مجھے دیکھتے ہی دونوں نے ایک دوسرے کی طرف دیکھ کر سمائل دی میں نے ناشتے کا کہا اور ٹی وی لاؤنج میں بیٹھ گیا وہ دونوں ایک دوسرے کے کان میں کچھ باتیں کر رہی تھی ٹی وی لاؤنج سے کچن صاف نظر آتا ہے اور ساتھ ساتھ سمائل کر رہی تھی کچھ دیر بَعْد ثمرین ناشتہ لے کر آئی اور میرے سامنے رکھ کر سمائل کرکے بولی یہ لو بڑا مزے کا ہے بھابھی نے خود بنایا ہے اور ساتھ ہی مجھے آنکھ ماری اور چلی گئی . . میری تو مانو پاؤں کے نیچے سے زمین ہی نکل گئی . . اس کا مطلب بھابھی نے میری چھوٹی بہن کو بھی سب بتا دیا . . . نہیں نہیں یہ نہیں ہو سکتا بھابھی ایسا کیسے کر سکتی ہیں . . . لیکن وہ دونوں ایک دوسرے کی پکی فرینڈز کی طرح ہی ہر کام ساتھ کرتی ہیں جس سے مجھے مزید شک ہوا . . . مجھ سے تو اب نوالا بھی نہیں نگلا جا رہا تھا اب کیا ھوگا ایسے تو بات اوپن ہو جائے گی اگر میرا شک ٹھیک ہے کہ بھابھی نے ثمرین کو بتا دیا ہے اور اگر بتایا تو کتنا بتایا ہو گا کیا سب کچھ بتا دیا ھوگا بس انہی سوچوں کے ساتھ ساتھ میں نے ناشتہ کیا اور پھر باہر نکل گیا . . . میں فرینڈز کی طرف چلا گیا لیکن پُورا دن میرے مائنڈ میں یہی بات چلتی رہی کہ اب کیا ھوگا ثمرین کچھ کام خراب نا کر دے اسے پتہ نہیں چلنا چاہیے تھا . . خیر یونہی سوچتے سوچتے بس رات ہو گئی اور میں گھر واپس چلا گیا گھر گیا تو سب اپنے اپنے رومز میں تھے میں بھی اپنے روم میں چلا گیا اور کچھ دیر نیٹ یوز کیا ٹی وی دیکھا تو تقریباً 2 : 30 پر میرا ڈ ور نوک ہوا میں نے ڈ ور اوپن کیا تو سامنے بھابھی کھڑی تھی وہ فورا میرے روم میں گُھس آئی اور دروازہ بند کرکے مجھے ہگ كرلیا اور زبردست قسِم کی کس کرنے لگی کوئی 2 یا 3 منٹ تک کس چلی ہو گی پھر میں نے بھابھی کو علیحدہ کرکے کہا بھابھی وہ آپ نے ثمرین کو بھی بتا دیا ہے نا . . . بھابھی سن کر ایک دم ہنسی اور بولی تمہیں کس نے بتایا میں نے کہا مجھے فیل ہوا ہے وہ میرے بیڈ پر بیٹھتے ہوۓ بولی دیکھو سکندر اسے بتانا ضروری تھا اگر تم لانگ ٹائم یہ تعلق رکھنا چاہتے ہو ایک تو اسکا روم یہیں اوپر ہمارے ساتھ ہے اور دوسرا وہ مجھ سے بہت قریب ہم دونوں نے کبھی کوئی ایک دوسرے سے کوئی بات نہیں چھپائی میرے اِس گھر میں آنے سے پہلے ہی ہم بہت قریب تھے ایک دوسرے کے ڈونٹ وری وہ میری اور میں اسکی راز دار ہوں مجھے اس ٹائم تو اِس رازداری والی بات کی سمجھ نہیں آئی اور میں نے مطمئن ہو کر او کے بولا اور مجھے تھوڑا پریشان دیکھ کر بھابھی بولی تمہاری ٹینشن کل ختم ہو جائے گی میں نے کہا وہ کیسے . . وہ بولی یہ میں تمہیں کل ہی بتاؤں گی . . . . میں نے کہا او کے اور پھر ہم ایک دوسرے سے لپٹ گئے خوب چُوما ایک دوسرے کو میں حسب معمول صرف ٹراؤزر میں ہی تھا بھابھی نے مجھے بیڈ پر بٹھایا اور میری ٹانگوں کے بیچ آگئی اور میرا ٹراؤزر نیچے کیا اور میرا آل ریڈی کھڑا لنڈ سپرنگ کی طرح باہر نکل آیا بھابھی دیکھ کر اپنے ہونٹوں پر زبان پھیرتے ہوۓ اسے پکڑ کر بولی اف ظالم میری شادی تم سے کیوں نہیں ہوئی ایسے ہتھیار کے لیے تو میں اپنی جان بھی دے دوں . . . اور بھابھی نے میرے لنڈ کو اوپر سے نیچے ،نیچے سے اوپر تک زبان پھیر پھیر کر گیلا کرنا شروع کیا اور ساتھ ساتھ دونوں ہاتھوں سے مسل بھی رہی تھی لنڈ کو... لنڈ اتنا بڑا تو تھا کہ دونوں ہاتھوں میں ہونے کے باوجود اسکا اچھا خاصا حصہ باہر تھا بھابھی نے پھر کیپ منہ میں ڈالی اور کل کی طرح اُس پر زبان پھیرنے لگی پھر منہ سے نکالا اور بولی قسم سے ایسا لنڈ میں نے اپنی زندگی میں کبھی نہیں دیکھا تم نے تو مجھے خوش کر دیا ہے جب بھی کوئی انگلش کلپ دیکھتی تھی تو سوچتی تھی کاش میرے ہسبنڈ کا لنڈ بھی بڑا ہو انکا تو نہیں نکلا بڑا لیکن تم نے کسر پوری کر دی پھر دوبارہ انہوں نے لنڈ منہ میں ڈال لیا اور پاگلوں کی طرح چُوسنے لگی ایسا لگ رہا تھا وہ کھا ہی جائیں گی لنڈ لوہے کی طرح سخت ہو چکا تھا وہ لنڈ کو ایسے چوس کر منہ سے چھوڑ تی جیسے بچے لولیپوپ کو کرتے ہیں کبھی لنڈ کے سینٹر سے سائڈ کی طرف سے دانتوں سے کاٹتی کبھی بالز پر زبان پھیرتی کبھی لنڈ کی سائڈز پر زبان پھیرتی اِس طرح کرتے کرتے انہوں نے میرے لنڈ اور لنڈ کے آ س پاس 3 یا 4 انچ تک کا ایریا خوب گیلا کر دیا تھا میرا تو مزے سے برا حال تھا پھر انھوں نے لنڈ کو منہ میں ڈالا اور پُورا لنڈ منہ میں لے جانے کی کوشش کر رہی تھی لیکن بس آدھے سے تھوڑا سا ہی زیادہ جا پا رہا تھا ساتھ ساتھ لنڈ کو ہاتھ سے بھی مسل رہی تھی کوئی 15 منٹ کی چوسائی کے بَعْد میرے لنڈ نے منی کا فوارہ چھوڑ ا اور سارا بھابھی کے منہ میں انہوں نے لنڈ باہر نہیں نکالا اور میں بھابی کے منہ کے اندر ہی ساری منی نکالی کچھ انکے ہونٹوں سے باہر بہہ گئی باقی 80 % منی وہ ڈائریکٹ پی گئی . . . اور اچھی طرح میری منی کا آخری قطرہ تک نیچوڑ کر میرے لنڈ کو اچھی طرح چاٹ چاٹ کر صاف کیا اور بولی مزہ آیا میں اس ٹائم تک بیڈ پر پیچھے کو گر کے لیٹ چکا تھا مزے کی وجہ سے میں نے کہا اتنا مزہ دو گی تو کس کافر کو مزہ نہیں آئیگا . . . پھر وہ اٹھی اور اپنے روم میں چلی گئی میں بھی باتھ روم گُھس گیا شاور لیا اور آ کر سو گیا . . . . .
صبح میں تقریباً 11 بجے اٹھا فریش ہوا اور ناشتہ کرکے اپنی شاپ پر چلا گیا اور معمول کے مطابق بس ادھر اُدھر کے کام ہو رہے تھے کہ تقریباً 7 بجے مجھے بھابھی کا فون آیا اور بولی تم ابھی اسی وقت گھر آ سکتے ہو ؟  . .

Posted on: 07:37:AM 12-Feb-2021


2 0 444 0


Total Comments: 0

Write Your Comment



Recent Posts


Hello Doston, Ek baar fir aap sabhi.....


0 0 19 1 0
Posted on: 06:27:AM 14-Jun-2021

Meri Arrange marriage hui hai….mere wife ka.....


0 0 15 1 0
Posted on: 05:56:AM 14-Jun-2021

Mera naam aakash hai man madhya pradesh.....


0 0 14 1 0
Posted on: 05:46:AM 14-Jun-2021

Hi friends i am Amit from Bilaspur.....


0 0 76 1 0
Posted on: 04:01:AM 09-Jun-2021

Main 21 saal kahu. main apne mummy.....


1 0 60 1 0
Posted on: 03:59:AM 09-Jun-2021

Send stories at
upload@xyzstory.com