Stories


شوہر کے سامنے بیوی کو چودا از زی صائم

ہیلو دوستو!  آج میں اپنی پہلی کہانی جو کہ بالکل سچی ہے لے کر آپ کی خدمت میں حاضر ہوا ہوں۔  امید ہے آپکو یہ کہانی پسند آئے گی۔  یہ آج سے کچھ دن پہلے کی ہی بات ہےمجھے انٹرنیٹ پر ایک اشتہار نظر آیا جس میں لکھا ہوا تھا کہ کوئی ہے جو میرے سامنے میری بیوی کو اپنے موٹے اور لمبے لوڑے سے خوب جم کر چود سکے۔  میں نے جب اس پوسٹ کو رپلائی کیا تو اس کے جواب میں مجھے اس بندے نے جس کا نام کاشف ہے مجھے اپنا فون نمبر دیا کہ میں اس سے اس نمبر پر بات کروں تاکہ وہ مجھے بتا سکے کہ مجھے کب اور کہاں اس کی بیوی کو چودنا ہے۔  میں نے کاشف کو فون کیا تو اس نے بتایا کہ ابھی تو میری بیوی جس کا نام مہوش ہے کو مینسز ہوئے ہوئے ہیں۔  جیسے ہی وہ نہا دھو کر فارغ ہو جائے گی تم میرے گھر آ جانا وہاں ہم دونوں مل کر مہوش کو چودیں گے۔   اور اس نے یہ بھی بتایا کہ مہوش لوڑا بہت اچھا چوستی ہے اور وہ موٹے اور لمبے لوڑے چوسنے کی دیوانی ہے۔  اور وہ اتنا اچھا چوسا لگاتی ہے کہ تم ٹرپل ایکس فلموں میں دیکھے ہوئے چوسے بھول جاؤ تمہارگے۔  جہاں تمہاری سوچ ختم ہو جاتی ہے وہاں سے مہوش چوسا لگانا شروع کرتی ہے۔  خیر۔۔۔۔۔ ہم نے پروگرام بنا لیا کہ کل میں کاشف کے گھر جاؤں گا اور مہوش کو اپنے لوڑے کا چوسا لگواؤں گا کیونکہ ابھی اس کی پھدی تو ماری نہیں جا سکتی تھی اسے مینسز جو ہوئے ہوئے تھے۔       دوسرے دن میں نے شام کوکاشف کو فون کیا کہ میں آپکی طرف آ رہا ہوں ۔  آپ تیار ہیں کیا۔   اس نے کہا ہاں میں اور مہوش دونوں ہی تیار ہیں تم فوراً آ جاؤ۔  میں نے بائک نکالی اور انکی طرف چل پڑا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ آدھے گھنٹے کی ڈرائیو کے بعد میں کاشف کے بتائے ہوئے پوائینٹ پر پہنچ گیا۔  وہ وہاں کھڑا میرا انتظار کر رہا تھا۔  وہاں سے ہم دوںوں اس کے گھر گئے۔  ابھی ہم جا کر بیٹھے ہی تھے کہ کاشف نے مہوش کو آواز دی۔  چند لمحوں بعد جو لڑکی کمرے میں داخل ہوئی میں اس کو دیکھ کر دیکھتا ہی رہ گیا ، کیا خوبصورت لڑکی تھی مہوش۔  لگتا ہی نہیں تھا کہ وہ دو بچوں کی ماں ہے۔  کسی مورتی کی طرح تراشا ہوا سیکسی بدن 38 سائز کے بڑے بڑے گول مٹول اور سخت ممے اور بڑی سی گول مٹول گانڈ۔  مہوش کمرے میں داخل ہوئی اور اندر آ کر کاشف کے ساتھ بیٹھ گئی کاشف نے میرا اس سے تعارف کروایا اور مہوش نے اٹھ کر مجھ سے ہاتھ ملانے کے بعد  میرا حال احوال دریافت کرنے کے بعد مجھ سے پوچھا کہ آپ کیا لینا پسند کریں گے۔  میں نے موسم کی مناسبت سے کچھ گرم سا لانے کو کہا۔  اور وہ کمرے میں سے چلی گئی۔  کاشف نے مجھ سے پوچھا کہ تمہیں اپنی بھابھی کیسی لگی؟  میں نے کہا کاشف صاحب آپ بہت لکی ہیں جو آپ کو اتنی سیکسی وائف ملی ہے۔  جب سے میں نے بھابھی کو دیکھا ہے میرا لوڑا سخت سے سخت ہوتا جا رہا ہے۔  کاشف نے کہا  یار بہت اچھی طرح چودنا مہوش کو۔  اس کی چوت پیاسی نہ رہ جائے۔  اور خود بھی اس کے سیکسی بدن کے مزے لوٹنا۔  میں نے اس سے پوچھا کہ کاشف صاحب آپ کا لوڑآ کتنا بڑا ہے اور آپ کتنی دیر تک بھابھی کی پھدی مارتے ہیں تو اس نے مجھے اپنا لوڑا کھول کر دکھا یا جو کہ ابھی سکڑا ہوا تھا۔  اس کا لوڑا سکڑی حالت میں بھی کافی موٹا لگ رہا تھا اس نے بتایا کہ میں 15 سے 20 منٹ تک مہوش کی چوت مارتا ہوں اس کے بعد میرا لوڑا اس کے حسین اور سیکسی بدن کے سامنے اپنا سر جھکا دیتا ہے۔  کاشف کی اس بات پر ہم دونوں ہی ہنس پڑے اور اتنے میں مہوش بھابھی بھی کافی لے کر کمرے میں داخل ہو گئیں۔  کاشف نے اپنا لوڑا شلوار میں کیا اور ازار بند باندھ لیا۔  اب کاشف کے کہنے پر مہوش بھابھی میرے ساتھ ہی بیٹھ گئی اور ہم اکٹھے کافی پینے لگے۔  کافی سےفارغ ہونے کے بعد کاشف نے کہا کہ کیا خٰیال ہے شانی اب اصل کام شروع کیا جائے۔   میں تو پہلے سی ہی تیار تھا میں نے کہا ہاں ہاں کیوں نہیں۔  اتنی خوبصورت اور سیکسی ہاؤس وائف کو چودنے کیلئے میری جان نکلی جا رہی ہے۔  وہ دونوں ہی میری بات سن کر ہنسنے لگے۔۔۔  کاشف نے مہوش بھابھی کو کہا کہ مہوش چلو پہلے تم اپنا کام شروع کرو۔  مہوش بھابھی مسکراتے ہوئے اٹھی اور میرے سامنے آکر گھٹنوں کے بل زمین پر بیٹھ گئی۔  اس نے بالکل فلمی انداز میں پہلے میرے لوڑے کو پینٹ کے اوپر سے ہی سہلانا شروع کر دیا  اور مستی بھری نظروں سے میری طرف دیکھنے لگی۔  میں نے اپناایک ہاتھ مہوش بھابھی کے ہاتھوں پر پھیرنا شروع کر دیا اور دوسرے ہاتھ سے مہوش بھابھی کے چہرے کو سہلانا شروع کر دیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کاشف نے بھی اپنی شلوار کا ازاربند کھول کر اپنا لوڑا باہر نکال لیا۔  جو کہ مہوش بھابھی کی سیکسی حرکتیں دیکھ کر اور موٹا ہو گیا تھا ۔۔۔۔۔  میں نے دونوں ہاتھوں میں مہوش بھابھی کا خوبصورت چہرہ لے کر اس کو چومنا شروع کر دیا ان کے نرم نرم گالوں کو چوسنے میں بہت مزا آرہا تھا۔  مہوش بھابھی نے بھی کسنگ میں میرا ساتھ دینا شروع کر دیا۔۔۔۔۔۔ ان کے ہونٹ بہت رسیلے اور موٹے موٹے تھے جیسے ہی مہوش بھابھی کے ہونٹ میرے ہونٹوں میں آئے مجھ پر تو جیسے نشہ سا چھا گیا۔  میں مہوش بھابھی کے ہونٹ چوس رہا تھا اور وہ پینٹ کے اوپر سے ہی میرے لوڑے کو سہلا رہی تھیں۔  اور کاشف ہم دونوں کو دیکھتے ہوئے اپنے موٹے لوڑے کو سہلا رہا تھا۔  تھوڑی دیر بعد میں نے مہوش بھابھی سے کہا کہ بھابھی اب مجھ سے اور برداشت نہیں ہوتا۔ پلیز اپنے یہ خوبصورت ہونٹ میرے لوڑے پر رکھہ دیں۔  مہوش بھابھی نے مسکراتے ہوئے میری پینٹ کی زپ کھولی اور میں نے تھوڑا سا کھڑا ہو کر اپنی پینٹ بالکل اتار دی جیسےہی میں نے انڈر ویر اتارا تو میرا اکڑا ہوا لوڑا جھٹکا کھا کر باہر آ گیا اور مہوش بھا بھی کی جانب مونہہ کر کے اپنی ایک آنکھ سے ان کو دیکھنے لگا۔  مہوش بھابھی نے بہت پیار سے میرے لوڑے کو اپنے ہاتھوں میں لے کر سہلانا شروع کر دیا ۔۔۔۔۔ میں نے ان کے سر پر ہاتھ رکھ کر ان کے سر کو لوڑے کی جانب دبایا تو انہوں نے پہلے میرے لوڑے کی پھولی ہوئی ٹوپی کے کناروں پر زبان سے مساج کرنا شروع کر دیا ۔۔۔۔۔۔۔۔ اور پوری ٹوپی پر زبان پھیرنے کے بعد انہوں نے ایک ہاتھ سے میرے ٹٹوں کو پکڑ لیا اور دوسرےہاتھ سے میرے لوڑے تھامتےہوئے لوڑے کی ٹوپی کو مونہہ میں لے لیا اور اس کو چوسنا شروع کر دیا۔  اور پہلے ہی جھٹکے میں میرا 7 انچ کا لوڑا حلق تک اپنے مونہہ میں لے لیا اور دو تین بار اس کو زور زور سے چوسا تو میرے جسم میں چنگاریاں سی دوڑنے لگیں۔  میں سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ ہمارے ملک میں بھی کوئی عورت اس طرح سے لوڑا چوسنے کا شوق رکھتی ہو گی۔   بھابھی کے حلق میں بھی چدائی کی آگ لگی ہوئی تھی۔  وہ زور زور سے میرا لوڑا چوس رہی تھیں۔  لوڑا حلق میں اندر تک جا کر مہوش بھابھی کے مونہہ کی چدائی کر رہا تھا۔  کاشف کا لن بھی اپنی بیوی کو میرا تنا ہوا لوڑآ چوستے دیکھ کر اکڑ گیا تھا اور وہ اپنے لوڑے کی مٹھ لگانے کے ساتھ ساتھ مہوش کو زور زور سے میرا لوڑا چوسنے کا کہہ رہا تھا۔  پھر اس نے مہوش بھابھی کو میرے ٹٹے چوسنے کا کہا۔  مہوش بھابھی نے میرے لوڑے کو اپنے حلق میں سے نکالا اور میرے ٹٹوں پر زبان پھیرنی شروع کر دی اور ایک گولی کو پورا اپنے مونہہ میں لے کر چوسنے لگ گئیں۔  کبھی وہ ایک گولی کو چوس رہی تھیں اور کبھی دوسری گولی کو۔  میرا لوڑا مزے کی جس دنیا میں ڈوبا ہوا تھا وہ آج سے پہلے میں نے کبھی بھی محسوس نہیں کیا تھا۔  کاشف نھے اچانک مجھ سے پوچھا شانی آپ کو کیسا لگ رہا ہے ۔  میں نے کہا کاشف بھائی بہت زیادہ مزا آرہا ہے۔  میں نے زندگی میں کبھی بھی اتنی خوبصورت جوان اور سیکسی عورت کے ساتھ سیکس نہیں کیا۔۔۔۔۔۔  آپ بہت خوش قسمت ہیں جو آپ کو مہوش بھابھی جیسی سیکسی اور چدکڑ بیوی ملی ہے۔  مزے تو آپ کے ہیں جو روز اتنی سیکسی عورت کی چدائی کرتے ہیں۔   میری یہ بات سن کر کاشف اور مہوش بھابھی دونوں ہی ہنس پڑے۔  کاشف ہمیں دیکھ کر اپنے لوڑے کی مٹھ  مارتا رہا اس کے لن سے بار بار چکنا چکنا پانی نکل رہا تھا جو وہ اپنے لن پر مل کر اپنے لن کی مٹھ لگاتا رہا۔   تقریباً پونے گھنٹے تک مہوش بھابھی نے مختلف سٹائل میں میرے لوڑے کو چوسا مگر میرا لوڑا اتنی جدلی فارغ ہونے والا نہیں تھا۔   جب مہوش بھابھی کی ہمت جواب دے گئی تو انہوں نے کہا کہ میرے جبڑوں میں درد شروع ہو گیا ہے اور اب مجھ سے لن چوسنا مشکل ہو گیا ہے۔  تو کاشف نے کہا کہ تم بار بار رک جاتی ہو اس لیے لوڑا ڈسچارج نہیں ہو رہا ۔   تم چوستی رہا کرو جب تک لوڑا تمہارے مونہہ میں منی نہ چھوڑ دے۔ تم لوڑا اپنے مونہہ سے مت نکالنا۔  مہوش بھابھی نے کہا میرا حلق درد کرنے لگ جاتا ہے میں تو پوری کوشش کر رہی ہوں مگر لوڑا نہیں مان رہا۔   میں نے کہا کہ چلو آخری کوشش کرتے ہیں میں نے مہوش بھابھی کو بیڈ کے کنارے پر اس طرح سے لٹا یا کہ ان کا سر بیڈ سے نیچے لٹکنے لگا۔  اور میں نے کھڑے ہو کر ان کے مونہہ میں اپنا لوڑا گھسیڑ دیا اور ان کے مموں کو اپنے ہاتھوں میں دبا کر زور زور سے ان کے مونہہ کی چدائی شروع کر دی۔  مہوش بھابھی کو بار بار ابکائی آ رہی تھی ان کا خوبصورت چہرہ ان کے تھوک اور میرے لوڑے کے چکنے پانی سے بھر گیا تھا۔  مہوش بھابھی نیچے سے مچل مچل کر میرا لوڑا اپنے مونہہ سے نکالنے کی کوشش کر رہی تھیں اور میں ان کےبڑے بڑے مموں کو پکڑ کر ان کے حلق میں زور زور سے گھسے مارتا رہا میرے ٹٹے بھابھی کی آنکھوں اور ناک سے رگڑ کھا رہے تھے۔۔۔۔۔۔  مینسز کی وجہ سے میں مہوش بھابھی کی چوت نہیں مار سکتا تھا مگر  بھابھی کے موٹے موٹے ہونٹوں میں پھنسا ہوا میرا موٹا لوڑا چوت سے زیادہ مزے لوٹ رہا تھا۔  اور آخر کار وہ لمحہ آ ہی گیا جب میرے لوڑے نے بھابھی کے مونہہ میں مذید موٹا ہونا شروع کر دیا اور جب میرے لوڑے نے مہوش بھابھی کے حلق میں اپنی گرم گرم منی کی پچکاریاں مارنی شروع ہوئیں تو مجھے ایسا لگا جیسے پورے جسم میں کوئی کرنٹ سا دوڑ گیا ہو۔  لوڑے کی چسوائی میں ہی مجھے اتنا مزا آیا تھا کہ کبھی چوت کی چدائی میں نہیں آیا تھا۔  مہوش بھابھی نے ایک قطرہ بھی باہر نہیں آنے دیا اور میری منی کا ایک ایک قطرہ خاموشی سے اپنے حلق میں اتار لیا۔  اور میرے لوڑے کو اسطرح چوسنے لگیں کہ اس میں موجود منی کا آخری قطرہ بھی ان کے مونہہ میں چلا گیا۔  مہوش بھابھی کا بھی پرا حال تھا اور میرا بھی۔  میں فارغ ہونے کے بعد مہوش بھابھی کے ساتھ ہی آ کر لیٹ گیا۔  ساتھ ہی کاشف اٹھا اور اس نے اپنا موٹا اور تنا ہوا لوڑا مہوش بھابھی کے مونہہ میں دے دیا جس کو انہوں نے چوسنا شروع کر دیا۔  ویسے ایک بات ہے کہ کاشف کا لوڑا مجھ سے کافی موٹا تھا ۔۔۔ مگر میرے لوڑے سے کافی چھوٹا بھی تھا۔  میں مہوش بھابھی کو کاشف کا لوڑا چوستے ہوئے دیکھ رہا تھا۔  میری زندگی میں یہ پہلا چانس تھا کہ میں کسی لوڑے کو اتنے قریب سے دیکھ رہا تھا اور وہ بھی مہوش بھابھی جیسی سیکسی عورت کے مونہہ میں پھنسا ہوا۔  کاشف اپنے گانڈ ہلا ہلا کر مہوش بھابھی کے مونہہ میں گھسے لگا رہا تھا اور میں کبھی کاشف کی گانڈ پر ہاتھ پھیر رہا تھا اور کبھی اس کے لٹکتے ہوئے بڑے بڑے ٹٹوں سے کھیل رہا تھا ۔۔۔۔ تھوڑی دیر میں کاشف کے لن نے بھی مہوش بھابھی کے مونہہ میں منی اگل دی جو کہ مہوش بھابھی نے پی لی۔  اور کاشف بھی بھابی کے ساتھ ہی لیٹ گیا ۔  اب بھابھی ہم دونوں کے درمیان ہی لیٹی ہوئی تھیں اور ان کی آنکھیں چدائی کے نشے کی وجہ سے بند تھیں اورہم دونوں مہوش بھابھی کے مموں سے کھیل رہے تھے ایک مما میرے ہاتھ میں تھا اور ایک مما کاشف نے تھاما ہوا تھا۔   کچھ دیر بعد ہم تینوں بیڈ سے اٹھے اور ہم نے کپڑے پہننے شروع کر دیے۔   مہوش بھا بھی تو اٹھ کر باتھ روم میں چلی گئیں اور کاشف نے مجھ سے پوچھا شانی تمہیں مزا آیا ؟  میں نے کہا کاشف بھائی یہ بھی کوئی پوچھنے کی بات ہے۔   مہوش بھابھی جیسی خوبصورت اور سیکسی عورت کے ساتھ سیکس کر کے کسے مزا نہیں آئے گا۔  کاشف نے کہا کہ جس دن تم اس کو چودو گے اصل مز اتو اس دن آئےگا۔  جس دن مہوش نہا لے گی میں تمہیں بلاؤں گا۔  اصل مزا تو اس دن آئےگا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اتنے میں مہوش بھابھی بھی چینج کر کے آ گئیں۔  ہم لوگوں نے تھوڑی دیراور اس چدائی کےبارے میں بات کی اور پھر میں نے کہا کہ اب میں جانا چاہتا ہوں۔  کاشف نے کہا ٹھیک ہے جس دن چدائی کرنا ہو گی میں آپکو بلا لوں گا۔  میں نے ایک بار پھر مہوش بھا بھی کو گلے سے لگایا اور ان کے خوبصوررت ہونٹوں پر کس کر کے ان سے کہا کہ پھر ملیں گے بھابھی ۔۔۔۔  اپنا خیال رکھیے گا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Posted on: 05:21:AM 14-Dec-2020


0 0 243 1


Total Comments: 1

Asad: Ager koi girl ya aunty mujh se apni felling share karna chahti hai.ya Good Friendship Love and Romantic Chat Phone sex Ya Real sex karna chahti hai to contact kar sakti hai 0306_5864795



Write Your Comment



Recent Posts


Thomas Bryton heard the bell ring sounding.....


3 0 56 4 0
Posted on: 05:33:AM 21-Jul-2021

Summary: MILF Mom catches nerdy son masturbating.....


0 0 51 2 0
Posted on: 05:28:AM 21-Jul-2021

I was 18 years old and had.....


0 10 33 5 0
Posted on: 05:18:AM 21-Jul-2021

The fair grounds were packed for the.....


0 0 39 1 0
Posted on: 11:16:AM 18-Jul-2021

The warm, gentle wind swept playfully through.....


0 1 67 9 0
Posted on: 11:03:AM 18-Jul-2021

Send stories at
upload@xyzstory.com